Danishkadah Danishkadah Danishkadah
حضرت امام علی نے فرمایا، اپنی زبان کی تیزی اس پر استعمال نہ کر جس نے تجھے بولنا سکھایا اور اپنےکلام کی بلاغت اس کے خلاف استعمال نہ کر جس نے تجھے سیدھی راہ دکھائی ہے۔ نھج البلاغۃ حکمت411

ملحقات اول مفاتیح الجنان

(دوسرا مطلب)

عید الفطر کا دوسرا خطبہ

پہلا خطبہ تمام کرنے کے بعد بیٹھ جائے لیکن فوراً ہی اٹھ کھڑا ہو اور دوسرا خطبہ پڑھنا شروع کردے یہ وہی خطبہ جسے حضرت علی - جمعہ کے روز پہلے خطبے کے بعد پڑھتے تھے اور وہ یہ ہے :

الْحَمْدُ لِلّٰہِ نَحْمَدُھُ

حمد خدا کیلئے ہے ہم اس کی حمد

وَنَسْتَعِینُہُ وَنُؤْمِنُ بِہِ

کرتے ہیں اس سے مدد

وَنَتَوَکَّلُ عَلَیْہِ

مانگتے ہیں ہم اس پر ایمان

وَنَشْھَدُ ٲَنْ لاَ

رکھتے ہیں اور اسی پر بھروسہ

إلہَ إلاَّ اﷲُ وَحْدَھُ لاَ

کرتے ہیں اور ہم گواہ ہیں کہ

شَرِیکَ لَہُ وَٲَنَّ

اﷲ کے سوائ کوئی معبود نہیں وہ

مُحَمَّداً عَبْدُھُ

یکتا ہے کوئی اس کا شریک

وَرَسُولُہُ صَلَواتُ

نہیں اور یہ کہ حضرت محمد (ص) اس

اﷲِ وَسَلامُہُ عَلَیْہِ

کے بندے و رسول(ص) ہیں

وَآلِہِ وَمَغْفِرَتُہُ

ان پر اور ان کی آل (ع)پر خدا کا

وَرِضْوانُہُ۔ اَللّٰھُمَّ

درود وسلام ہو نیز اس کی

صَلِّ عَلَی مُحَمَّدٍ

بخشش اور خوشنودی حاصل رہے

عَبْدِکَ وَرَسُولِکَ

اے معبود! حضرت محمد(ص) پر رحمت فرما

وَنَبِیِّکَ صَلاۃً نامِیَۃً

جو تیرے بندے تیرے رسول (ص)

زاکِیَۃً تَرْفَعُ بِہا

اور تیرے نبی(ص) ہیں ایسی رحمت

دَرَجَتَہُ وَتُبَیِّنُ

جو بڑھنے والی اورپاکیزہ ہو

بِہا فَضْلَہُ وَصَلِّ

جس سے ان کا مرتبہ بلند

عَلَی مُحَمَّدٍ وَآلِ

ہو اور ان کی بڑائی

مُحَمَّدٍ وَبارِکْ

ظاہر ہو اور محمد(ص) وآل(ع) محمد(ص)

عَلَی مُحَمَّدٍ وَآلِ

پر رحمت فرما اور محمد(ص) وآل محمد(ص)

مُحَمَّدٍ کَما صَلَّیْتَ

پر برکت نازل کر

وَبارَکْتَ وَتَرَحَّمْتَ

جیسے تو نے رحمت فرمائی،

عَلَی إبْراھِیمَ وَآلِ

برکت نازل کی اور مہربانی

إبْراھِیمَ

کی ابراہیم(ع) اور آل ابراہیم(ع) پر

إنَّکَ حَمِیدٌ مَجِیدٌ۔

بے شک تو تعریف والا ہے

اَللّٰھُمَّ عَذِّبْ کَفَرَۃَ

اور شان والاہے اے معبود!

ٲَھْلِ الْکِتابِ الَّذِینَ

اہل کتاب میںسے کافروں

یَصُدُّونَ عَنْ سَبِیلِکَ

پر عذاب بھیج کہ جو تیرے راستے

وَیَجْحَدُونَ آیاتِکَ

پر آنے والوں کو روکتے ہیں

وَیُکَذِّبُونَ رُسُلَکَ۔

تیری آیتوں کا انکار کرتے ہیں

اَللّٰھُمَّ خالِفْ بَیْنَ

اور تیرے پیغمبرو(ع)ں کوجھٹلاتے ہیں

کَلِمَتِھِمْ وَٲَلْقِ

اے معبود ! ان کے عقائد میں

الرُّعْبَ فِی قُلُوبِھِمْ

اختلاف ڈال دے ان کے دلوں

وَٲَنْزِلْ عَلَیْھِمْ

پر مسلمانوں کا رعب جمادے

رِجْزَکَ وَنَقِْمَتَکَ

اور ان کو سزا دے ان سے بدلہ لے

وَبَٲْسَکَ الَّذِی لاَ

اور ان پر سختی لے آ کہ

تَرُدُّھُ عَنِ الْقَوْمِ

جسے تو گناہگار لوگوں سے ہر گز

الْمُجْرِمِینَ۔ اَللّٰھُمَّ

دور نہیں کرتا اے معبود!

انْصُرْ جُیُوشَ

مسلمانوں کے لشکروں

الْمُسْلِمِینَ وَ

ان کے فوجی دستوں اور

سَرَایاھُمْ وَمُرابِطِیھِمْ

سرحدوں کے نگہبانوں کی

فِی مَشارِقِ الْاََرْضِ

زمین کے مشرقوں اور مغربوں

وَمَغارِبِہا إنَّکَ عَلَی

میں مدد فرما

کُلِّ شَیْئٍ قَدِیرٌ۔

بے شک تو ہر چیز پر قدرت

اَللّٰھُمَّ اغْفِرْ

رکھتا ہے اے معبود! مومن مردوں

لِلْمُؤْمِنِینَ

اور مومنہ عورتوں کو

وَالْمُؤْمِناتِ

بخش دے اور مسلمان مردوں

وَالْمُسْلِمِینَ وَالْمُسْلِماتِ۔

اور مسلمان عورتوں کو بخش دے

اَللّٰھُمَّ اجْعَلِ التَّقْویٰ

اے معبود تقویٰ کو ان کا

زادَھُمْ وَالْاِیمانَ

توشہ قرار دے ایمان

وَالْحِکْمَۃَ فِی

و حکمت،ان کے دلوں میں

قُلُوبِھِمْ وَٲَوْزِعْھُمْ

محکم کردے اور ان کو توفیق دے

ٲَنْ یَشْکُرُوا

کہ وہ تیری نعمتوں پر شکر

نِعْمَتَکَ الَّتِی

کریں جو تو نے ان

ٲَنْعَمْتَ عَلَیْھِم

کو دی ہیں وہ اس عہد

ْوَٲَنْ یُوفُوا بِعَھْدِکَ

وپیمان کو پورا کریںجو تو

الَّذِی عاھَدْتَھُمْ

نے ان سے کر رکھا ہے تو

عَلَیْہِ إلہَ الْحَقِّ

سچا معبود اور مخلوقات کا

وَخالِقَ الْخَلْقِ۔

پیدا کرنے والا ہے

اَللّٰھُمَّ اغْفِرْ لِمَنْ

اے معبود ! ان کے گناہ معاف

تُوُفِّیَ مِنَ الْمُؤْمِنِینَ

کردے جو مومن مردوں اور

وَالْمُؤْمِناتِ وَالْمُسْلِمِینَ

مومنہ عورتوں اور مسلمان

وَالْمُسْلِماتِ وَلِمَنْ

مردوں اور مسلمان عورتوں

ھُوَ لاحِقٌ بِھِمْ مِنْ

میں سے وفات کرگئے اور ان

بَعْدِھِمْ مِنْھُمْ إنَّکَ

کے بھی جوان کے بعد وفات

ٲَنْتَ الْعَزِیزُ

پاکر ان سے جاملیں گے بے شک تو

الْحَکِیمُ إنَّ اﷲَ

غلبے والااور حکمت والا ہے

یَٲْمُرُ بِالْعَدْلِ

بے شک اﷲ حکم دیتا ہے

وَالْاِحسانِ وَ إیتائِ

قریبی انصاف اور نیکی کا اور

ذِی الْقُرْبی وَیَنْہی عَنِ

عزیزوں کا حق دینے کا اور وہ روکتا

الْفَحْشائِ وَالْمُنْکَرِ

بے حیائی،ناروا کاموں اور

وَالْبَغْیِ یَعِظُکُمْ

سرکشی سے وہ تمہیں سمجھاتا ہے

لَعَلَّکُمْ تَذَکَّرُونَ

شاید کہ تم نصیحت پکڑو تم خدا

اذْکُرُوا اﷲَ یَذْکُرْکُمْ

کویاد کرو کہ وہ تمہیں یاد

فَ إنَّہُ ذاکِرٌ لِمَنْ

کرے کہ وہ اسے یاد کرتا ہے جو

ذَکَرَھُ وَاسْٲَلُوا اﷲَ

اسے یاد کرے خداسے سوال کرو

مِنْ رَحْمَتِہِ وَ فَضْلِہِ

اسکی رحمت اور عنایت کا کیونکہ

فَ إنَّہُ لاَیَخِیبُعَلَیْہِ

وہ اسے ناکام نہیں کرتا جو اسے

داعٍ دَعاھُ رَبَّنا آتِنا

پکارتا ہے اے ہمارے رب ہمیں

فِی الدُّنْیا حَسَنَۃً

دنیا میں بہترین زندگی دے

وَفِی الْاَخِرَۃِ حَسَنَۃً

آخرت میں بہترین جزا دے اور

وَقِنا عَذابَ النَّارِ۔

ہمیں عذاب جہنم سے بچالے۔

(تیسرا مطلب)

﴿۳﴾ زیارت جامعہ ائمہ معصومین

یہ وہ زیارت جامعہ ہے جس کے ذریعے کسی وقت کسی دن اور کسی بھی مہینے میں ائمہ معصومین میں سے کسی بھی بزرگوار کی زیارت پڑھی جاسکتی ہے اس زیارت کو سید بن طاؤوس نے مصباح الزائر میں ائمہ کرام(ع) سے روایت کیا ہے اور اس

کے کچھ مقدمات یعنی زیارت کیلئے روانگی کے وقت کی دعا اور غسل وغیرہ بھی تحریر فرمائے ہیں چنانچہ آپ نے ارشاد فرمایا ہے کہ جب زیارت کیلئے غسل کرے تو کہے :

