Danishkadah Danishkadah Danishkadah
حضرت امام علی نے فرمایا، ایمان (گویا) ایک درخت ہے یقین جس کی جڑ ، تقویٰ جس کی شاخ، حیا جس کا زیور اور سخاوت جس کا پھل ہوتا ہے غررالحکم حدیث 1786

مفاتیح الجنان و باقیات الصالحات (اردو)

دعائے جوشن کبیر

بلدالامین و مصباح کفعمی میں مروی ہے کہ امام زین العابدین -نے اپنے والد گرامی سے اور انہوں نے اپنے والد امیر المومنین (ع)سے اور انہوں نے حضرت رسول (ص) سے روایت کرتے ہوئے فرمایا کہ یہ دعا جبرائیل (ع)نے ایک جنگ کے دوران آنحضرت (ص) کو پہنچائی اس وقت آپ نے بھاری بھر کم زرہ پہن رکھی تھی ، جسکے بوجھ سے آپ(ص) کے جسم کو تکلیف ہو رہی تھی۔ جبرائیل (ع)نے عرض کی کہ یامحمد مصطفٰی (ص) آپکا رب آپکو سلام کہتا ہے اور فرماتا ہے کہ یہ بھاری زرہ اتار دیں اور یہ دعا پڑھیں کہ یہ آپ کیلئے اور آپکی امت کیلئے حفظ و امان کی باعث ہے۔پھر اس دعا کے اور فضائل و فوائد بھی بتائے کہ جنکے ذکر کی یہاں گنجائش نہیں ہے۔ چنانچہ اس ضمن میں فرمایا کہ جو شخص اسے کفن پر لکھے تو خدا کی رحمت سے دور ہے کہ اسے جہنم میں جلائے۔ اور جو شخص رمضان المبارک کی پہلی رات، خلوص نیت کے ساتھ یہ دعا پڑھے تو اسکو شب قدر دیکھنا نصیب ہو گی اور خدا وند عالم اسکی خاطر ستر ہزار فرشتے پیدا کرے گا جو تسبیح و تقدیس کریں گے کہ جسکا ثواب اسکو ملے گا۔ اسکی مزید فضیلت بھی بیان ہوئی ہے کہ جو شخص ماہ رمضان میں تین مرتبہ یہ دعا پڑھے تو خدا تعالی اسکے جسم پر جہنم کی آگ حرام کر دیگا، جنت اس کیلئے واجب قرار دے گا اور دو فرشتے اس پر مقرر کر دے گا جو گناہوں سے اسکی حفاظت کریں گے اور وہ زندگی بھر خدا کی امان میں رہے گا۔اور روایت کے آخر میں ہے کہ امام حسین علیہ السلام نے فرمایا : میرے والد گرامی علی ابن ابی طالب علیہما السلام نے مجھے اس دعا کومحفوظ کرنے کی وصیت فرمائی اور ہدایت کی کہ میں اسے انکے کفن پر لکھوں، اپنے اہلبیت کو اس کی تعلیم دوں اور انہیں اسکے پڑھنے کی ترغیب دلائوں۔ یہ ہزار اسم ہیں کہ انہیں میں اسم اعظم ہے۔مؤلف کہتے ہیں کہ اس روایت سے دوباتیں معلوم ہوتی ہیں ، ایک یہ کہ اس دعا کا کفن پر لکھنا مستحب ہے۔ جیسا کہ علامہ بحرالعلوم ﴿خدا انکی قبر کو معطر فرمائے ﴾نے اپنی کتاب درّہ میں اسکی طرف اشارہ کیا ہے۔

وَسُنَّ ٲَنْ یَکْتُبَ بِالْاَکْفانِ شَھادَۃُ الاِِسْلامِ وَالْاِیْمَانِ

سنت ہے کہ میت کے کفن پر لکھا جائے، اسلام اور ایمان کی شھادت

وَھَکَذا کِتابَۃُ الْقُرْآنِ وَالْجَوْشَنِ الْمَنْعُوتِ بِالْاَمَانِ

اسی طرح قرآن کریم بھی لکھا جائے اور دعا جوشن کو لکھا جائے جو وسیلہِ حفظ و امان ہے

دوسری یہ کہ اس دعا کوآغاز ماہ رمضان میں پڑھنا مستحب ہے، لیکن اس کا شب قدر میں پڑھنے کے بارے میں مذکورہ روایت میں کوئی تذکرہ نہیں ہے ۔ تاہم علامہ مجلسی (رح) نے زاد المعاد میں شب قدر کے اعمال میں اسکا ذکر کیا ہے۔اوربعض روایات میں ہے کہ دعا جوشن کبیر کو شب قدر کی تینوںراتوں میں پڑھا جائے اور ہمارے لئے اس مقام پر بزرگوار کا فرمان ہی کافی ہے﴿اللہ انہیں دار الاسلام میں داخل کرے﴾۔ خلاصہ یہ کہ اس دعا کی ایک سو فصلیں ہیں اور ہر فصل میں اﷲ تعالیٰ کے دس اسمائ ہیں اور ضروری ہے کہ ہر فصل کے آخر میں کہیں:

سُبْحانَکَ یَا لاَ إلہَ إلاَّٲَنْتَ الْغَوْثَ الْغَوْثَ الْغَوْثَ خَلِّصْنا مِنَ النَّارِیَارَبِّ۔

توپاک ہے اے وہ کہ تیرے سو اکوئی معبود نہیں فریاد رسوں کے فریاد رس اے رب ہمیں آگ سے نجات عطا فرما۔

بلدالامین میں ہے کہ ہر فصل سے پہلے بِسْمِ اﷲ کہیں اور ہر فصل کے بعد کہیں:

سُبْحانَکَ یَا لاَ إلہَ إلاَّ ٲَ نْتَ الْغَوْثَ الْغَوْثَ الْغَوْثَ صَلِّ عَلی مُحَمَّدٍ وَآلِہِ وَخَلِّصْنا

تو پاک ہے اے وہ کہ تیرے سوا کوئی معبود نہیں فریاد رسوں کے فریاد رس رحمت فرما محمد (ص) وآل (ع) محمد پر اور ہمیں آگ سے نجات دے

مِنَ النَّارِ یَا رَبِّ، یَا ذَا الْجَلالِ وَالْاِکْرامِ، یَا ٲَرْحَمَ الرَّاحِمِینَ ۔

اے رب ،اے صاحب جلالت و بزرگی والے، اے سب سے زیادہ رحم کرنے والے۔

دعائے جوشن کبیر یہ ہے:

