مصنف کی تحاریر : ammar

ہجرت مدینہ

ہجرت مدینہ،بعثت کے تیرہویں سال حضرت پیغمبر اکرمؐ کا دوسرے مسلمانوں کے ہمراہ مکہ سے یثرب (مدینہ) کی طرف روانہ ہونے کو کہا جاتا ہے۔ اس مہاجرت کی اصلی وجہ مکہ کے مشرکین کی اذیت و آزار اور یثرب کے لوگوں کی آپؐ سے بیعت تھی آپؐ نے مسلمانوں کے دفاع کی خاطر یہ مہاجرت کی۔ دوسرے خلیفہ کی حکومت کے دور میں رسمی طور پر مسلمانوں کے کیلنڈر کا مبدا قرار پائی۔ ...

مزید پڑھیں »

معراج

معراج، رسول خداؐ کے مسجد اقصیٰ سے آسمانوں کی طرف سفر کو کہا جاتا ہے ۔ اسلامی مآخذ کے مطابق رسول اللہ ایک رات مسجد الحرام سے مسجد اقصی گئے اور پھر وہاں سے آسمان کی طرف سفر پر گئے اس رات آپ نے بعض ملائکہ کو دیکھا اور ان سے بات کی نیز اہل جنت اور اہل جہنم کا مشاہدہ کیا۔ روایات کے مطابق آپ نے بعض پیغمبروں سے بھی ملاقات اور گفتگو کی۔ خدا اور آپ ...

مزید پڑھیں »

شعب ابی طالب

شِعب ابی طالب مکہ کے کوہ ابو قبیس اور کوہ خندمہ کے درمیان واقع ایک درہ ہے۔ سنہ 7 بعثت کو مشرکین مکہ نے رسول اللہؐ، بنی ہاشم اور اولاد عبدالمطلب کو تین سال تک اسی مقام پر اقتصادی اور سماجی محاصرے میں رکھا۔ جس کی طرف امام علیؑ نے معاویہ کے نام اپنے ایک خط میں اشارہ کیا ہے۔یہ درہ عبد المطلب کی ملکیت تھا حضرت خدیجہ گا گھر جس میں حضور اکرمؐ نے آپ سے شادی کیا اور ...

مزید پڑھیں »

مبعث

مَبعَث یا بعثت، اسلامی اصطلاح میں اس دن کو کہا جاتا ہے جس میں حضرت محمدؐ کو پیغمبری پر مبعوث کیا گیا۔ یوں یہ دن دین اسلام کا سر آغاز قرار پاتا ہے۔ جب یہ واقعہ پیش آیا تو اس وقت آپ کی عمر 40 سال تھی اور آپ غار حراء جو کوه نور (مکہ سے نزدیک ایک پہاڑی) میں ...

مزید پڑھیں »

حجر الاسود

حَجَرُ الْأسْوَدْ الحَجَرُالأسوَد ایک مقدس پتھر کا نام ہے جو اسلامی ثقافت خاص طور پر مناسک حج میں ایک پرانی تاریخ اور خاص شان و منزلت کا حامل ہے۔ یہ پتھر کعبہ کے مشرقی رکن (گوشے) (جو رکن اسود یا رکن حَجَری کے نام سے معروف ہے) میں ڈیڑھ میٹر کی بلندی پر کعبہ کے دیوار میں نصب شدہ ہے۔حجرالاسود ...

مزید پڑھیں »

تحنث

تَحَنُّث، قبل از اسلام حجاز کے عوام کے درمیان رائج ایک سنت کا نام ہے جس کے تحت وہ سال کے کچھ دنوں کو معاشرے سے الگ ہوکر گوشہ نشین ہوجاتے تھے اور مراقبت نفس کا اہتمام کرتے تھے۔ مروی ہے کہ عبدالمطلب بن ہاشم نیز رسول اللہ(ص) ـ قبل از بعثت ـ ہر سال غار حراء میں خلوت گزینی ...

مزید پڑھیں »

حلف الفضول

حِلْفُ الْفُضول، ایک معاہدے کا نام ہے جو دور جاہلیت میں مظلوموں کی حمایت کے لئے قریش کے بعض قبائل کے درمیان مکہ میں منعقد ہوا تھا۔ معاہدے کے اسباب اس معاہدے کا سبب یہ تھا کہ قبیلۂ قریش کے افراد کبھی اجنبی افراد، یا ان افراد کے ساتھ، ظلم روا رکھتے تھے جن کا مکہ میں قبیلہ یا خاندان ...

مزید پڑھیں »

عبد مناف بن قصی

عبد مناف بن قصی بن کلاب بن مرہ بن کعب بن کعب بن لؤوی رسول اللہ(ص) کے تیسرے جد امجد اور قریش کے سردار اور بنو عبد مناف کے مورث اعلی ہیں اور ایک قول کے مطابق ایلاف کی تجارتی مہمات کی بنیاد ان ہی نے رکھی تھی۔ عبد مناف بن قصی شناختی معلومات مکمل نام عبد مناف بن قصی بن کلاب، بن مرہ لقب قمر البطحاء کنیت ابو عبدالشمس والد قصی بن كلاب بن مرة والدہ حُبَّی بنت حُلَیل بن حبشیہ ...

مزید پڑھیں »

حضرت ہاشم بن عبد مناف

ہاشم بن عبد مَناف بن قُصَی بن کِلاب بن مُرَّہ، رسول اللہ(ص) کے جدّ ثانی اور مکہ کے صاحبان مناصب میں سے تھے۔ وہ بنو ہاشم تک پہنچنے والے مختلف سلسلہ ہائے نسب کے مورث اعلی ہیں۔ حلف المطیبین کے بعد سقایت (= حجاج کو پانی فراہم کرنے) اور رفادت (= حجاج کو کھانا فراہم کرنے) کے دو مناصب ان کو سونپ دیئے گئے۔ مراسمات حج کی تعظیم اور ...

مزید پڑھیں »

حضرت عبدالمطلب بن ہاشم

عَبْدُ المُطَّلِب بن ہاشم بن عبد مناف (ولادت 127 سال قبل از ہجرت،[سنہ 500 ع]، وفات 45 سال قبل از ہجرت/سنہ 575 ع]) حضرت محمد(ص) کے دادا، قبیلۂ قریش کے زعیم اور عمائدین مکہ میں سے تھے۔ وہ شہر یثرب میں پیدا ہوئے اور سات سال کی عمر میں مکہ پلٹ آئے جہاں انہیں سیادت ملی۔ اصحاب فیل کا حیرت ...

مزید پڑھیں »