بِسْمِ اﷲِ وَبِاﷲِ وَفِی

خدا کے نام سے، خداکی ذات کے

سَبِیلِ اﷲِ وَعَلَی مِلَّۃِ

واسطے سے، خداکے مقرر راستے پر

رَسُولِ اﷲِ اَللّٰھُمَّ

اور رسول (ص)خدا کے دین پر چلتے

اغْسِلْ عَنِّی دَرَنَ

ہوئے اے معبود! مجھ سے

الذُّنُوبِ وَوَسَخَ

گناہوں کامیل اور عیبوں کی

الْعُیُوبِ وَطَہِّرْنِی

کثافت دور کر دے مجھے توبہ کے

بِمائِ التَّوْبَۃِ

پانی سے پاک فرما مجھے

وَٲَلْبِسْنِی رِدائَ

حفاظت کی چادر

الْعِصْمَۃِ وَٲَیِّدْنِی

اوڑھا دے اپنے لطف وکرم سے

بِلُطْفٍ مِنْکَ

میری تائید کر اور مجھ کو اعمال صالح

یُوَفِّقُنِی لِصالِحِ

کی توفیق عطا فرما بے شک تو بڑے

الْاََعْمالِ إنَّکَ ذُو

فضل اور بزرگی والا ہے۔

الْفَضْلِ الْعَظِیمِ۔

جب حرم مبارک کے قریب پہنچے تو یہ کہے:

الْحَمْدُ لِلّٰہِ الَّذِی

حمد اس خدا کے لیے ہے جس نے

وَفَّقَنِی لِقَصْدِ وَلِیِّہِ

اپنے ولی کے پاس آنے اور اپنی

وَ زِیارَۃِ حُجَّتِہِ وَ

حجت کی زیارت کرنے کی توفیق

ٲَوْرَدَنِی حَرَمَہُ وَلَمْ

دی اور مجھے ان کے حرم

یَبْخَسْنِی حَظِّی مِنْ

تک پہنچایا اور اس نے ان کی قبر کی

زِیارَۃِ قَبْرِھِ وَالنُّزُولِ

زیارت ،آستانہ مقدسہ پر حاضری

بِعَقْوَۃِ مُغَیَّبِہِ وَساحَۃِ

اور دربار عالی پر آمد میں میرا حصہ کم

تُرْبَتِہِ الْحَمْدُ لِلّٰہِ

نہیں کیا حمد اس خدا کے لیے

الَّذِی لَمْ یَسِمْنِی

جس نے مجھ کو میری آرزو میں محروم

بِحِرْمانِ مَا ٲَمَّلْتُہُ

نہیں کیا مجھے میری امید سے پلٹایا

وَلاَ صَرَفَ عَنِّی مَا

نہیں اور نہ اس

رَجَوْتُہُ وَلاَ قَطَعَ

تمنا میں ناکام کیا جو میں لے کے

رَجائِی فِیمَا تَوَقَّعْتُہُ

آیا تھا بلکہ اس نے مجھے لباس امن

بَلْ ٲَلْبَسَنِی عافِیَتَہُ

پہنایا، اپنی نعمت سے

وَٲَفادَنِی نِعْمَتَہُ

فائدہ دیا اور مجھے اپنی طرف

وَآتانِی کَرامَتَہُ۔

سے عزت دی۔

جب حرم پاک میں داخل ہوجائے تو ضریح مقدس کے مقابل کھڑے ہوکر کہے:

اَلسَّلَامُ عَلَیْکُمْ ٲَئِمَّۃَ

آپ پر سلام ہوکہ آپ مومنوں

الْمُؤْمِنِینَ وَسادَۃَ

کے پیشوا، پرہیزگاروں کے سردار

الْمُتَّقِینَ وَکُبَرائَ

صدیقوں کے بزرگ، نیکوکاروں

الصِّدِّیقِینَ وَٲُمَرائَ

کے حاکم، خوش کرداروں کے سالار

الصَّالِحِینَ وَقادَۃَ

اور ہدایت یافتگاں کے نشان

الْمُحْسِنِینَ وَٲَعْلامَ

عارفوں کو روشنی دینے والے،

الْمُھْتَدِینَ وَٲَنْوارَ

نبیوں کے وارث ،اوصیائ میں

الْعارِفِینَ وَوَرَثَۃَ

پسندیدہ، خدا ترسوں کے آفتاب،

الْاََنْبِیائِ وَصَفْوَۃَ

خلفائ میں روشن چاند ،خدائے

الْاََوْصِیائِ وَشُمُوسَ

رحمن کے بندے، قرآن کے ہم

الْاََتْقِیائِ وَبُدُورَ

پایہ، ایمان کا راستہ

الْخُلَفائِ وَعِبادَ

حقیقتوں کے خزانے اور لوگوں کی

الرَّحْمَانِ وَشُرَکائَ

شفاعت کرنے والے ہیں

الْقُرْآنِ وَمَنْھَجَ

آپ پر سلام خدا کی رحمت

الْاِیمانِ وَمَعادِنَ

اور اس کی برکات ہوںمیں

الْحَقایِقِ وَشُفَعائَ

گواہ ہوں کہ آپ

الْخَلائِقِ وَرَحْمَۃُ

خدا کے دروازے ،اس کی

اﷲِ وَبَرَکاتُہُ ٲَشْھَدُ

رحمت کی کلیدیں، اس کی

ٲَنَّکُمْ ٲَبْوابُ اﷲِ

طرف سے بخشش کے وسیلے،

وَمَفاتِیحُ رَحْمَتِہِ

اس کی خوشنودی کے بادل،

وَمَقالِیدُ مَغْفِرَتِہِ

اس کی جنت کے چراغ،

وَسَحائِبُ رِضْوانِہِ

اس کے قرآن کے حامل،

وَمَصابِیحُ جِنانِہِ

اس کے علم کے خزانے ،

وَحَمَلَۃُ فُرْقانِہِ

اس کے راز کے نگہبان

وَخَزَنَۃُ عِلْمِہِ

اور اس کی وحی کے مقام

وَحَفَظَۃُ سِرِّھِ

ہیںنبوت کی امانتیں اور

وَمَھْبِطُ وَحْیِہِ

رسالت کے علوم آپ ہی

وَعِنْدَکُمْ ٲَماناتُ

کے پاس ہیں آپ خدا کے

النُّبُوَّۃِ وَوَدائِعُ

امین، اس کے پیارے،

الرِّسالَۃِ ٲَنْتُمْ ٲُمَنائُ

اس کے بندے ،اس کے

اﷲِ وَٲَحِبَّاؤُھُ وَعِبادُھُ

چنے ہوئے ،اس کی توحید کے

وَٲَصْفِیاؤُھُ وَٲَنْصارُ

چنے ہوئے ،اس کی توحید کے

تَوْحِیدِھِ وَٲَرْکانُ

مدد گار، اس کی بزرگی کے

تَمْجِیدِھِ وَدُعاتُہُ

نشان، اس کی کتب

إلی کُتُبِہِ وَحَرَسَۃُ

کی طرف بلانے والے، اس

خَلائِقِہِ وَحَفَظَۃُ

کی مخلوق کے نگہدار اور اس کے

وَدَائِعِہِ لاَ یَسْبِقُکُمْ

علوم کے پاسدار ہیں ثنائ

ثَنائُ الْمَلائِکَۃِ فِی

الہی میں خلوص و خوف

الْاِخْلاصِ وَالْخُشُوعِ

کے لحاظ سے فرشتے آپ سے

وَ لاَ یُضادُّکُمْ

بڑھ نہیں سکتے اور نہ کوئی رازی

ذُوابْتِہالٍ وَخُضُوعٍ

و عاجزی کرنے والا آپ سے

ٲَنَّی وَلَکُمُ الْقُلُوبُ

آگے نکل سکتا ہے یہ کیسے ہو

الَّتِی تَوَلَّی اﷲُ

جب کہ آپ کے دل وہ ہیں کہ

رِیاضَتَہا بِالْخَوْفِ

خوف ورجا میں خدا ان کی سرپرستی

وَالرَّجائِ وَجَعَلَہا

کرتا رہا اور ان کو شکر اور ثنائ

ٲَوْعِیَۃً لِلشُّکْرِ

کے مرکز اور مقام قرار دیا ان

وَالثَّنائِ وَآمَنَہا مِنْ

کو کاہلی کے اثرات سے بچائے

عَوارِضِ الْغَفْلَۃِ

رکھا اور فطری برائی سے

وَصَفَّاہا مِنْ سُوئِ

پاک کردیا بلکہ اہل آسمان آپ کی

الْفَتْرَۃِ بَلْ یَتَقَرَّبُ

محبت اور آپ کے دشمنوں سے

ٲَھْلُ السَّمائِ

بیزاری، آپ کے مصائب پر

بِحُبِّکُمْ وَبِالْبَرائَۃِ

لگاتار گریہ کرنے اور آپ

مِنْ ٲَعْدائِکُمْ

کے شیعوں اور دوستوں کے

وَتَوَاتُرِ الْبُکائِ عَلَی

لیے طلب مغفرت کو قرب

مُصابِکُمْ

الہٰی کا وسیلہ

وَالاسْتِغْفارِ

بناتے ہیں پس میں خدا کو

لِشِیعَتِکُمْ وَ مُحِبِّیکُمْ

گواہ بناتا ہوں اس کے فرشتوں

فَٲَنَا ٲُشْھِدُ اﷲَ

اور نبیوں کو گواہ بناتا ہوں

خالِقِی وَٲُشْھِدُ

اور اے میرے سردارآپ کو

مَلائِکَتَہُ وَٲَنْبِیائَہُ

گواہ قرار دیتا ہوں کہ میں آپ

وَٲُشْھِدُکُمْ یَا مَوالِیَّ

کی ولایت کو مانتا ہوں آپ

ٲَنِّی مُؤْمِنٌ بِوِلایَتِکُمْ

کی امانت کا عقیدہ رکھتا ہوں

مُعْتَقِدٌ لاِِِمامَتِکُمْ

آپ کی خلافت کااقرار کرتا

مُقِرٌّ بِخِلافَتِکُمْ

ہوں آپ کے مرتبے کو پہچانتا

عارِفٌ بِمَنْزِلَتِکُمْ

ہوں آپ کی عصمت پر یقین

مُوقِنٌ بِعِصْمَتِکُمْ

رکھتا ہوں اور آپ کی ولایت

خاضِعٌ لِوِلایَتِکُمْ

کے سامنے جھکتا ہوں آپ کی

مُتَقَرِّبٌ إلَی اﷲِ

محبت اور آپ کے دشمنوں

بِحُبِّکُمْ وَبِالْبَرائَۃِ

سے نفرت کے ذریعے خدا کا

مِنْ ٲَعْدائِکُمْ عالِمٌ

قرب چاہتا ہوں میں جانتا ہوں

بِٲَنَّ اﷲَ قَدْ

کہ اﷲ نے آپ کو

طَہَّرَکُمْ مِنَ

برائیوں سے پاک رکھا ہے

الْفَوَاحِشِ مَا ظَھَرَ

جو ان میں سے ظاہر ہیں اور

مِنْہا وَمَا بَطَنَ وَمِنْ

جو پوشیدہ ہیں اس نے آپ کو

کُلِّ رِیبَۃٍ وَنَجاسَۃٍ

ہر شک ،ہر آلودگی، ہر پستی

وَدَنِیَّۃٍ وَرَجاسَۃٍ

اور ہر ناپاکی سے بچایا اور

وَمَنَحَکُمْ رایَۃَ

آپ کو حق کا علم بردار بنایا کہ جو

الْحَقِّ الَّتِی مَنْ

اس سے آگے بڑھا گمراہ ہوا اور

تَقَدَّمَہا ضَلَّ وَمَنْ

جو اس سے پیچھے رہا وہ

تَٲَخَّرَ عَنْہا زَلَّ

پھسل گیا نیز اس نے ہر

وَفَرَضَ طاعَتَکُمْ

سیاہ و سفیدپر آپ کی پیروی

عَلَی کُلِّ ٲَسْوَدَ

واجب قرار دی میں گواہ

وَٲَبْیَضَ وَٲَشْھَدُ

ہوں کہ آپ نے خدا کا

ٲَنَّکُمْ قَدْ وَفَیْتُمْ

عہد وپیمان اور ذمہ داری

بِعَھْدِ اﷲِ وَذِمَّتِہِ

وری کی اور ہر بات نبھائی جو

وَبِکُلِّ مَا اشْتَرَطَ

پاس کی کتاب میں آپ پر

عَلَیْکُمْ فِی کِتابِہِ

عائد کی گئی آپ نے اس کے

وَدَعَوْتُمْ إلی سَبِیلِہِ

راستے کی طرف بلایا اور اس کی

وَٲَنْفَذْتُمْ طاقَتَکُمْ

رضا میں پوری قوت صرف

فِی مَرْضاتِہِ

کردی آپ نے لوگوں کو

وَحَمَلْتُمُ الْخَلائِقَ

نبوت کے روشن راستے

عَلَی مِنْہاجِ النُّبُوَّۃِ

اور رسالت کی گزر گاہ سے

وَمَسالِکِ الرِّسالَۃِ

باخبر کیا اور آپ نے اس عمل

وَسِرْتُمْ فِیہِ بِسِیرَۃِ

میں نبیوں کی روش اور

الْاََنْبِیائِ وَمَذاھِبِ

اوصیائ کا طریقہ اختیار کیا

الْاََوْصِیائِ فَلَمْ یُطَعْ

تاہم انہوں نے آپ کی

لَکُمْ ٲَمْرٌوَلَمْ تُصْغَ

بات نہ مانی اور آپ کی

إلَیْکُمْ ٲُذُنٌ فَصَلَواتُ

طرف دھیان نہ دیا

اﷲِ عَلَی ٲَرْواحِکُمْ

پس آپ کی روحوں اور آپ کے

وَٲَجْسادِکُمْ۔

جسموں پر خدا کی رحمتیں ہوں۔

اس کے بعد خود کو قبر مبارک سے لپٹائے اور کہے:

بِٲَبِی ٲَنْتَ وَٲُمِّی یَا

میرے ماں باپ آپ پر

حُجَّۃَ اﷲِ لَقَدْ

قربان اے حجت خدا یقینا

ٲُرْضِعْتَ بِثَدْیِ

آپ نے سر چشمہ ایمان سے

الْاِیمانِ وَفُطِمْتَ

دودھ پیا، نور اسلام کے بدلے

بِنُورِ الْاِسْلامِ

آپ کی دودھ بڑھائی ہوئی،

وَغُذِّیتَ بِبَرْدِ

یقین کی خنکی سے آپ نے غذا

الْیَقِینِ وَٲُلْبِسْتَ

پائی عصمت کے پیراہنوں کا

حُلَلَ الْعِصْمَۃِ

لباس پہنا آپ چنے گئے

وَاصْطُفِیتَ وَوُرِّثْتَ

اور علم کتاب کے وارث بنے

عِلْمَ الْکِتابِ

آپ کو بے لاگ فیصلے کرنے

وَلُقِّنْتَ فَصْلَ

کا علم دیا گیا آپ کی ذات

الْخِطابِ وَٲُوضِحَ

سے قرآن کے حقائق واضح

بِمَکانِکَ مَعارِفُ

ہوئے اور تاویل وتشریح کی

التَّنْزِیلِ وَغَوامِضُ

باریکیاں عیاں ہوئیں حق

التَّٲْوِیلِ وَسُلِّمَتْ

کا جھنڈا آپ کے سپرد کیا

إلَیْکَ رایَۃُ الْحَقِّ

گیا آپ کو مخلوق کی ہدایت کی ذمہ

وَکُلِّفْتَ ھِدایَۃَ

داری سونپی گئی امامت کا

الْخَلْقِ وَنُبِذَ إلَیْکَ

فرمان آپ کے نام لکھا گیا

عَھْدُ الْاِمامَۃِ

اور شریعیت کی حفاظت

وَٲُلْزِمْتَ حِفْظَ

آپ کے ذمہ ڈالی گئی

الشَّرِیعَۃِ وَٲَشْھَدُ یَا

اور میں گواہ ہوں اے میرے

مَوْلایَ ٲَنَّکَ

آقا کہ آپ نے قائم مقامی

وَفَیْتَ بِشَرائِطِ

کے فرائض پورے کیے اطاعت

الْوَصِیَّۃِ وَقَضَیْتَ مَا

کی جو حد آپ کے لیے

لَزِمَکَ مِنْ حَدِّ

مقرر تھی وہ پوری کی اور امامت

الطَّاعَۃِ وَنَھَضْتَ

کا سنگین بار اپنے کندھوں پر لیا

بِٲَعْبَائِ الْاِمامَۃِ

اور ایک حامل نبوت کی

وَاحْتَذَیْتَ مِثالَ

مانند نظر آئے صبر وقرار میں،

النُّبُوَّۃِ فِی الصَّبْرِ

سعی و کوشش میں، لوگوں کی

وَالاجْتِہادِ وَالنَّصِیحَۃِ

نصیحت وخیرخواہی میں، غصے پر

لِلْعِبادِ وَکَظْمِ

قابو رکھنے، لوگوں کی

الْغَیْظِ وَالْعَفْوِ

خطائیں معاف کرنے،

عَنِ النَّاسِ وَعَزَمْتَ

انسانوں کے درمیان عدل

عَلَی الْعَدْلِ فِی

قائم کرنے، فیصلہ دیتے

الْبَرِیَّۃِ وَالنَّصَفَۃِ فِی

ہوئے انصاف برتنے میں

الْقَضِیَّۃِوَوَکَّدْتَ

نیز آپ نے امت پر حجت قائم

الْحُجَجَ عَلَی الْاَُمَّۃِ

کی سچے اور قوی دلائل اور

بِالدَّلائِلِ الصَّادِقَۃِ

زندہ پائندہ شریعت کے ساتھ

وَالشَّرِیعَۃِ النَّاطِقَۃِ

اور آپ نے خدا کی طرف

وَدَعَوْتَ إلَی اﷲِ

انتہائی دانشمندی اور عمدہ

بِالْحِکْمَۃِ الْبالِغَۃِ

نصیحت کے ساتھ بلایا لیکن

وَالْمَوْعِظَۃِ الْحَسَنَۃِ

کجی کے دور کرنے ،رخنے

فَمُنِعْتَ مِنْ

بند کرنے برائیوں کی

تَقْوِیمِ الزَّیْغِ وَسَدِّ

اصلاح، دشمن کی سر کوبی،

الثُّلَمِ وَ إصْلاحِ

سنتوں کو قائم کرنے اور

الْفاسِدِوَکَسْرِ

بدعتوں کو مٹانے سے

الْمُعانِدِ وَ إحْیائِ

آپ کو روکا گیا، یہاں

السُّنَنِ وَ إماتَۃِ

تک کہ آپ دنیا سے چلے

الْبِدَعِ حَتَّی فارَقْتَ

گئے اور درجہ شہادت

الدُّنْیا وَٲَنْتَ شَھِیدٌ

پاکر حضرت رسول(ص) کے

وَلَقِیتَ رَسُولَ اﷲِ

پاس پہنچے ان پر

صَلَّی اﷲُ عَلَیْہِ وَآلِہِ

اور ان کی آل(ع) پر خدا

وَٲَنْتَ حَمِیدٌ

رحمت کرے اور آپ

صَلَواتُ اﷲِ

تعریف والے ہیں آپ

عَلَیْکَ تَتَرادَفُ

پر خدا کی رحمت ہو لگاتار

وَتَزِیدُ۔

اور بڑھنے والی

اس کے بعد پاؤں مبارک کی طرف ہوکر کہے:

یا سادَتِی یَا آلَ

اے میرے سرداران اے

رَسُولِ اﷲِ إنِّی بِکُمْ

رسول(ص) خدا کے فرزندان (ع)