﴿1﴾ اَللّٰھُمَّ إنِّی ٲَسْئَلُکَ بِاسْمِکَ یَا اللّهُ، یَا رَحْمنُ، یَا رَحِیمُ، یَا کَرِیمُ، یَا مُقِیمُ

اے معبود میں تجھ سے تیرے نام کے واسطے سے سوال کرتا ہوں اے اﷲ اے بخشنے والے اے مہربان اے کرم کرنے والے اے ٹھہرنے والے

یَا عَظِیمُ یَا قَدِیمُ یَا عَلِیمُ یَا حَلِیمُ یَا حَکِیمُ سُبْحانَکَ یَا لاَ إلہَ إلاَّ ٲَنْتَ، الْغَوْثَ الْغَوْثَ

اے بڑائی والے اے سب سے پہلے اے علم والے اے بردبار اے حکمت والے ۔ تو پاک ہے اے کہ تیرے سوا کوئی معبود نہیں فریاد سن فریاد سن

خَلِّصْنا مِنَ النَّارِ یَا رَبِّ ﴿2﴾ یَا سَیِّدَ السَّاداتِ یَا مُجِیبَ الدَّعَواتِ، یَا رَافِعَ الدَّرَجَاتِ

ہمیں آگ سے نجات دے اے پروردگار اے سرداروں کے سردار اے دعائیں قبول کرنے والے اے درجات بلند کرنے والے

یَا وَ لِیَّ الْحَسَناتِ، یَا غَافِرَ الْخَطِیئاتِ، یَا مُعْطِیَ الْمَسْٲَلاتِ، یَا قابِلَ التَّوْباتِ، یَا سَامِعَ

اے نیکیوں میں مدد دینے والے اے گناہوں کے بخشنے والے اے حاجات پوری کرنے والے اے توبہ قبول کرنے والے اے آوازوں کے

الْاَصْواتِ، یَا عَالِمَ الْخَفِیِّاتِ، یَا دَافِعَ الْبَلِیِّاتِ ﴿3﴾ یَا خَیْرَ الْغافِرِینَ، یَا خَیْرَ الْفاتِحِینَ،

سننے والے اے چھپی چیزوں کے جاننے والے اے بلائیں دور کرنے والے اے بخشنے والوں میں بہتر اے فتح کرنے والوں میں بہتر

یَا خَیْرَ النَّاصِرِینَ یَا خَیْرَ الْحَاکِمِینَ یَا خَیْرَ الرَّازِقِینَ یَا خَیْرَ الْوَارِثِینَ یَا خَیْرَ الْحَامِدِینَ،

اے مدد کرنے والوں میں بہتر اے حاکموں میں بہتر اے رزق دینے والوں میں بہتر اے وارثوں میں بہتر اے تعریف کرنے والوں میں بہتر

یَا خَیْرَ الذَّاکِرِینَ یَا خَیْرَ الْمُنْزِلِینَ، یَا خَیْرَ الُْمحْسِنِینَ، ﴿4﴾ یَا مَنْ لَہُ الْعِزَّۃُ وَالْجَمالُ،

اے ذکر کرنے والوں میں بہتر اے میزبانوں میں بہتراے احسان کرنے والوں میں بہتر۔ اے وہ جس کیلئے عزت اور جمال ہے

یَا مَنْ لَہُ الْقُدْرَۃُ وَالْکَمالُ، یَا مَنْ لَہُ الْمُلْکُ وَالْجَلالُ، یَا مَنْ ھُوَ الْکَبِیرُ الْمُتَعالِ، یَا

اے وہ جس کے لیے قدرت اور کمال ہے اے وہ جسکے لیے ملک اور جلال ہے اے وہ جو بڑائی والا بلند تر ہے اے

مُنْشِیََ السَّحابِ الثِّقالِ، یَا مَنْ ھُوَ شَدِیدُ الِْمحالِ، یَا مَنْ ھُوَ سَرِیعُ الْحِسابِ، یَا مَنْ ھُوَ

بھرے بادلوں کے پیدا کرنے والے اے وہ جو بہت زیادہ قوت والا ہے اے وہ جو تیز تر حساب کرنے والا ہے اے وہ جو

شَدِیدُ الْعِقابِ، یَا مَنْ عِنْدَھُ حُسْنُ الثَّوابِ، یَا مَنْ عِنْدَھُ ٲُمُّ الْکِتابِ ﴿5﴾ اَللّٰھُمَّ إنِّی

سخت عذاب دینے والا ہے اے وہ جسکے ہاں بہترین ثواب ہے اے وہ جسکے پاس لوح محفوظ ہے۔ اے معبود! تجھ سے سوال کرتا ہوں

ٲَسْٲَلُکَ بِاسْمِکَ یَا حَنَّانُ، یَا مَنَّانُ، یَا دَیَّانُ، یَا بُرْہانُ، یَا سُلْطانُ، یَا رِضْوانُ،

تیرے نام کے واسطے سے اے محبت والے اے احسان کرنیوالے اے بدلہ دینے والے اے دلیل روشن اے صاحب سلطنت اے راضی ہونے والے

یَا غُفْرانُ، یَا سُبْحانُ، یَا مُسْتَعانُ، یَا ذَا الْمَنِّ وَالْبَیانِ ۔ ﴿6﴾ یَا مَنْ تَواضَعَ کُلُّ شَیْئٍ

اے بخشنے والے اے پاکیزگی والے اے مدد کرنے والے اے صاحب احسان وبیان۔ اے وہ جس کی عظمت کے آگے سب چیزیں

لِعَظَمَتِہِ، یَا مَنِ اسْتَسْلَمَ کُلُّ شَیْئٍ لِقُدْرَتِہِ، یَا مَنْ ذَلَّ کُلُّ شَیْئٍ لِعِزَّتِہِ، یَا مَنْ خَضَعَ کُلُّ

جھکی ہوئی ہیں اے وہ جسکی قدرت کے سامنے ہر شے سرنگوں ہے اے وہ جسکی بڑائی کے سامنے ہر چیز پست ہے اے وہ جسکے خوف سے ہر چیز

شَیْئٍ لِھَیْبَتِہِ، یَا مَنِ انْقادَ کُلُّ شَیْئٍ مِنْ خَشْیَتِہِ، یَا مَنْ تَشَقَّقَتِ الْجِبالُ مِنْ مَخافَتِہِ، یَا مَنْ

دبی ہوئی ہے اے وہ جسکے ڈر سے ہر چیز فرمانبردار بنی ہوئی اے وہ جسکے خوف سے پہاڑ پھٹ جاتے ہیں اے وہ جسکے

قامَتِ السَّمَاوَاتُ بِٲَمْرِھِ یَا مَنِ اسْتَقَرَّتِ الْاَرَضُونَ بِ إذْنِہِ، یَا مَنْ یُسَبِّحُ الرَّعْدُ بِحَمْدِھِ، یَا