ٲَتَقَرَّبُ إلَی اﷲِ جَلَّ

میں آپ کے ذریعے خدا ئے

وَعَلاَ بِالْخِلافِ

بزرگ وبرتر کا تقرب چاہتا

عَلَی الَّذِینَ

ہوں ان کی مخالفت

غَدَرُوا بِکُمْ

کرتے ہوئے جنہوں نے

وَنَکَثُوا بَیْعَتَکُمْ

آپ سے بے وفائی کی

وَجَحَدُوا وِلایَتَکُمْ

آپ کی بیعت توڑی

وَٲَنْکَرُوا مَنْزِلَتَکُمْ

آپ کی ولایت سے انکار

وَخَلَعُوا رِبْقَۃَ

کیا آپ کے مقام پر حسد کیا آپ

طاعَتِکُمْ وَھَجَرُوا

کی پیروی کے حلقے سے

ٲَسْبابَ مَوَدَّتِکُمْ

نکل گئے آپ سے دوستی

وَتَقَرَّبُوا إلی

کے طریقے چھوڑ دیے اور

فَراعِنَتِھِمْ بِالْبَرائَۃِ

آپ سے علیحدہ ہوکر

مِنْکُمْ وَالْاِعْرَاضِ

اور آپ سے رو گردانی

عَنْکُمْ وَمَنَعُوکُمْ مِنْ

کرکے سرکش حکمرانوں سے

إقامَۃِ الْحُدُودِ

مل گئے انہوں نے آپ کو

وَاسْتِیْصالِ الْجُحُودِ

حدود الہی قائم کرنے،

وَشَعْبِ الصَّدْعِ

منکروں کی جڑیں کاٹنے ،شکستگی

وَلَمِّ الشَّعَثِ وَسَدِّ

دور کرنے ،اتحاد مسلمین کے

الْخَلَلِ وَتَثْقِیفِ

قیام ،تفرقہ مٹانے،

الْأَوَدِ وَ إمْضائِ

ٹیڑھاپن کو دور کرنے ،احکام دین

الْاََحْکامِ وَتَھْذِیبِ

کے رائج کرنے، اسلام کو

الْاِسْلامِ وَقَمْعِ

خالص بنانے اور بتوں کو

الْآثامِ وَٲَرْھَجُوا

توڑنے سے روکا ان لوگوں

عَلَیْکُمْ نَقْعَ

نے آپ پر جنگیں مسلط کیں

الْحُرُوبِ وَالْفِتَنِ

فساد مچایا اور آپ پر حسد

وَٲَنْحَوْا عَلَیْکُمْ

و کینے کی تلواریں

سُیُوفَ الْاََحْقادِ

کھینچ لیں انہوں نے آپ

وَھَتَکُوا مِنْکُمُ

کی عزت کا پاس نہ کیا اور

السُّتُورَ وَابْتاعُوا

آپ کے حق ﴿خمس ﴾کو شراب

بِخُمْسِکُمُ الْخُمُورَ

پر خرچ کیا محتاجوں کیلئے

وَصَرَفُوا صَدَقاتِ

صدقات کی رقمیں

الْمَساکِینِ إلَی

مسخروں اور ظالم

الْمُضْحِکِینَ

افراد کو دے دیں

وَالسَّاخِرِینَ

یہ سب اس لیے ہوا

وَذلِکَ بِما طَرَّقَتْ

کہ نافرمانوں، گمراہوں،

لَھُمُ الْفَسَقَۃُ الْغُواۃُ

حاسدوں اور باغیوں نے

وَالْحَسَدَۃُ الْبُغاۃُ

اس راہ کو کھولا جو بیعت

ٲَھْلُ النَّکْثِ وَالْغَدْرِ

توڑنے والے، دھوکہ دینے والے،

وَالْخِلافِ وَالْمَکْرِ

وعدہ خلافی کرنے والے،

وَالْقُلُوبِ الْمُنْتِنَۃِ

دغا دینے والے تھے اور ان

مِنْ قَذَرِ الشِّرْکِ

کے دل شرک کی ناپاکی سے

وَالْاََجْسادِ

بھرے ہوئے اور ان کے جسم

الْمُشْحَنَۃِ مِنْ دَرَنِ

کفر کی آلودگی میں لتھڑے

الْکُفْرِ الَّذِینَ ٲَضَبُّوا

ہوئے تھے وہ نفاق میں محفوظ

عَلَی النِّفاقِ وَٲَکَبُّوا

اور بدبختی کی راہوں میں

عَلَی عَلائِقِ الشِّقاقِ

دور نکل گئے پس جونہی

فَلَمَّا مَضَی الْمُصْطَفی

حضرت رسول(ص) کا وصال ہوا

صَلَوات اﷲِ عَلَیْہِ

ان پر اور ان کی آل(ع) پر،

وَآلِہِ اخْتَطَفُوا الْغِرَّۃَ

خدا کی رحمتیں ہوں

وَانْتَھَزُوا الْفُرْصَۃَ

تو دھوکے باز جمع ہوگئے انہوں

وَانْتَھَکُوا الْحُرْمَۃَ

نے اس کو موقع کو غنیمت جانا

وَغَادَرُوھُ عَلَی

انہوں نے آپ کا احترام نہ کیا

فِرَاشِ الْوَفاۃِ وَ

اور آپ کی میت چھوڑ

ٲَسْرَعُوا لِنَقْضِ

کے چل دیے انہوں نے

الْبَیْعَۃِ وَمُخالَفَۃِ

بیعت توڑنے میں جلدی کی،

الْمَوَاثِیقِ الْمُؤَکَّدَۃِ

تاکید شدہ پیمان کی مخالفت

وَخِیانَۃِ الْاََمانَۃِ

کرنے اور اس امانت

الْمَعْرُوضَۃِ عَلَی

کو ضائع کرنے میں سرعت

الْجِبالِ الرَّاسِیَۃِ

دکھائی جو بلند پہاڑوں

وَٲَبَتْ ٲَنْ تَحْمِلَہا

کے سامنے لائی گئی تو انہوں

وَحَمَلَھَا الْاِنْسانُ

نے اسے اٹھانے سے انکار کیا

الظَّلُومُ الْجَھُولُ ذُو

اور انسان نے اسے اٹھا لیا جو

الشِّقاقِ وَالْعِزَّۃِ

ستم گار ،نادان ،تفرقہ باز،

بِالْآثامِ الْمُؤْلِمَۃِ وَ

گناہوں میں ڈوبا ہوا ، دل تنگ

الْاََنَفَۃِ عَنِ الانْقِیادِ

اور اچھے انجام کی خاطر

لِحَمِیدِ الْعاقِبَۃِ

فرمانبرداری کرنے سے سرکش

فَحُشِرَ سفْلَۃُ

پس بّدو عرب اور دیگر

الْاََعْرابِ وَبَقایَا الْاََحْزابِ

قبائل نبوت ورسالت کے گھر

إلَی دارِ النُّبُوَّۃِ وَ

پر اور وحی اور فرشتوں

الرِّسالَۃِ وَمَھْبِطِ

کے اترنے کی جگہ پر

الْوَحْیِ وَالْمَلائِکَۃِ

چڑھ دوڑے اور حکومت

وَمُسْتَقَرِّ سُلْطانِ

اسلامی کے مرکز پر جانشینی

الْوِلایَۃِ وَمَعْدِنِ

خلافت اور امامت کے حامل

الْوَصِیَّۃِ وَالْخِلافَۃِ

علی(ع) پر حملہ آور ہوئے یہاں تک

وَالْاِمامَۃِ حَتَّی

کہ اپنے بھائی کے بارے

نَقَضُوا عَھْدَ

مصطفےٰ (ص)کا پیمان توڑ دیا جو ہدایت

الْمُصْطَفَی فِی ٲَخِیہِ

کا نشان اور ہلاکت کے

عَلَمِ الْھُدَی

راستوں سے راہ نجات کی

وَالْمُبَیِّنِ طَرِیقَ

طرف لانے والے تھے نیز

النَّجاۃِ مِنْ طُرُقِ

انہوں نے پیغمبر اکرم(ص) کا

الرَّدَیٰ وَجَرَحُوا

جگر زخمی کیا جب ان

کَبِدَ خَیْرِ الْوَرَیٰ فِی

کی دخترپر ظلم کیا ان کی پیاری

ظُلْمِ ابْنَتِہِ وَاضْطِہادِ

کا دل جلایا ان کی نظروں

حَبِیبَتِہِ وَاھْتِضامِ

میں عزت والی کو دکھی کیا جو

عَزِیزَتِہِ بَضْعَۃِ

ان کے جسم کا حصہ اور ان

لَحْمِہِ وَفِلْذَۃِ کَبِدِھِ

کے جگر کا ٹکڑا تھیں

وَخَذَلُوابَعْلَہاوَصَغَّرُوا

پھر ان کے شوہر کا ساتھ چھوڑ

قَدْرَھُ وَاسْتَحَلُّوا

دیا ان کی عزت کم تر سمجھی

مَحارِمَہُ وَقَطَعُوا

ان کی حرمتوں کو پامال کیا

رَحِمَہُ وَٲَنْکَرُوا ٲُخُوَّتَہُ

ان سے رشتہ داری کا لحاظ

وَھَجَرُوا مَوَدَّتَہُ

نہ کیا ان کو مومن بھائی نہ جانا

وَنَقَضُوا طاعَتَہُ

ان کی محبت ترک کر دی

وَجَحَدُوا وِلایَتَہُ

ان کی اطاعت سے نکل گئے

وَٲَطْمَعُوا الْعَبِیدَ فِی

ان کی ولایت سے انکار کیا

خِلافَتِہِ وَقادُوھُ إلی

غلاموں کو ان کے حق

بَیْعَتِھِمْ مُصْلِتَۃً

خلافت پر حریص بنایا اور

سُیُوفَہا مُشْرِعَۃً

انہیں اپنی بیعت کیلئے

ٲَسِنَّتَہا وَھُوَ ساخِطُ

کھینچ لائے جب کہ ان پر

الْقَلْبِ ھَائِجُ

تلواریں اٹھائے نیزے

الْغَضَبِ شَدِیدُ

تانے ہوئے تھے ایسے میں ان کا

الصَّبْرِ کاظِمُ

دل رنجیدہ تھا سینے میں غضب

الْغَیْظِ یَدْعُونَہُ إلَی

بھرا تھا لیکن صبر سے کام

بَیْعَتِھِمُ الَّتِی عَمَّ

لے رہے تھے غصے کو پی

شُؤْمُھَا الْاِسْلامَ

رہے تھے وہ آپ سے

وَزَرَعَتْ فِی

اپنی بیعت کراتے تھے

قُلُوبِ ٲَھْلِھَا الْآثامَ

وہ بیعت جس سے اسلام

وَعَقَّتْ سَلْمانَہا

کی جگ ہنسائی ہوئی اور

وَطَرَدَتْ مِقْدَادَہا

وہ بیعت جس نے لوگوں کے

وَنَفَتْ جُنْدُبَہا

دلوں میں بتوں کی محبت

وَفَتَقَتْ بَطْنَ

پیدا کردی سلمان ِمحمدی(ص) کو

عَمَّارِہا وَحَرَّفَتِ

نظر انداز کیا مقداد کو

الْقُرْآنَ وَبَدَّلَتِ

گھر سے نکال دیا ابوذر

الْاََحْکامَ وَغَیَّرَتِ

کو دیس سے نکال

الْمَقامَ وَٲَباحَتِ

دیا، عمار کے پیٹ پر لاتیں

الْخُمْسَ لِلطُّلَقائِ

ماریں ،قرآن میں تحریف کردی،

وَسَلَّطَتْ ٲَوْلادَ

احکام دین بدل دیے،

اللُّعَنائِ عَلَی

خلافت غیروں نے لے لی،

الْفُرُوجِ وَالدِّمائِ وَ

خمس مکہ میں آزاد کئے ہؤوں

خَلَطَتِ الْحَلالَ

کے لیے مباح کردیا، ملعونوں

بِالْحَرامِ وَاسْتَخَفَّتْ

کی اولاد لوگوں کی عزت و

بِالْاِیمانِ وَالْاِسْلامِ

ناموس پر مسلط ہوگئی

وَھَدَمَتِ الْکَعْبَۃَ

حلال کو حرام کے ساتھ ملایا

وَٲَغارَتْ عَلَی دارِ

دیا، ایمان اور اسلام کو بے

الْھِجْرَۃِ یَوْمَ الْحَرَّۃِ

اہمیت بنا دیا،عمارت کعبہ کو

وَٲَبْرَزَتْ بَناتِ

ڈھا دیا اور مقام ہجرت

الْمُہاجِرِینَ

مدینہ میں حرّہ کے دن لوٹ

وَالْاََنْصارِ لِلنَّکالِ

مار کی مہاجرین و انصار

وَالسَّوْرَۃِوَٲَلْبَسَتْھُنَّ

کی عورتوں کی بے حرمتی کی

ثَوْبَ الْعارِ وَالْفَضِیحَۃِ

اور ان کو سزائیں دیں اس

وَرَخَّصَتْ لاََِھْلِ

طرح ان کو بے عزت اور

الشُّبْھَۃِ فِی قَتْلِ

رسوا کر دیا منافق افراد کو پیغمبر(ص)

ٲَھْلِ بَیْتِ الصَّفْوَۃِ

کی پاک اولاد کو قتل کرنے ،

وَ إبَادَۃِ نَسْلِہِ وَ

آپ کی پاک وپاکیزہ نسل

اسْتِیْصالِ شَٲْفَتِہِ

کو ختم کرنے،ان کی اصل

وَسَبْیِ حَرَمِہِ وَقَتْلِ

و نسل کاٹ ڈالنے ،ان کے

ٲَنْصارِھِ وَکَسْرِ

اہل حرم کو قید کرنے، ان

مِنْبَرِھِ وَقَلْبِ

کے انصار کو قتل کرنے ،ان

مَفْخَرِھِ وَ إخْفائِ دِینِہِ

کے منبر کو ویران کرنے،

وَقَطْعِ ذِکْرِھِ یَا

ان کے افتخار کو مٹانے ،ان

مَوالِیَّ فَلَوْ عایَنَکُمُ

کے دین کو چھپانے اور ان

الْمُصْطَفَی وَسِہامُ

کے ذکر کو بند کرنے پر لگایا

الْاَُمَّۃِ مُغْرَقَۃٌ فِی

اے میرے آقایان پس اگر

ٲَکْبادِکُمْ وَرِماحُھُمْ

جناب مصطفےٰ (ص)آپ(ع) کو دیکھیں

مُشْرَعَۃٌ فِی

کہ امت کے تیر آپ

نُحُورِکُمْ وَسُیُوفُہا

کے سینوں میں پیوست ہیں

مُولَغَۃٌ فِی دِمائِکُمْ

ان کے نیزے آپ کی

یَشْفِی ٲَبْنائُ الْعَوَاھِرِ

گردنوں میں گڑے ہیں

غَلِیلَ الْفِسْقِ مِنْ

ان کی تلواریں بے دریغ

وَرَعِکُمْ وَغَیْظَ

آپ کے خون کو بہا رہی ہیں

الْکُفْرِ مِنْ إیمَانِکُمْ

زنازادوں کے بد کار بیٹے

وَٲَنْتُمْ بَیْنَ صَرِیعٍ

آپ کے تقوے ٰ سے پیاس

فِی الْمِحْرَابِ قَدْ

بجھا رہے ہیں کفر کا غصہ

فَلَقَ السَّیْفُ ہامَتَہُ

آپ کے ایمان سے ٹھنڈا کررہے

وَ شَھِیدٍ فَوْقَ

ہیں اور آپ (ع)محراب میں قتل ہوئے

الْجَنَازَۃِ قَدْ شُکَّتْ

پڑے ہیں ان کی سخت تلوار

ٲَکْفانُہُ بِالسِّہامِ

نے آپ کا سر زخمی کیا اور آپ

وَقَتِیلٍ بِالْعَرائِ قَدْ

شہید ہوکر جنازے پر پڑے ہیں

رُفِعَ فَوْقَ الْقَناۃِ

کسی کے کفن میں تیروں

رَٲْسُہُ وَمُکَبَّلٍ فِی

کی انیاں گڑی ہیں یا لاش بیانان

السِّجْنِ قَدْ رُضَّتْ

میں پڑی ہے کٹا ہوا سر نیزے پر

بِالْحَدِیدِ ٲَعْضاؤُھُ

چڑھایا ہوا ہے یا زندان میں

وَمَسْمُومٍ قَدْ

بند کر رکھاہے کہ اعضائ

قُطِّعَتْ بِجُرَعِ

بند لوہے کی زہر سے زخم زخم

السَّمِّ ٲَمْعاؤُھُ وَ

ہیں جبکہ دل وجگر جام زہر سے

شَمْلُکُمْ عَبَادِیدُ

ٹکڑے ٹکڑے ہیں آپ کے

تُفْنِیھِمُ الْعَبِیدُ وَٲَبْنائُ

افراد خاندان آوارہ وطن

الْعَبِیدِ فَھَلِ الْمِحَنُ

ہیں جن کو غلاموں اور غلام زادوں

یَا سادَتِی إلاَّ الَّتِی

نے قتل کیا پس اے میرے

لَزِمَتْکُمْ وَالْمَصائِبُ

سرداران ! آیا کوئی سختی رہ گئی ہے جو

إلاَّ الَّتِی عَمَّتْکُمْ

آپ پر نہیں آئی اور کوئی

وَالْفَجَائِعُ إلاَّ

مصیبت ہے جو آپ پر نہیں

الَّتِی خَصَّتْکُمْ

گزری کوئی افتاد ہے جو آپ

وَالْقَوارِعُ إلاَّ الَّتِی

کیلئے لازم نہ ٹھہری ہو اور کوئی

طَرَقَتْکُمْ صَلَوَاتُ

تکلیف ہے جو آپ کو نہیں پہنچی

اﷲِ عَلَیْکُمْ وَ

ہو آپ پر آپ کی پاک روحوں

عَلَی ٲَرْواحِکُمْ

اور آپ کے طاہر بدنوں

وَٲَجْسادِکُمْ

پر خدا کا درود ہو

وَرَحْمَۃُ اﷲِ

خدا کی رحمت ہو اور اس کی

وَبَرَکاتُہُ۔

برکات ہوں

پھر قبر مبارک پر بوسہ

دے اور کہے:

بِٲَبِی ٲَنْتُمْ وَٲُمِّی یَا

میرے ماں باپ آپ پر

آلَ الْمُصْطَفَی إنَّا لاَ

قربان اے اولاد مصطفےٰ (ص)ہم

نَمْلِکُ إلاَّ ٲَنْ

کچھ نہیں کرسکتے سوائے اس کے

نَطُوفَ حَوْلَ

کہ آپ کے نورانی

مَشاھِدِکُمْ وَنُعَزِّیَ

مقبروں کا طواف کرتے

فِیہا ٲَرْواحَکُمْ عَلَی

رہیں آپ کی روحوں کو تسلیت

ہذِھِ الْمَصَائِبِ

پیش کرتے رہیں ان بڑی

الْعَظِیمَۃِ الْحَالَّۃِ

بڑی مصیبتوں پر جو آپ

بِفِنائِکُمْ وَالرَّزایَا

کے آستان پر آئیں اور

الْجَلِیلَۃِ النَّازِلَۃِ

بھاری سختیاں جو آپ کو

بِساحَتِکُمُ الَّتِی

پیش آئیں جن سے آپ کے

ٲَثْبَتَتْ فِی قُلُوبِ

محبوں کے دل زخمی ہوگئے

شِیعَتِکُمُ الْقُرُوحَ

ان کے جگر خون ہو کر رہ گئے

وَٲَوْرَثَتْ ٲَکْبادَھُمُ

اور ان کے سینے غم واندوہ

الْجُرُوحَ وَزَرَعَتْ

سے بھرے ہوئے ہیں پس

فِی صُدُورِھِمُ

ہم خدا کو گواہ بناتے ہیں کہ

الْغُصَصَ فَنَحْنُ

ضرور ہم شریک ہیں آپ

نُشْھِدُ اﷲَ ٲَنَّا قَد

کے جنگ آزما دوستوں

شارَکْناٲَوْلِیائَکُمْ

اور مددگاروں کے

وَٲَنْصَارَکُمُ

ساتھ بیعت توڑنے

الْمُتَقَدِّمِینَ فِی

والوں تفرقہ ڈالنے

إرَاقَۃِ دِمائِ النَّاکِثِینَ

والوں اور ضدی خارجیوں

وَالْقَاسِطِینَ وَ

کا خون بہانے اور قاتلان

الْمَارِقِینَ وَقَتَلَۃِ

حسین (ع) سے بدلہ لینے

ٲَبِی عَبْدِاﷲِ سَیِّدِ

میں کہ جو سردار ہیں

شَبابِ ٲَھْلِ الْجَنَّۃِ

جوانان جنت کے ان پر

عَلَیْہِ اَلسَّلَامُ

ہمارا سلام ہو

یَوْمَ کَرْبَلائَ بِالنِّیَّاتِ

ہماری نیتوں اور دلوں

وَالْقُلُوبِ وَالتَّٲَسُّفِ

میں افسوس ہے کہ ہم ان

عَلَی فَوْتِ تِلْکَ

موقعوں پر موجود نہ تھے

الْمَواقِفِ الَّتِی حَضَرُوا

جب آپ کے محب

لِنُصْرَتِکُمْ وَعَلَیْکُمْ

آپ کی مدد کررہے تھے

مِنَّا اَلسَّلَامُ وَرَحْمَۃُ

آپ پر ہماراسلام ہو خد اکی رحمت

اﷲِ وَبَرَکاتُہُ۔

ہو اور اس کی برکات ہوں

اب قبر کو اپنے اور قبلہ کے درمیان قرار دے اور کہے:

اَللّٰھُمَّ یَا ذَاالْقُدْرَۃِ

اے معبود! اے ایسی قدرت

الَّتِی صَدَرَ عَنْھَا

کے مالک جس سے یہ

الْعَالَمُ مُکَوَّناً مَبْرُوئاً

کائنات وجود میں آئی

عَلَیْہا مَفْطُوراً

اور یہ پیدا ہوئی اس نے ایسی عظیم

تَحْتَ ظِلِّ الْعَظَمَۃِ

قدرت کے سائے میں قرار

فَنَطَقَتْ شَوَاھِدُ

پکڑا پس تیری کاریگری

صُنْعِکَ فِیہِ بِٲَنَّکَ

کے نشان جو دنیا میں ہیں

ٲَنْتَ اﷲُ لاَ إلہَ إلاَّ

وہ گواہی دیتے ہیں کہ تو

ٲَنْتَ مُکَوِّنُہُ وَبَارِئُہُ

ہی اﷲ ہے کہ تیرے سوائ کوئی

وَفاطِرُھُ ابْتَدَعْتَہُ لاَ

معبود نہیں جس نے

مِنْ شَیْئٍ وَلاَ عَلَی

دنیا بنائی اسے صورت

شَیْئٍ وَلاَ فِی شَیْئٍ

دی، اسے پیدا کیا، اسے ایجاد

وَلاَ لِوَحْشَۃٍ دَخَلَتْ

کیا نہ کسی چیزسے نہ کسی چیز

عَلَیْکَ إذْ لاَ

کے بعد نہ کسی چیز کے اندر

غَیْرُکَ وَلاَ حاجَۃٍ

اور نہ اسے بوجہ خوف کے

بَدَتْ لَکَ فِی

بنایا جو تجھ پر طاری

تَکْوِینِہِ وَلاَ

ہوا ہو کہ تیرے سوا کوئی

لاِسْتِعانَۃٍ مِنْکَ

موجود نہ تھا نہ تجھے اس

عَلَی الْخَلْقِ بَعْدَھُ

کے پید اکرنے کی

بَلْ ٲَنْشَٲْتَہُ لِیَکُونَ

حاجت و ضرورت تھی نہ تو

دَلِیلاً عَلَیْکَ بِٲَنَّکَ

نے دنیا اس لیے بنائی

بائِنٌ مِنَ الصُّنْعِ فَلا

کہ بعد میں مخلوق تیری مدد

یُطِیقُ الْمُنْصِفُ

کرے گی بلکہ تو نے یہ اس لیے

لِعَقْلِہِ إنْکارَکَ

پیدا کی کہ یہ تیری ذات کی

وَ الْمَوْسُومُ بِصِحَّۃِ

دلیل ٹھہرے کہ تو اس مخلوق

الْمَعْرِفَۃِ جُحُودَکَ

سے جدا والگ ہے پس

ٲَسْٲَلُکَ بِشَرَفِ

کوئی باانصاف عاقل تیری

الْاِخْلاصِ فِی

ذات کا ،مکر نہیں ہوسکتا

تَوْحِیدِکَ وَحُرْمَۃِ

اور کوئی صحیح معرفت رکھنے والا شخص

التَّعَلُّقِ بِکِتابِکَ

تیرا انکار نہیں کرسکتا سوال

وَٲَھْلِ بَیْتِ نَبِیِّکَ

کرتا ہوں تجھ سے بواسطہ

ٲَنْ تُصَلِّیَ عَلَی آدَمَ

تیری توحید میں خلوص کے شرف

بَدِیعِ فِطْرَتِکَ وَ

تیری کتاب اور تیرے نبی(ص)