حکم سے آسمان کھڑے ہیں اے وہ جسکے اذن سے زمینیں ٹھہری ہوئی ہیں اے وہ کہ کڑکتی بجلی جسکی تسبیح خواں ہے اے

مَنْ لاَ یَعْتَدِی عَلی ٲَھْلِ مَمْلَکَتِہِ ﴿7﴾ یَا غافِرَ الْخَطایا یَا کاشِفَ الْبَلایا یَا مُنْتَھَی الرَّجایَا

وہ جو اپنے زیر حکومت لوگوں پر ظلم نہیں کرتا اے گناہوں کے بخشنے والے اے بلائیں دور کرنے والے اے امیدوں کے آخری مقام

یَا مُجْزِلَ الْعَطایَا، یَا واھِبَ الْھَدایَا، یَا رازِقَ الْبَرایا، یَا قَاضِیَ الْمَنایا، یَا سَامِعَ الشَّکَایا،

اے بہت عطائوں والے اے تحفے عطا کرنے والے اے مخلوق کو رزق دینے والے اے تمنائیں پوری کرنے والے اے شکایتیں سننے والے

یَا بَاعِثَ الْبَرایا یَا مُطْلِقَ الاَُْساری ﴿8﴾ یَا ذَا الْحَمْدِ وَالثَّنائِ، یَا ذَا الْفَخْرِ وَالْبَہائِ، یَا ذَا

اے مخلوق کو زندہ کرنے والے اے قیدیوں کو آزاد کرنے والے اے تعریف و ثنائ کرنے والے اے فخر و خوبی والے اے

الَْمجْدِ وَالسَّنائِ، یَا ذَا الْعَھْدِ وَالْوَفائِ، یَا ذَا الْعَفْوِ وَالرِّضائِ، یَا ذَا الْمَنِّ وَالْعَطَائِ، یَا ذَا

بزرگی و بلندی والے اے عہد اور وفا والے اے معافی دینے والے اور راضی ہونے والے اے عطا و بخشش کرنے والے اے

الْفَصْلِ وَالْقَضائِ، یَا ذَا الْعِزِّ وَالْبَقائِ، یَا ذَا الْجُودِ وَالسَّخائِ، یَا ذَا الاَْلاَئِ وَالنَّعْمَائِ ﴿9﴾

فیصلے اور انصاف والے اے عزت اور بقائ والے اے عطائ و سخاوت والے اے رحمتوں اور نعمتوں والے

اَللّٰھُمَّ إنِّی ٲَسْٲَ لُکَ بِاسْمِکَ یَا مانِعُ، یَا دافِعُ، یَا رافِعُ، یَا صانِعُ، یَا نافِعُ،

اے معبود! میں تجھ سے سوال کرتا ہوں تیرے نام کے واسطے سے اے روکنے والے اے ہٹانے والے اے بلندکرنے والے اے بنانے والے اے نفع والے

یَا سامِعُ، یَا جامِعُ، یَا شافِعُ، یَا واسِعُ، یَا مُوسِعُ ﴿10﴾ یَا صانِعَ کُلِّ مَصْنُوعٍ،

اے سننے والے اے جمع کرنے والے اے شفاعت کرنے والے اے کشادگی والے اے وسعت دینے والے اے ہر مصنوع کے صانع

یَا خالِقَ کُلِّ مَخْلُوقٍ یَا رازِقَ کُلِّ مَرْزُوقٍ یَا مالِکَ کُلِّ مَمْلُوکٍ یَا کَاشِفَ کُلِّ مَکْرُوبٍ

اے ہر مخلوق کے خالق اے ہررزق پانے والے کے رازق اے ہر مملوک کے مالک اے ہر دکھی کا دکھ دور کرنے والے

یَا فَارِجَ کُلِّ مَھْمُومٍ، یَا رَاحِمَ کُلِّ مَرْحُومٍ، یَا نَاصِرَ کُلِّ مَخْذُولٍ، یَا سَاتِرَ کُلِّ مَعْیُوبٍ،

اے ہر پریشان کی پریشانی مٹانے والے اے ہر رحم کیے گئے پر رحم کرنے والے اے ہر بے سہار کے مددگار اے ہربرائی پر پردہ ڈالنے والے

یَا مَلْجَٲَ کُلِّ مَطْرُودٍ ﴿11﴾ یَا عُدَّتِی عِنْدَ شِدَّتِی، یَا رَجَائِی عِنْدَ مُصِیبَتِی، یَا مُؤْ نِسِی

اے ہر راندے گئے کی پناہ گاہ ۔اے سختی کے وقت میرے سرمایہ اے مصیبت میں میری امید گاہ

عِنْدَ وَحْشَتِی، یَا صَاحِبِی عِنْدَ غُرْبَتِی، یَا وَ لِیِّی عِنْدَ نِعْمَتِی، یَا غِیاثِی عِنْد کُرْبَتِی،

اے وحشت کے وقت میرے ہمدم اے میری تنہائی میں میرے ساتھی اے نعمت میں میری کفالت کرنے والے اے دکھ درد میں میرے مددگار

یَا دَلِیلِی عِنْدَ حَیْرَتِی، یَا غَنائِی عِنْدَ افْتِقارِی، یَا مَلْجَیِی عِنْدَ اضْطِرارِی، یَا مُعِینِی عِنْدَ

اے حیرت کے وقت میرے رہنما اے محتاجی کے وقت میرے سرمایہ اے برقراری کے وقت میری پناہ گاہ اے فریاد کے وقت

مَفْزَعِی ﴿12﴾ یَا عَلاَّمَ الْغُیُوبِ یَا غَفَّارَ الذُّنُوبِ یَا سَتَّارَ الْعُیُوبِ یَا کَاشِفَ الْکُرُوبِ

میرے مددگار ۔ اے ہر غیب کے جاننے والے اے گناہوں کے بخشنے والے اے عیبوں کے چھپانے والے اے مصیبتیں دور کرنے والے

یَا مُقَلِّبَ الْقُلُوبِ یَا طَبِیبَ الْقُلُوبِ یَا مُنَوِّرَ الْقُلُوبِ یَا ٲَنِیسَ الْقُلُوبِ، یَا مُفَرِّجَ الْھُمُومِ،

اے دلوں کو پلٹنے والے اے دلوں کے معالج اے دلوں کے روشن کرنے والے اے دلوں کے ہمدم اے غموں کی گرہ کھولنے والے

یَا مُنَفِّسَ الْغُمُومِ ﴿13﴾ اَللّٰھُمَّ إنِّی ٲَسْٲَ لُکَ بِاسْمِکَ یَا جَلِیلُ، یَا جَمِیلُ، یَا وَکِیلُ،