بِکْرِ حُجَّتِکَ

کے اہل بی(ع)ت سے تعلقِ حرمت

وَلِسَانِ قُدْرَتِکَ

کے ذریعے کہ تو حضرت آدم (ع)

وَالْخَلِیفَۃِ فِی

پر رحمت فرما جو تیری

بَسِیطَتِکَ وَعَلَی

مخلوق میں نقش اوّل ،تیری

مُحَمَّدٍ الْخالِصِ مِنْ

اولین حجت تیری قدرت

صَفْوَتِکَ وَ

کے بیان گر اور تیری وسیع

الْفاحِصِ عَنْ

زمین میں تیرے نائب ہیں اور

مَعْرِفَتِکَ وَالْغائِصِ

محمد(ص) پر رحمت کر جو تیرے

الْمَٲْمُونِ عَلَی

خاص برگزیدہ ،تیری معرفت

مَکْنُونِ سَرِیرَتِکَ

میں پوری طرح کوشاں اور

بِمَا ٲَوْلَیْتَہُ مِنْ

تیرے راز تک پہنچنے والے

نِعْمَتِکَ بِمَعُونَتِکَ

امانتدار اور تلاش کار ہیں کیونکہ

وَعَلَی مَنْ بَیْنَھُما

تو نے ان کو اپنی نعمت اور

مِنَ النَّبِیِّینَ

مدد عطا کی ہے اور ان پیغمبروں(ع)

وَالْمُکَرَّمِینَ

پر رحمت کر اور صاحبان کرامت

وَالْاََوْصِیائِ

اوصیائ پر اور صدیقوں پر رحمت کر

وَالصِّدِّیقِینَ

جو آدم (ع)ومحمد(ص) کے درمیان گزرے

وَٲَنْ تَھَبَنِی لاِِِمامِی

ہیں اور میرے اس امام (ع)کے

ہذَا۔

واسطے مجھے بخش دے

پھر اپنا رخسار ضریح مبارک پر رکھے اور کہے:

اَللّٰھُمَّ بِمَحَلِّ ہذَا

اے معبود! اس سردار نے تیری

السَّیِّدِ مِنْ طاعَتِکَ

جو اطاعت کی اس کے

وَبِمَنْزِلَتِہِ عِنْدَکَ

واسطے سے اور ان کی

لاَ تُمِتْنِی فُجَائَۃً وَلاَ

جو عزت تیرے ہاں ہے

تَحْرِمْنِی تَوْبَۃً

اس کے واسطے سے مجھے حادثاتی

وَارْزُقْنِی الْوَرَعَ عَنْ

موت سے بچا توبہ سے

مَحارِمِکَ دِیناً

محروم نہ کر مجھے دین و دنیا

وَدُنْیا وَاشْغَلْنِی

میں اپنے حرام کردہ کاموں

بِالْاَخِرَۃِ عَنْ طَلَبِ

سے پرہیز کی توفیق دے

الْاَُولی وَوَفِّقْنِی لِما

مجھے دنیا کی جگہ آخرت

تُحِبُّ وَتَرْضی

میں مشغول رکھ مجھے ان

وَجَنِّبْنِی اتِّباعَ

کاموں کی توفیق دے جو

الْھَوَیٰ وَالاغْتِرارَ

تجھے پسند ہیں اور مجھ کو خواہش

بِالْاََباطِیلِ وَالْمُنَی۔

پرستی اور جھوٹی باتوں اور بے جا

اَللّٰھُمَّ اجْعَلِ

تمناؤں کے دھوکے سے

السَّدادَ فِی قَوْلِی وَ

بچا اے معبود! میرے قول میں

الصَّوابَ فِی فِعْلِی

درستی، میرے فعل میں راستی،

وَالصِّدْقَ وَالْوَفائَ

قرار دے میرے عہد و پیمان

فِی ضَمانِی وَ

اور وعدے میں صدق و

وَعْدِی وَالْحِفْظَ

وفا، قرار دے میرے عہدو

وَالْاِیناسَ مَقْرُونَیْنَ

پیمان میں پائداری اور قوت

بِعَھْدِی وَوَعْدِی

اور میرے اخلاق وکردار میں

وَالْبِرَّ وَالْاِحْسانَ

نیکی و عمدگی پیدا فرما اور سلامتی

مِنْ شَٲْنِی وَخُلْقِی

کو میرے شامل حال فرما

وَاجْعَلِ السَّلامَۃَ لِی

اور آسائش کو میرے

شامِلَۃً وَالْعافِیَۃَ بِی

چاروں طرف جگہ دے

مُحِیطَۃً مُلْتَفَّۃً

اپنی بہترین کاریگری اور

وَلَطِیفَ صُنْعِکَ

مددگاری کا رخ میری

وَعَوْنِکَ مَصْرُوفاً

طرف کردے اپنی طرف

إلَیَّ وَحُسْنَ

سے بہترین توفیق اورآسانی

تَوْفِیقِکَ

مجھے عطا فرما اور اے پروردگار

وَیُسْرِکَ مَوْفُوراً

مجھے نیک بختی کی زندگی اور

عَلَیَّ وَٲَحْیِنِی یَارَبِّ

شہادت کی موت دے اور

سَعِیداًوَتَوَفَّنِی

اس کے بعد پاک رکھ اے معبود !