اے غموں کو دور کرنے والے۔ اے معبود میں تجھ سے سوال کرتا ہوں تیرے نام کے واسطے اے جلال والے اے جمال والے اے کارساز

یَا کَفِیلُ، یَا دَلِیلُ، یَا قَبِیلُ، یَا مُدِیلُ، یَا مُنِیلُ، یَا مُقِیلُ، یَا مُحِیلُ ﴿14﴾ یَا دَلِیلَ

اے سرپرست اے رہنما اے قبول کرنے والے اے رواں کرنے والے اے بخشنے والے اے معاف کرنے والے اے جگہ دینے والے اے سرگردانوں

الْمُتَحَیِّرِینَ، یَا غِیاثَ الْمُسْتَغِیثِینَ، یَا صَرِیخَ الْمُسْتَصْرِخِینَ، یَا جارَ الْمُسْتَجِیرِینَ،

کے رہنما اے پکارنے والوں کی مدد کرنے والے اے فریادیوں کی فریاد کو پہنچنے والے اے پناہ طلب کرنے والوں کی پناہ

یَا ٲَمانَ الْخَائِفِینَ، یَا عَوْنَ الْمُؤْمِنِینَ، یَا رَاحِمَ الْمَساکِینَ، یَا مَلْجَٲَ الْعَاصِینَ، یَا غافِرَ

اے ڈرنے والوں کی ڈھارس اے مومنوں کے مددگار اے بے چاروں پر رحم کرنے والے اے گنہگاروں کی پناہ اے خطاکاروں

الْمُذْنِبِینَ یَا مُجِیبَ دَعْوَۃِ الْمُضْطَرِّینَ ﴿15﴾ یَا ذَا الْجُودِ وَالْاِحْسانِ یَا ذَا الْفَضْلِ وَالْاِمْتِنانِ

کے بخشنے والے اے بے قراروں کی دعا قبول کرنے والے اے صاحب جود و احسان اے صاحب فضل و منت

یَا ذَا الْاَمْنِ وَالْاَمانِ یَا ذَا الْقُدْسِ وَالسُّبْحانِ یَا ذَا الْحِکْمَۃِ وَالْبَیانِ یَا ذَا الرَّحْمَۃِ وَالرِّضْوانِ

اے صاحب امن و امان اے طہارت و پاکیزگی والے اے حکمت و بیان والے اے رحمت و رضا والے

یَا ذَا الْحُجَّۃِ وَالْبُرْہانِ یَا ذَا الْعَظَمَۃِ وَالسُّلْطَانِ یَا ذَا الرَّٲْفَۃِ وَالْمُسْتَعانِ یَا ذَا الْعَفْوِ وَالْغُفْرانِ ﴿16﴾

اے حجت اور روشن دلیل والے اے عظمت و سلطنت والے اے مہربانی کرنے اور مدد دینے والے اے معافی دینے اور بخشنے والے۔

یَا مَنْ ھُوَ رَبُّ کُلِّ شَیْئٍ یَا مَنْ ھُوَ إلہُ کُلِّ شَیْئٍ یَا مَنْ ھُوَ خالِقُ کُلِّ شَیْئٍ یَا مَنْ ھُوَ صَانِعُ

اے وہ جو ہر چیز کا پروردگار ہے اے وہ جو ہرشے کامعبود ہے اے وہ جو ہر چیز کا خالق ہے اے وہ جو ہرچیز کا

کُلِّ شَیْئٍ، یَا مَنْ ھُوَ قَبْلَ کُلِّ شَیْئٍ ، یَا مَنْ ھُوَ بَعْدَ کُلِّ شَیْئٍ، یَا مَنْ ھُوَ فَوْقَ کُلِّ شَیْئٍ،

بنانے والا ہے اے وہ جو ہر شے سے پہلے تھا اے وہ جو ہر شے کے بعد رہے گا اے وہ جو ہر شے سے بلند ہے

یَا مَنْ ھُوَ عَالِمٌ بِکُلِّ شَیْئٍ یَا مَنْ ھُوَ قادِرٌ عَلَی کُلِّ شَیْئٍ یَا مَنْ ھُوَ یَبْقی وَیَفْنی کُلُّ شَیْئٍ﴿17﴾

اے وہ جو ہر چیز کاجاننے والا ہے اے وہ جو ہر چیز پر قادر ہے اے وہ جو باقی رہے گا جب ہر چیز فنا ہو جائے گی۔ اے معبود میں تجھ سے سوال

اَللّٰھُمَّ إنِّی ٲَسْٲَ لُکَ بِاسْمِکَ یَا مُوَْمِنُ، یَا مُھَیْمِنُ، یَا مُکَوِّنُ، یَا مُلَقِّنُ، یَا مُبَیِّنُ،

کرتا ہوں تیرے نام کے واسطے سے اے امن دینے والے اے نگہبان اے کائنات بنانے والے اے تلقین کرنے والے اے ظاہر کرنے والے

یَا مُھَوِّنُ، یَا مُمَکِّنُ، یَا مُزَیِّنُ، یَا مُعْلِنُ، یَا مُقَسِّمُ ۔ ﴿18﴾ یَا مَنْ ھُوَ فِی مُلْکِہِ مُقِیمٌ،

اے آسان کرنے والے اے قدرت دینے والے اے زینت دینے والے اے اعلان کرنے والے اے باٹنے والے ۔ اے وہ جو اپنے اقتدار پر میں پائیدار ہے

یَا مَنْ ھُوَ فِی سُلْطانِہِ قَدِیمٌ یَا مَنْ ھُو فِی جَلالِہِ عَظِیمٌ یَا مَنْ ھُوَ عَلَی عِبادِھِ رَحِیمٌ یَا مَنْ ھُوَ

اے وہ جو اپنی سلطنت میں قدیم ہے اے وہ جو اپنی شان میں بلند تر ہے اے وہ جو اپنے بندوں پر مہربان ہے اے وہ جو

بِکُلِّ شَیْئٍ عَلِیمٌ یَا مَنْ ھُوَ بِمَنْ عَصاھُ حَلِیمٌ یَا مَنْ ھُوَ بِمَنْ رَجاھُ کَرِیمٌ یَا مَنْ ھُوَ فِی صُنْعِہِ

ہر چیز کا جاننے والا ہے اے وہ جو نافرمان سے نرمی کرنے والا ہے اے وہ جو امیدوارپر کرم کرنے والا ہے اے وہ جو اپنی صنعت میں

حَکِیمٌ، یَا مَنْ ھُوَ فِی حِکْمَتِہِ لَطِیفٌ، یَا مَنْ ھُوَ فِی لُطْفِہِ قَدِیمٌ ۔ ﴿19﴾ یَا مَنْ لاَ یُرْجی

حکمت والا ہے اے وہ جو اپنی حکمت میں باریک بین ہے اے وہ جس کا احسان قدیم ہے۔ اے وہ جس سے اس کے فضل کی امید کی

إلاَّ فَضْلُہُ، یَا مَنْ لاَ یُسْٲَلُ إلاَّ عَفْوُھُ، یَا مَنْ لاَ یُنْظَرُ إلاَّ بِرُّھُ، یَا مَنْ لاَ یُخافُ إلاَّ عَدْلُہُ، یَا

جاتی ہے اے وہ جس کی بخشش کاسوال کیا جاتا ہے اے وہ جس سے بھلائی کی آس ہے اے وہ جسکے عدل سے خوف آتا ہے اے

مَنْ لاَ یَدُومُ إلاَّ مُلْکُہُ، یَا مَنْ لاَ سُلْطانَ إلاَّ سُلْطانُہُ، یَا مَنْ وَسِعَتْ کُلَّ شَیْئٍ رَحْمَتُہُ،

وہ جسکی حکومت ہمیشہ رہے گی اے وہ جسکی سلطنت کے سوا کوئی سلطنت نہیں اے وہ جسکی رحمت ہر چیز کو گھیرے ہوئے ہے

یَا مَنْ سَبَقَتْ رَحْمَتُہُ غَضَبَہُ یَا مَنْ ٲَحاطَ بِکُلِّ شَیْئٍ عِلْمُہُ، یَا مَنْ لَیْسَ ٲَحَدٌ مِثْلُہُ ﴿20﴾

اے وہ جسکی رحمت اسکے غضب سے آگے ہے اے وہ جسکا علم ہر چیز پر حاوی ہے اے وہ کہ جس جیسا کوئی نہیں ہے۔

یَا فارِجَ الْھَمِّ، یَا کَاشِفَ الْغَمِّ، یَا غَافِرَ الذَّنْبِ، یَا قَابِلَ التَّوْبِ، یَا خَالِقَ الْخَلْقِ، یَا صَادِقَ

اے اندیشے ہٹا دینے والے اے غم دور کرنے والے اے گناہ معاف کرنے والے اے توبہ قبول کرنے والے اے مخلوقات کے خالق اے وعدے

الْوَعْدِ یَا مُوفِیَ الْعَھْدِ، یَا عَالِمَ السِّرِّ، یَا فَالِقَ الْحَبِّ، یَا رَازِقَ الْاَنامِ ۔ ﴿21﴾ اَللّٰھُمَّ إنِّی

میں سچے اے عہد پورا کرنے والے اے راز کے جاننے والے اے دانے کو چیرنے والے اے لوگوں کے رازق۔ اے معبود میں تجھ سے

ٲَسْٲَ لُکَ بِاسْمِکَ یَا عَلِیُّ یَا وَفِیُّ، یَا غَنِیُّ، یَا مَلِیُّ، یَا حَفِیُّ، یَا رَضِیُّ، یَا زَکِیُّ، یَا بَدِیُّ،

تیرے نام کے واسطے سے سوال کرتا ہوں اے بلند اے وفادار اے بے نیاز اے مہربان اے احسان کرے والے اے پسندیدہ اے پاکیزہ اے ابتدا کرنے والے

یَا قَوِیُّ یَا وَ لِیُّ﴿22﴾ یَا مَنْ ٲَظْھَرَ الْجَمِیلَ یَا مَنْ سَتَرَ الْقَبِیحَ یَا مَنْ لَمْ یُوَاخِذْ بِالْجَرِیرَۃِ

اے قوت والے اے حاکم۔ اے وہ جس نے نیکی کو ظاہر کیا اے وہ جس نے بدی کو ڈھانپا اے وہ جس نے جرم پر گرفت نہیں فرمائی

یَا مَنْ لَمْ یَھْتِکِ السِّتْرَ، یَا عَظِیمَ الْعَفْوِ، یَا حَسَنَ التَّجاوُزِ، یَا وَاسِعَ الْمَغْفِرَۃِ، یَا بَاسِطَ

اے وہ جس نے پردہ فاش نہیں کیا اے بہت معاف کرنے والے اے بہترین درگزر کرنے والے اے وسیع مغفرت والے اے دونوں ہاتھوں

الْیَدَیْنِ بِالرَّحْمَۃِ یَا صَاحِبَ کُلِّ نَجْوی یَا مُنْتَہی کُلِّ شَکْوی ﴿23﴾ یَا ذَا النِّعْمَۃِ السَّابِغَۃِ

سے رحمت کرنے والے اے ہر سرگوشی کے مالک اے شکایت سننے والے۔ اے کامل نعمت کے مالک

یَا ذَا الرَّحْمَۃِ الْواسِعَۃِ، یَا ذَا الْمِنَّۃِ السَّابِقَۃِ، یَا ذَا الْحِکْمَۃِ الْبَالِغَۃِ، یَا ذَا الْقُدْرَۃِ الْکَامِلَۃِ،

اے وسیع رحمت والے اے احسان میں پہل کرنے والے اے بھرپور حکمت والے اے کامل قدرت والے

یَا ذَا الْحُجَّۃِ الْقَاطِعَۃِ یَا ذَا الْکَرامَۃِ الظَّاھِرَۃِ یَا ذَا الْعِزَّۃِ الدَّائِمَۃِ، یَا ذَا الْقُوَّۃِ الْمَتِینَۃِ، یَا ذَا

اے قاطع دلیل والے اے کھلی سخاوت والے اے ہمیشہ کی عزت والے اے مضبوط قوت والے اے سب سے

الْعَظَمَۃِ الْمَنِیعَۃِ﴿24﴾ یَا بَدِیعَ السَّمَاواتِ یَا جَاعِلَ الظُّلُماتِ یَا رَاحِمَ الْعَبَراتِ یَا مُقِیلَ

زیادہ عظمت والے۔ اے آسمانوں کے بنانے والے اے تاریکیوں کو وجود میں لانے والے اے آنسوؤں پر رحم کرنے والے اے لغزشوں کے

الْعَثَراتِ، یَا سَاتِرَ الْعَوْراتِ، یَا مُحْیِیَ الْاَمْواتِ، یَا مُنْزِلَ الاَْیاتِ، یَا مُضَعِّفَ الْحَسَنَاتِ،

معاف کرنے والے اے عیبوں کے چھپانے والے اے مردوں کو زندہ کرنے والے اے آیات کے نازل کرنے والے اے نیکیوں کو دوچند کرنے والے