شَھِیداً وَطَہِّرْنِی

میرے کانوں اور آنکھوں

لِلْمَوْتِ وَمَا بَعْدَھُ۔

میں صحت اور نور پیدا فرما

اَللّٰھُمَّ وَاجْعَلِ

میری راہوں کو بہتر وبارونق کر

الصِّحَّۃَ وَالنُّورَ فِی

مجھ کو دین ومذہب میں

سَمْعِی وَبَصَرِی

ہدایت اور فہم دے

وَالْجِدَۃَ وَالْخَیْرَ فِی

عدل کا ترازو ہمیشہ میری

طُرُقِی وَالْھُدی

آنکھوں کے سامنے رکھ کہ

وَالْبَصِیرَۃَ فِی دِینِی

ذکر اور نصیحت میرا شیوہ

وَمَذْھَبِی وَالْمِیزانَ

و عادت ہو فکر و عبرت

ٲَبَداً نَصْبَ عَیْنِی

کو میرے لیے تسلی واعتماد

وَالذِّکْرَ وَالْمَوْعِظَۃَ

کا ذریعہ بنا اور یقین

شِعارِیٰ وَدِثارِیٰ

کو میرے دل میں جاگزیں

وَالْفِکْرَۃَ وَالْعِبْرَۃَ

کر دے اس کو میرے لیے

ٲُنْسِی وَعِمادِی

ذریعہ اعتماد بنا اور اسے

وَمَکِّنِ الْیَقِینَ فِی

میری عقل اور ارادے پر

قَلْبِی وَاجْعَلْہُ

غالب کردے میرے عمل میں

ٲَوْثَقَ الْاََشْیائِ فِی

ہدایت کو جگہ دے اپنے

نَفْسِی وَاغْلِبْہُ عَلَی

حکم کے سامنے جھکنا

رَٲْئِی وَعَزْمِی

میرے لیے وجہ قرار

وَاجْعَلِالْاِرشادَ فِی

بنا اپنے قضاوقدر پر

عَمَلِی وَالتَّسْلِیمَ

مجھے مطمئن رکھ اور وہی

اَ ٲَتَّقِیَ ٲَحَداً مِنْ

میرے ارادے کی انتہا

اََِمْرِکَ مِہادِی

اور میری ہمت ومقصد کا

وَسَنَدِی وَالرِّضا

آخر ہو یہاں تک کہ

بِقَضائِکَ وَ قَدَرِک

میں اپنے دین کے بارے

ٲَقْصَی عَزْمِی

میں کسی مخلوق سے نہ

وَنِہایَتِی وَٲَبْعَدَ

ڈروں اور سوائے آخرت

ھَمِّی وَغایَتِی حَتَّی

کے کچھ طلب نہ کروں

خَلْقِکَ بِدِینِی وَلاَ

دین کو اپنی تعریف وستائش

ٲَطْلُبَ بِہِ غَیْرَ

کا ذریعہ نہ بناؤں اور

آخِرَتِی وَلاَ

میری عاقبت کو بہترین

ٲَسْتَدْعِیَ مِنْہُ إطْرائِی

عاقبت، قرار دے میرے

وَمَدْحِی وَاجْعَلْ

ٹھکانے کو بہترین ٹھکانا

خَیْرَ الْعَواقِبِ

اور میری زندگی اور میری

عاقِبَتِی وَخَیْرَ

ہدایت کو بہترین ہدایت

الْمَصایِرِ مَصِیرِی

اور میرے حصے کو بڑا حصہ

وَٲَنْعَمَ الْعَیْشِ

اور میری قسمت کو اونچی

عَیْشِی وَٲَفْضَلَ

قسمت اور نصیب بنادے

الْھُدی ھُدایَ

اے پرودگار ہر برائی

وَٲَوْفَرَ الْحُظُوظِ

سے میرا نگہبان بن،

حَظِّی وَٲَجْزَلَ

ہر نیکی کی طرف رہنمائی

الْاََقْسامِ قِسْمِی

اورہبری فرما ، ہر ظالم اور

وَنَصِیبِی وَکُنْ لِی

حاسد کے مقابل

یَارَبِّ مِنْ کُلِّ سُوئٍ

میرا مددگار اور محافظ بن

وَلِیّاً وَ إلی کُلِّ خَیْرٍ

اے معبود! تو ہی میرا

دَلِیلاً وَقائِداً وَمِنْ

سہارا ہے تو میری پناہ تو

کُلِّ باغٍ وَحَسُودٍ

میرا یقین توہی میرا

ظَھِیراً وَمانِعاً۔

مددگار ،محرک اور میری

اَللّٰھُمَّ بِکَ

قوت ہے تیرے لیے

اعْتِدادِی وَعِصْمَتِی

ہے میری زندگی و موت

وَثِقَتِی وَتَوْفِیقِی

تیرے ہاتھ میں ہے

وَحَوْلِی وَقُوَّتِی

میرا ٹھہراؤ اور میری

وَلَکَ مَحْیایَ

حرکت اور بے شک

وَمَماتِی وَفِی

تیرے محکم سلسلے سے تعلق

قَبْضَتِکَ سُکُونِی

رکھتا اور اس سے جڑا ہوا

وَحَرَکَتِی وَ إنَّ

ہوں تمام معاملوں میں

بِعُرْوَتِکَ الْوُثْقی

تجھ پر مجھے بچانے اور

اسْتِمْساکِیوَوُصْلَتِی

چھڑانے والا ہے تیرے

وَعَلَیْکَ فِی الْاَُمُورِ

امن اور عزت والے گھر

کُلِّہا اعْتِمادِی وَ

میں میرا ٹھکانا

تَوَکُّلِی وَمِنْ عَذابِ

اور میری بازگشت ہے

جَھَنَّمَ وَمَسِّ سَقَرَ نَجاتِی

اور اولاد مصطفےٰ (ص) میں سے

وَخَلاصِی وَفِی دارِ

میرے سرداران و

ٲَمْنِکَ وَکَرامَتِکَ مَثْوایَ

آقایان کے ہاتھوں میری

وَمُنْقَلَبِی وَعَلَی ٲَیْدِی

کامیابی و کشائش ہے

سادَتِی وَمَوالِیَّ آلِ

اے معبود ! محمد(ص) وآل محمد (ع) پر

الْمُصْطَفَی فَوْزِی

رحمت فرما اور مومن

وَفَرَجِی اَللّٰھُمَّ صَلِّ

مردوں اور مومنہ عورتوں

عَلَی مُحَمَّدٍ وَآلِ

کو بخش دے اور مسلمان

مُحَمَّدٍ وَاغْفِرْ

مردوں اور مسلمان

لِلْمُؤْمِنِینَ وَالْمُؤْمِنات

عورتوں کو بخش دے

ِ وَالْمُسْلِمِینَ وَالْمُسْلِماتِ

اور میرے ماں باپ

وَاغْفِرْ لِی وَلِوالِدَیَّ

کو اور ان کی اولاد کو

وَمَا وَلَدا وَٲَھْلِ

نیز میرے گھر والوں،

بَیْتِی وَجِیرانِی

میرے ہمسایوں اور

وَلِکُلِّ مَنْ قَلَّدَنِی

ان مومنوں اور مومنات

یَداً مِنَ الْمُؤْمِنِینَ

کو بخش دے جن کا حق

وَالْمُؤْمِناتِ إنَّکَ

میری گردن پر ہے

ذُوفَضْلٍ عَظِیمٍ

اس میں شک نہیں کہ تو

وَالسَّلاَمُ عَلَیْکَ

بڑے فضل وکرم والا ہے ۔

وَرَحْمَۃُ اﷲِ

اورتجھ پر سلام ہو اور اللہ کی

وَبَرَکَاتُہ،

رحمت و برکتیں ہوں

 

 

فہرست مفاتیح الجنان

فہرست سورہ قرآنی

تعقیبات, دعائیں، مناجات

جمعرات اور جمعہ کے فضائل

جمعرات اور جمعہ کے فضائل
شب جمعہ کے اعمال
روز جمعہ کے اعمال
نماز رسول خدا ﷺ
نماز حضرت امیرالمومنین
نماز حضرت فاطمہ زہرا سلام اللہ علیہا
بی بی کی ایک اور نماز
نماز امام حسن
نماز امام حسین
نماز امام زین العابدین
نماز امام محمد باقر
نماز امام جعفر صادق
نماز امام موسیٰ کاظم
نماز امام علی رضا
نماز امام محمد تقی
نماز حضرت امام علی نقی
نماز امام حسن عسکری
نماز حضرت امام زمانہ (عج)
نماز حضرت جعفر طیار
زوال روز جمعہ کے اعمال
عصر روز جمعہ کے اعمال

تعین ایام ہفتہ برائے معصومین

بعض مشہور دعائیں

قرآنی آیات اور دعائیں

مناجات خمسہ عشرہ

ماہ رجب کی فضیلت اور اعمال

ماہ شعبان کی فضیلت واعمال

ماہ رمضان کے فضائل و اعمال

ماہ رمضان کے فضائل و اعمال
(پہلا مطلب)
ماہ رمضان کے مشترکہ اعمال
(پہلی قسم )
اعمال شب و روز ماہ رمضان
(دوسری قسم)
رمضان کی راتوں کے اعمال
دعائے افتتاح
(ادامہ دوسری قسم)
رمضان کی راتوں کے اعمال
(تیسری قسم )
رمضان میں سحری کے اعمال
دعائے ابو حمزہ ثمالی
دعا سحر یا عُدَتِیْ
دعا سحر یا مفزعی عند کربتی
(چوتھی قسم )
اعمال روزانہ ماہ رمضان
(دوسرا مطلب)
ماہ رمضان میں شب و روز کے مخصوص اعمال
اعمال شب اول ماہ رمضان
اعمال روز اول ماہ رمضان
اعمال شب ١٣ و ١٥ رمضان
فضیلت شب ١٧ رمضان
اعمال مشترکہ شب ہای قدر
اعمال مخصوص لیلۃ القدر
اکیسویں رمضان کی رات
رمضان کی ٢٣ ویں رات کی دعائے
رمضان کی ٢٧ویں رات کی دعا
رمضان کی٣٠ویں رات کی دعا

(خاتمہ )

رمضان کی راتوں کی نمازیں
رمضان کے دنوں کی دعائیں

ماہ شوال کے اعمال

ماہ ذیقعدہ کے اعمال

ماہ ذی الحجہ کے اعمال

اعمال ماہ محرم

دیگر ماہ کے اعمال

نوروز اور رومی مہینوں کے اعمال

باب زیارت اور مدینہ کی زیارات

مقدمہ آداب سفر
زیارت آئمہ کے آداب
حرم مطہر آئمہ کا اذن دخول
مدینہ منورہ کی زیارات
کیفیت زیارت رسول خدا ۖ
زیارت رسول خدا ۖ
کیفیت زیارت حضرت فاطمہ سلام اللہ علیہا
زیارت حضرت فاطمہ زہرا سلام اللہ علیہا
زیارت رسول خدا ۖ دور سے
وداع رسول خدا ۖ
زیارت معصومین روز جمعہ
صلواة رسول خدا بزبان حضرت علی
زیارت آئمہ بقیع
قصیدہ ازریہ
زیارت ابراہیم بن رسول خدا ۖ
زیارت فاطمہ بنت اسد
زیارت حضرت حمزہ
زیارت شہداء احد
تذکرہ مساجد مدینہ منورہ
زیارت وداع رسول خدا ۖ
وظائف زوار مدینہ

امیرالمومنین کی زیارت

فضیلت زیارت علی ـ
کیفیت زیارت علی
پہلی زیارت مطلقہ
نماز و زیارت آدم و نوح
حرم امیر المومنین میں ہر نماز کے بعد کی دعا
حرم امیر المومنین میں زیارت امام حسین ـ
زیارت امام حسین مسجد حنانہ
دوسری زیارت مطلقہ (امین اللہ)
تیسری زیارت مطلقہ
چوتھی زیارت مطلقہ
پانچویں زیارت مطلقہ
چھٹی زیارت مطلقہ
ساتویں زیارت مطلقہ
مسجد کوفہ میں امام سجاد کی نماز
امام سجاد اور زیارت امیر ـ
ذکر وداع امیرالمؤمنین
زیارات مخصوصہ امیرالمومنین
زیارت امیر ـ روز عید غدیر
دعائے بعد از زیارت امیر
زیارت امیر المومنین ـ یوم ولادت پیغمبر
امیر المومنین ـ نفس پیغمبر
ابیات قصیدہ ازریہ
زیارت امیر المومنین ـ شب و روز مبعث

کوفہ کی مساجد

امام حسین کی زیارت

فضیلت زیارت امام حسین
آداب زیارت امام حسین
اعمال حرم امام حسین
زیارت امام حسین و حضرت عباس
(پہلا مطلب )
زیارات مطلقہ امام حسین
پہلی زیارت مطلقہ
دوسری زیارت مطلقہ
تیسری زیارت مطلقہ
چوتھی زیارت مطلقہ
پانچویں زیارت مطلقہ
چھٹی زیارت مطلقہ
ساتویں زیارت مطلقہ
زیارت وارث کے زائد جملے
کتب حدیث میں نااہلوں کا تصرف
دوسرا مطلب
زیارت حضرت عباس
فضائل حضرت عباس
(تیسرا مطلب )
زیارات مخصوص امام حسین
پہلی زیارت یکم ، ١٥ رجب و ١٥شعبان
دوسری زیارت پندرہ رجب
تیسری زیارت ١٥ شعبان
چوتھی زیارت لیالی قدر
پانچویں زیارت عید الفطر و عید قربان
چھٹی زیارت روز عرفہ
کیفیت زیارت روز عرفہ
فضیلت زیارت یوم عاشورا
ساتویں زیارت یوم عاشورا
زیارت عاشورا کے بعد دعا علقمہ
فوائد زیارت عاشورا
دوسری زیارت عاشورہ (غیر معروفہ )
آٹھویں زیارت یوم اربعین
اوقات زیارت امام حسین
فوائد تربت امام حسین

کاظمین کی زیارت

زیارت امام رضا

سامرہ کی زیارت

زیارات جامعہ

چودہ معصومین پر صلوات

دیگر زیارات

ملحقات اول

ملحقات دوم

باقیات الصالحات

مقدمہ
شب وروز کے اعمال
شب وروز کے اعمال
اعمال مابین طلوعین
آداب بیت الخلاء
آداب وضو اور فضیلت مسواک
مسجد میں جاتے وقت کی دعا
مسجد میں داخل ہوتے وقت کی دعا
آداب نماز
آذان اقامت کے درمیان کی دعا
دعا تکبیرات
نماز بجا لانے کے آداب
فضائل تعقیبات
مشترکہ تعقیبات
فضیلت تسبیح بی بی زہرا
خاک شفاء کی تسبیح
ہر فریضہ نماز کے بعد دعا
دنیا وآخرت کی بھلائی کی دعا
نماز واجبہ کے بعد دعا
طلب بہشت اور ترک دوزخ کی دعا
نماز کے بعد آیات اور سور کی فضیلت
سور حمد، آیة الکرسی، آیة شہادت اورآیة ملک
فضیلت آیة الکرسی بعد از نماز
جو زیادہ اعمال بجا نہ لا سکتا ہو وہ یہ دعا پڑھے
فضیلت تسبیحات اربعہ
حاجت ملنے کی دعا
گناہوں سے معافی کی دعا
ہر نماز کے بعد دعا
قیامت میں رو سفید ہونے کی دعا
بیمار اور تنگدستی کیلئے دعا
ہر نماز کے بعد دعا
پنجگانہ نماز کے بعد دعا
ہر نماز کے بعد سور توحید کی تلاوت
گناہوں سے بخشش کی دعا
ہرنماز کے بعد گناہوں سے بخشش کی دعا
گذشتہ دن کا ضائع ثواب حاصل کرنے کی دعا
لمبی عمر کیلئے دعا
(تعقیبات مختصر)
نماز فجر کی مخصوص تعقیبات
گناہوں سے بخشش کی دعا
شیطان کے چال سے بچانے کی دعا
ناگوار امر سے بچانے والی دعا
بہت زیادہ اہمیت والی دعا
دعائے عافیت
تین مصیبتوں سے بچانے والی دعا
شر شیطان سے محفوظ رہنے کی دعا
رزق میں برکت کی دعا
قرضوں کی ادائیگی کی دعا
تنگدستی اور بیماری سے دوری کی دعا
خدا سے عہد کی دعا
جہنم کی آگ سے بچنے کی دعا
سجدہ شکر
کیفیت سجدہ شکر
طلوع غروب آفتاب کے درمیان کے اعمال
نماز ظہر وعصر کے آداب
غروب آفتاب سے سونے کے وقت تک
آداب نماز مغرب وعشاء
تعقیبات نماز مغرب وعشاء
سونے کے آداب
نیند سے بیداری اور نماز تہجد کی فضیلت
نماز تہجد کے بعددعائیں اور اذکار