یَا مَاحِیَ السَّیِّئاتِ، یَا شَدِیدَ النَّقِماتِ ﴿25﴾ اَللّٰھُمَّ إنِّی ٲَسْٲَلُکَ بِاسْمِکَ یَا مُصَوِّرُ،

اے گناہوںکے مٹانے والے اے سخت بدلہ لینے والے۔اے معبود! میں تجھ سے تیرے ہی نام کے واسطے سے سوال کرتا ہوں اے صورت ساز

یَا مُقَدِّرُ یَا مُدَبِّرُ یَا مُطَہِّرُ یَا مُنَوِّرُ یَا مُیَسِّرُ، یَا مُبَشِّرُ، یَا مُنْذِرُ، یَا مُقَدِّمُ، یَا مُوََخِّرُ ﴿26﴾

اے تقدیر بنانے والے اے تدبیر کرنے والے اے پاک کرنے والے اے روشن کرنے والے اے آسان کرنے والے اے بشارت دینے والے اے سب سے پہلے اے سب سے آخری

یَا رَبَّ الْبَیْتِ الْحَرامِ یَا رَبَّ الشَّھْرِ الْحَرامِ یَا رَبَّ الْبَلَدِ الْحَرامِ، یَا رَبَّ الرُّکْنِ وَالْمَقامِ

اے مقدس گھر کے رب اے مقدس مہینے کے رب اے مقدس شہر کے رب اے رکن و مقام کے رب

یَا رَبَّ الْمَشْعَرِ الْحَرامِ یَا رَبَّ الْمَسْجِدِ الْحَرامِ یَا رَبَّ الْحِلِّ وَالْحَرامِ یَا رَبَّ النُّورِ وَالظَّلامِ

اے معشر الحرام کے رب اے مسجد الحرام کے رب اے حلال و حرام کے رب اے روشنی و تاریکی کے رب

یَا رَبَّ التَّحِیَّۃِ وَالسَّلامِ یَا رَبَّ الْقُدْرَۃِ فِی الْاَنامِ۔ ﴿27﴾ یَا ٲَحْکَمَ الْحاکِمِینَ، یَا ٲَعْدَلَ

اے درود و سلام کے رب اے لوگوںمیں زیادہ توانائی پیدا کرنے والے۔ اے حاکموں میں بڑے حاکم اے عادلوں میں

الْعادِلِینَ یَا ٲَصْدَقَ الصَّادِقِینَ یَا ٲَطْھَرَ الطَّاھِرِینَ یَا ٲَحْسَنَ الْخالِقِینَ یَا ٲَسْرَعَ الْحاسِبِینَ

زیادہ عادل اے سچوں میں زیادہ سچے اے پاکوں میں پاک تر اے خالقوں میں بہترین خالق اے حساب کرنے والوں میں زیادہ تیز

یَا ٲَسْمَعَ السَّامِعِینَ، یَا ٲَبْصَرَ النَّاظِرِینَ، یَا ٲَشْفَعَ الشَّافِعِینَ، یَا ٲَکْرَمَ الْاَکْرَمِینَ ۔ ﴿28﴾

اے سننے والوں میں زیادہ سننے والے اے دیکھنے والوں میں زیادہ دیکھنے والے اے شفاعت کرنے والوں میں بڑے شفیع اے بزرگی والوں میں بڑے بزرگ۔

یَا عِمادَ مَنْ لاَ عِمادَ لَہُ، یَا سَنَدَ مَنْ لاَ سَنَدَ لَہُ، یَا ذُخْرَ مَنْ لاَ ذُخْرَ لَہُ، یَا حِرْزَ مَنْ

اے اسکا آسراجسکا کوئی آسرا نہیں اے اسکے سہارے جسکا کوئی سہارا نہیں اے اسکے سرمایہ جسکا کوئی سرمایہ نہیں اے اسکی پناہ جسکی کوئی

لاَ حِرْزَ لَہُ، یَا غِیاثَ مَنْ لاَ غِیاثَ لَہُ، یَا فَخْرَ مَنْ لاَ فَخْرَ لَہُ، یَا عِزَّ مَنْ لاَ عِزَّ لَہُ، یَا مُعِینَ

پناہ نہیں اے اسکے فریاد رس جسکا کوئی فریاد رس نہیں اے اسکی بڑائی جسکا کوئی فخرنہیں اے اسکی عزت جس کیلئے عزت نہیں اے اسکے مددگار

مَنْ لاَ مُعِینَ لَہُ یَا ٲَنِیسَ مَنْ لاَ ٲَنِیسَ لَہُ یَا ٲَمانَ مَنْ لاَ ٲَمانَ لَہُ ﴿29﴾ اَللّٰھُمَّ إنِّی ٲَسْٲَلُکَ

جسکا کوئی مددگار نہیںاے اسکے ساتھی جسکا کوئی ساتھی نہیں اے اسکی پناہ جسکی کوئی پناہ نہیں ۔ اے معبود میں تجھ سے تیرے نام کے

بِاسْمِکَ یَا عَاصِمُ، یَا قائِمُ، یَا دائِمُ، یَا راحِمُ، یَا سالِمُ، یَا حاکِمُ، یَا عالِمُ، یَا قاسِمُ، یَا

واسطے سے سوال کرتا ہوں اے پناہ دینے والے اے پائیدار اے ہمیشگی والے اے رحم کرنے والے اے بے عیب اے حکومت کے مالک اے علم والے اے تقسیم کرنے والے اے

قابِضُ، یَا باسِطُ ۔ ﴿30﴾ یَا عاصِمَ مَنِ اسْتَعْصَمَہُ، یَا راحِمَ مَنِ اسْتَرْحَمَہُ، یَا غافِرَ مَنِ

بند کرنے والے اے کھولنے والے۔ اے اسکے نگہدار جو نگہداری چاہے اے اس پر رحم کرنے والے جو رحم کا طالب ہو اے اسکے بخشنے والے

اسْتَغْفَرَھُ، یَا ناصِرَ مَنِ اسْتَنْصَرَھُ، یَا حافِظَ مَنِ اسْتَحْفَظَہُ، یَا مُکْرِمَ مَنِ اسْتَکْرَمَہُ،

جو طالب ِبخشش ہو اے اسکی نصرت کرنے والے جو نصرت چاہے اے اسکی حفاظت کرنے والے جو حفاظت چاہے اے اسکو بڑائی دینے والے جو بڑائی طلب کرے

یَا مُرْشِدَ مَنِ اسْتَرْشَدَھُ یَا صَرِیخَ مَنِ اسْتَصْرَخَہُ یَا مُعِینَ مَنِ اسْتَعانَہُ یَا مُغِیثَ مَنِ اسْتَغاثَہُ ﴿31﴾

اے اسکی رہنمائی کرنے والے جو رہنمائی چاہے اے اسکے داد رس جو دادرسی چاہے اے اسکے مددگار جو مددطلب کرے اے اسکے فریاد رس جو فریادکرے۔

یَا عَزِیزاً لاَ یُضامُ، یَا لَطِیفاً لاَ یُرامُ، یَا قَیُّوماً لاَ یَنامُ، یَا دائِماً لاَ یَفُوتُ، یَا حَیّاً لاَ یَمُوتُ،

اے وہ غالب جو ظلم نہیں کرتا اے وہ باریک جو نظر انداز نہیں ہوتا اے وہ نگہبان جو سوتا نہیں اے وہ جاوداں جو مرتا نہیں اے وہ زندہ جسے موت نہیں

یَا مَلِکاً لاَ یَزُولُ یَا باقِیاً لاَ یَفْنی یَا عالِماً لاَ یَجْھَلُ یَا صَمَداً لاَ یُطْعَمُ یَا قَوِیّاً لاَ یَضْعُفُ﴿32﴾

اے وہ بادشاہ جسے زوال نہیں اے وہ باقی جو فانی نہیں اے وہ عالم جس میں جہل نہیں اے وہ بے نیاز جو کھاتا نہیں اے وہ قوی جسے ضعف نہیں۔

اَللّٰھُمَّ إنِّی ٲَسْٲَ لُکَ بِاسْمِکَ یَا ٲَحَدُ، یَا واحِدُ، یَا شاھِدُ، یَا ماجِدُ، یَا حامِدُ، یَا راشِدُ،

اے معبود میں تجھ سے سوال کرتا ہوں تیرے نام کے واسطے سے اے یکتا اے یگانہ اے حاضر اے بزرگوار اے تعریف والے اے رہنما

یَا باعِثُ یَا وارِثُ یَا ضارُّ یَا نافِعُ ﴿33﴾ یَا ٲَعْظَمَ مِنْ کُلِّ عَظِیمٍ یَا ٲَکْرَمَ مِنْ کُلِّ کَرِیمٍ

اے اٹھانے والے اے وارث اے خسارہ دینے والے اے نفع دینے والے۔ اے سب بڑوں سے بڑے اے سب بزرگوں سے بزرگ تر

یَا ٲَرْحَمَ مِنْ کُلِّ رَحِیمٍ یَا ٲَعْلَمَ مِنْ کُلِّ عَلِیمٍ یَا ٲَحْکَمَ مِنْ کُلِّ حَکِیمٍ یَا ٲَقْدَمَ مِنْ کُلِّ قَدِیمٍ

اے سب مہربانوں سے مہربان اے ہر عالم سے بڑے عالم اے ہر حکیم سے بڑے حکیم اے ہر قدیم سے قدیم تر

یَا ٲَکْبَرَ مِنْ کُلِّ کَبِیرٍ یَا ٲَلْطَفَ مِنْ کُلِّ لَطِیفٍ یَا ٲَجَلَّ مِن کُلِّ جَلِیلٍ یَا ٲَعَزَّ مِنْ کُلِّ عَزِیزٍ﴿34﴾

اے ہر بزرگ سے بزرگ تر اے ہر لطیف سے زیادہ لطیف اے ہر جلال والے سے زیادہ جلال والے اے ہرزبردست سے زیادہ زبردست۔

یَا کَرِیمَ الصَّفْحِ یَا عَظِیمَ الْمَنِّ یَا کَثِیرَ الْخَیْرِ، یَا قَدِیمَ الْفَضْلِ، یَا دائِمَ اللُّطْفِ، یَا لَطِیفَ

اے بہتر درگزر کرنے والے اے بڑے احسان والے اے زیادہ خیروالے اے قدیم فضل والے اے ہمیشہ کے لطف والے اے خوبصورت

الصُّنْعِ یَا مُنَفِّسَ الْکَرْبِ یَا کاشِفَ الضُّرِّ، یَا مالِکَ الْمُلْکِ، یَا قاضِیَ الْحَقِّ ۔ ﴿35﴾

صنعت والے اے سختی دور کرنے والے اے دکھ دور کرنے والے اے ہر ملک کے مالک اے حق کا فیصلہ دینے والے۔

یَا مَنْ ھُوَ فِی عَھْدِھِ وَفِیٌّ، یَا مَنْ ھُوَ فِی وَفائِہِ قَوِیٌّ، یَا مَنْ ھُوَ فِی قُوَّتِہِ عَلِیٌّ ، یَا مَنْ ھُوَ فِی

اے وہ جو اپنے عہد کو پورا کرنے والا ہے اے وہ جو اپنی وفا میں قوی ہے اے وہ جو اپنی قوت میں بلند ہے اے وہ جو اپنی بلندی

عُلُوِّھِ قَرِیبٌ یَا مَنْ ھُوَ فِی قُرْبِہِ لَطِیفٌ یَا مَنْ ھُوَ فِی لُطْفِہِ شَرِیفٌ یَا مَنْ ھُوَ فِی شَرَفِہِ عَزِیزٌ

میں قریب ہے اے وہ جو اپنے قرب میں مہربان ہے اے وہ جو اپنے لطف میں کریم ہے اے وہ جو اپنی کرم میں عزت دار ہے

یَا مَنْ ھُوَ فِی عِزِّھِ عَظِیمٌ یَا مَنْ ھُوَ فِی عَظَمَتِہِ مَجِیدٌ یَا مَنْ ھُوَ فِی مَجْدِھِ حَمِیدٌ ﴿36﴾

اے وہ جو اپنی عزت میں عظیم ہے اے وہ جو اپنی عظمت میں بلند مرتبہ ہے اے وہ جو اپنے مرتبے میں تعریف والا ہے

اَللّٰھُمَّ إنِّی ٲَسْٲَ لُکَ بِاسْمِکَ یَا کافِی، یَا شافِی، یَا وافِی، یَا مُعافِی، یَا

اے معبود! میں تجھ سے سوال کرتا ہوں تیرے نام کے واسطے سے اے کفایت کرنے والے اے شفادینے والے اے وفاداراے عافیت دینے والے اے

ہادِی، یَا داعِی، یَا قاضِی، یَا راضِی، یَا عالِی، یَا باقِی ﴿37﴾ یَا مَنْ

ہدایت دینے والے اے بلانے والے اے فیصلے کرنے والے اے خوشنودی والے اے بلندی والے اے باقی رہنے والے۔ اے