صبح و شام کے اذکار و دعائیں

صبح و شام کے اذکار و دعائیں
طلوع آفتاب سے پہلے
طلوع وغروب آفتاب سے پہلے
شام کے وقت سو مرتبہ اﷲاکبر کہنے کی فضیلت
فضیلت تسبیحات اربعہ صبح شام
صبح شام یا شام کے بعد اس آیة کی فضیلت
ہر صبح شام میں پڑھنے والا ذکر
بیماری اور تنگدستی سے بچنے کیلئے دعا
طلوع وغروب آفتاب کے موقعہ پر دعا
صبح شام کی دعا
صبح شام بہت اہمیت والا ذکر
ہر صبح چار نعمتوں کو یاد کرنا
ستر بلائیں دور ہونے کی دعا
صبح کے وقت کی دعا
صبح صادق کے وقت کی دعا
مصیبتوں سے حفاظت کی دعا
اﷲ کا شکر بجا لانے کی دعا
شیطان سے محفوظ رہنے کی دعا
دن رات امان میں رہنے کی دعا
صبح شام کو پڑھنی کی دعا
بلاؤں سے محفوظ رہنے کی دعا
اہم حاجات بر لانے کی دعا

دن کی بعض ساعتوں میں دعائیں

پہلی ساعت
دوسری ساعت
تیسری ساعت
چوتھی ساعت
پانچویں ساعت
چھٹی ساعت
ساتویں ساعت
آٹھویں ساعت
نویں ساعت
دسویں ساعت
گیارہویں ساعت
بارہویں ساعت
ہر روز وشب کی دعا
جہنم سے بچانے والی دعا
گذشتہ اور آیندہ نعمتوں کا شکر بجا لانے کی دعا
نیکیوں کی کثرت اور گناہوں سے بخشش کی دعا
ستر قسم کی بلاؤں سے دوری کی دعا
فقر وغربت اور وحشت قبر سے امان کی دعا
اہم حاجات بر لانے والی دعا
خدا کی نعمتوں کا شکر ادا کرنے والی دعا
دعاؤں سے پاکیزگی کی دعا
فقر وفاقہ سے بچانے والی دعا
چار ہزار گناہ کیبرہ معاف ہو جانے کی دعا
کثرت سے نیکیاں ملنے اور شر شیطان سے محفوظ رہنے کی دعا
نگاہ رحمت الہی حاصل ہونے کی دعا
بہت زیادہ اجر ثواب کی دعا
عبادت اور خلوص نیت
کثرت علم ومال کی دعا
دنیاوی اور آخروی امور خدا کے سپرد کرنے کی دعا
بہشت میں اپنے مقام دیکھنے کی دعا

دیگر مستحبی نمازیں

نماز اعرابی
نماز ہدیہ
نماز وحشت
دوسری نماز وحشت
والدین کیلئے فرزند کی نماز
نماز گرسنہ
نماز حدیث نفس
نماز استخارہ ذات الرقاع
نماز ادا قرض وکفایت از ظلم حاکم
نماز حاجت
نماز حل مہمات
نماز رفع عسرت(پریشانی)
نماز اضافہ رزق
نماز دیگر اضافہ رزق
نماز دیگر اضافہ رزق
نماز حاجت
دیگر نماز حاجت
دیگر نماز حاجت
دیگر نماز حاجت
دیگر نماز حاجت
نماز استغاثہ
نماز استغاثہ بی بی فاطمہ
نماز حضرت حجت(عج)
دیگر نماز حضرت حجت(عج)
نماز خوف از ظالم
تیزی ذہن اور قوت حافظہ کی نماز
گناہوں سے بخشش کی نماز
نماز دیگر
نماز وصیت
نماز عفو
(ایام ہفتہ کی نمازیں)
ہفتہ کے دن کی نماز
اتوار کے دن کی نماز
پیر کے دن کی نماز
منگل کے دن کی نماز
بدھ کے دن کی نماز
جمعرات کے دن کی نماز
جمعہ کے دن کی نماز

بیماریوں کی دعائیں اور تعویذات

بیماریوں کی دعائیں اور تعویذات
دعائے عافیت
رفع مرض کی دعا
رفع مرض کی ایک اوردعا
سر اور کان درد کا تعویذ
سر درد کا تعویذ
درد شقیقہ کا تعویذ
بہرے پن کا تعویذ
منہ کے درد کا تعویذ
دانتوں کے درد کا تعویذ
دانتوں کے درد کا تعویذ
دانتوں کے درد کا ایک مجرب تعویذ
دانتوں کے درد کا ایک اور تعویذ
درد سینے کا تعویذ
پیٹ درد کا تعویذ
درد قولنج کا تعویذ
پیٹ اور قولنج کے درد کا تعویذ
دھدر کا تعویذ
بدن کے ورم و سوجن کا تعویذ
وضع حمل میں آسانی کا تعویذ
جماع نہ کر سکنے والے کا تعویذ
بخار کا تعویذ
پیچش دور کرنے کی دعا
پیٹ کی ہوا کیلئے دعا
برص کیلئے دعا
بادی وخونی خارش اور پھوڑوں کا تعویذ
شرمگاہ کے درد کی دعا
پاؤں کے درد کا تعویذ
گھٹنے کے درد
پنڈلی کے درد
آنکھ کے درد
نکسیر کا پھوٹن
جادو کے توڑ کا تعویذ
مرگی کا تعویذ
تعویذسنگ باری جنات
جنات کے شر سے بچاؤ
نظر بد کا تعویذ
نظر بد کا ایک اور تعویذ
نظر بد سے بچنے کا تعویذ
جانوروں کا نظر بد سے بچاؤ
شیطانی وسوسے دور کرنے کا تعویذ
چور سے بچنے کا تعویذ
بچھو سے بچنے کا تعویذ
سانپ اور بچھو سے بچنے کا تعویذ
بچھو سے بچنے کا تعویذ

کتاب الکافی سے منتخب دعائیں

سونے اور جاگنے کی دعائیں

گھر سے نکلتے وقت کی دعائیں

نماز سے پہلے اور بعد کی دعائیں

وسعت رزق کیلئے بعض دعائیں

ادائے قرض کیلئے دعائیں

غم ،اندیشہ و خوف کے لیے دعائیں

بیماریوں کیلئے چند دعائیں

چند حرز و تعویذات کا ذکر

دنیا وآخرت کی حاجات کیلئے دعائیں

بعض حرز اور مختصر دعائیں

حاجات طلب کرنے کی مناجاتیں

بعض سورتوں اور آیتوں کے خواص

خواص با سور قرآنی
خواص بعض آیات سورہ بقرہ وآیة الکرسی
خواص سورہ قدر
خواص سورہ اخلاص وکافرون
خواص آیة الکرسی اورتوحید
خواص سورہ توحید
خواص سورہ تکاثر
خواص سورہ حمد
خواص سورہ فلق و ناس اور سو مرتبہ سورہ توحید
خواص بسم اﷲ اور سورہ توحید
آگ میں جلنے اور پانی میں ڈوبنے سے محفوظ رہنے کی دعا
سرکش گھوڑے کے رام کی دعا
درندوں کی سر زمین میں ان سے محفوظ رہنے کی دعا
تلاش گمشدہ کا دستور العمل
غلام کی واپسی کیلئے دعا
چور سے بچنے کیلئے دعا
خواص سورہ زلزال
خواص سورہ ملک
خواص آیہ الا الی اﷲ تصیر الامور
رمضان کی دوسرے عشرے میں اعمال قرآن
خواب میں اولیاء الہی اور رشتے داروں سے ملاقات کا دستور العمل
اپنے اندر سے غمزدہ حالت کو دور کرنے کا دستور العمل
اپنے مدعا کو خواب میں دیکھنے کا دستور العمل
سونے کے وقت کے اعمال
دعا مطالعہ
ادائے قرض کا دستور العمل
تنگی نفس اور کھانسی دور کرنے کا دستور العمل
رفع زردی صورت اور ورم کیلئے دستور العمل
صاحب بلا ومصیبت کو دیکھتے وقت کا ذکر
زوجہ کے حاملہ ہونے کے وقت بیٹے کی تمنا کیلئے عمل
دعا عقیقہ
آداب عقیقہ
دعائے ختنہ
استخارہ قرآن مجید اور تسبیح کا دستور العمل
یہودی عیسائی اور مجوسی کو دیکھتے وقت کی دعا
انیس کلمات دعا جو مصیبتوں سے دور ہونے کا سبب ہیں
بسم اﷲ کو دروزے پر لکھنے کی فضیلت
صبح شام بلا وں سے تحفظ کی دعا
دعائے زمانہ غیبت امام العصر(عج)
سونے سے پہلے کی دعا
پوشیدہ چیز کی حفاظت کیلئے دستور العمل
پتھر توڑنے کا قرآنی عمل
سوتے اور بیداری کے وقت سورہ توحید کی تلاوت خواص
زراعت کی حفاظت کیلئے دستور العمل
عقیق کی انگوٹھی کی فضیلت
نیسان کے دور ہونے جانے کی دعا
نماز میں بہت زیادہ نیسان ہونے کی دعا
قوت حافظہ کی دوا اور دعا
دعاء تمجید اور ثناء پرودرگار

موت کے آداب اور چند دعائیں

ملحقات باقیات الصالحات

ملحقات باقیات الصالحات
دعائے مختصراورمفید
دعائے دوری ہر رنج وخوف
بیماری اور تکلیفوں کو دور کرنے کی دعا
بدن پر نکلنے والے چھالے دور کرنے کی دعا
خنازیر (ہجیروں )کو ختم کرنے کیلئے ورد
کمر درد دور کرنے کیلئے دعا
درد ناف دور کرنے کیلئے دعا
ہر درد دور کرنے کا تعویذ
درد مقعد دور کرنے کا عمل
درد شکم قولنج اور دوسرے دردوں کیلئے دعا
رنج وغم میں گھیرے ہوے شخص کا دستور العمل
دعائے خلاصی قید وزندان
دعائے فرج
نماز وتر کی دعا
دعائے حزین
زیادتی علم وفہم کی دعا
قرب الہی کی دعا
دعاء اسرار قدسیہ
شب زفاف کی نماز اور دعا
دعائے رہبہ (خوف خدا)
دعائے توبہ منقول از امام سجاد