کُلُّ شَیْئٍ خاضِعٌ لَہُ یَا مَنْ کُلُّ شَیْئٍ خاشِعٌ لَہُ، یَا مَنْ کُلُّ شَیْئٍ کائِنٌ لَہُ، یَا مَنْ کُلُّ شَیْئٍ

وہ جسکے آگے ہر چیز جھکی ہوئی ہے اے وہ جسکے آگے ہر چیز خوف زدہ ہے اے وہ جس سے ہر چیز کو وجود ملا ہے اے وہ جسکے

مَوْجُودٌ بِہِ یَا مَنْ کُلُّ شَیْئٍ مُنِیبٌ إلَیْہِ یَا مَنْ کُلُّ شَیْئٍ خائِفٌ مِنْہُ یَا مَنْ کُلُّ شَیْئٍ قائِمٌ بِہِ

ذریعے ہر چیز موجود ہوئی ہے اے وہ جسکی طرف ہر چیز کی بازگشت ہے اے وہ جس سے ہرچیز ڈرتی ہے اے وہ جسکے ذریعے ہر چیز باقی ہے

یَا مَنْ کُلُّ شَیْئٍ صائِرٌ إلَیْہِ یَا مَنْ کُلُّ شَیْئٍ یُسَبِّحُ بِحَمْدِھِ یَا مَنْ کُلُّ شَیْئٍ ہالِکٌ إلاَّ وَجْھَہُ﴿38﴾

اے وہ جسکی طرف ہر چیز لوٹتی ہے اے وہ کہ ہر چیز جسکی حمد میں مصروف ہے اے وہ کہ جسکے جلوے کے سوا ہر چیز ناپید ہو جائے گی۔

یَا مَنْ لاَ مَفَرَّ إلاَّ إلَیْہِ یَا مَنْ لاَ مَفْزَعَ إلاَّ إلَیْہِ یَا مَنْ لاَ مَقْصَدَ إلاَّ إلَیْہِ یَا مَنْ لاَ مَنْجَیً مِنْہُ إلاَّ إلَیْہِ،

اے وہ جسکے سوا کوئی جائے فرار نہیں ہے اے وہ جسکے سوا کوئی جائے پناہ نہیں اے وہ جسکے سوا کوئی منزلِ مقصود نہیںاے وہ جسکے علاوہ کوئی جائے نجات نہیں

یَا مَنْ لاَ یُرْغَبُ إلاَّ إلَیْہِ، یَا مَنْ لاَ حَوْلَ وَلاَ قُوَّۃَ إلاَّ بِہِ، یَا مَنْ لاَ یُسْتَعانُ إلاَّ بِہِ، یَا مَنْ لاَ

اے وہ جسکے بغیر کسی شئی میںرغبت نہیں ہو سکتی اے وہ کہ نہیں ہے طاقت و قوت مگر اسی سے اے وہ جسکے سوا کہیں سے مدد نہیں مل سکتی اے وہ جسکے سوا

یُتَوَکَّلُ إلاَّ عَلَیْہِ یَا مَنْ لاَ یُرْجی إلاَّ ھُوَ یَا مَنْ لاَ یُعْبَدُ إلاَّ ھُوَ ﴿39﴾ یَا خَیْرَ الْمَرْھُوبِینَ

کسی پر بھروسہ نہیں ہو سکتا اے وہ جسکے سوا کسی سے امید نہیں ہوسکتی اے وہ جسکے سوا کسی کی عبادت نہیں ہو سکتی۔ اے بہترین ذات جس سے ڈرا جائے

یَا خَیْرَ الْمَرْغُوبِینَ، یَا خَیْرَ الْمَطْلُوبِینَ، یَا خَیْرَ الْمَسْؤُولِینَ، یَا خَیْرَ الْمَقْصُودِینَ یَا خَیْرَ

اے بہترین لبھانے والے اے بہترین طلب کیے جانے والے اے بہترین سوال کیے جانے والے اے بہترین قصد کیے جانے والے اے بہترین

الْمَذْکُورِینَ یَا خَیْرَ الْمَشْکُورِینَ یَا خَیْرَ الْمَحْبُوبِینَ یَا خَیْرَ الْمَدْعُوِّینَ یَا خَیْرَ الْمُسْتَٲْنِسِینَ﴿40﴾

ذکر کیے جانے والے اے بہترین شکرکیے جانے والے اے بہترین محبت کیے جانے والے اے بہترین پکارے جانے والے اے بہترین مانوس کیے جانے والے۔

اَللّٰھُمَّ إنِّی ٲَسْٲَلُکَ بِاسْمِکَ یَا غافِرُ یَا ساتِرُ یَا قادِرُ یَا قاھِرُ یَا فاطِرُ

اے معبود میں تجھ سے سوال کرتا ہوں تیرے نام سے اے معاف کرنے والے اے چھپانے والے اے قدرت والے اے غلبے والے اے پیدا کرنیوالے

یَا کاسِرُ یَا جابِرُ یَا ذاکِرُ، یَا ناظِرُ، یَا ناصِرُ ﴿41﴾ یَا مَنْ خَلَقَ فَسَوَّی،

اے توڑنے والے اے جوڑنے والے اے ذکر کرنیوالے اے دیکھنے والے اے مدد کرنے والے۔ اے وہ جس نے پیدا کیا پھر درست کیا

یَا مَنْ قَدَّرَ فَھَدی، یَا مَنْ یَکْشِفُ الْبَلْوی ، یَا مَنْ یَسْمَعُ النَّجْوی، یَا مَنْ یُنْقِذُ الْغَرْقی،

اے وہ جس نے تقدیر بنائی پھرہدایت دی اے وہ جو بلائیں دور کرتا ہے اے وہ جو سرگوشیاں سنتا ہے اے وہ جو ڈوبنے والوں کو بچاتا ہے

یَا مَنْ یُنْجِی الْھَلْکی یَا مَنْ یَشْفِی الْمَرْضی یَا مَنْ ٲَضْحَکَ وَٲَبْکی، یَا مَنْ ٲَماتَ وَٲَحْیی

اے وہ جو ہلاکتوں سے نجات دیتا ہے اے وہ جو مریضوں کو شفا دیتا ہے اے وہ جو ہنساتا اور رلاتا ہے اے وہ جو مارتا ہے اور زندہ کرتا ہے

یَا مَنْ خَلَقَ الزَّوْجَیْنِ الذَّکَرَ وَالْاُنْثیٰ ﴿42﴾ یَا مَنْ فِی الْبَرِّ وَالْبَحْرِ سَبِیلُہُ یَا مَنْ فِی

اے وہ جس نے نر اور مادہ جوڑے بنائے اے وہ جس نے خاک و آب میں راستے بنائے اے وہ جس نے فضا میں

الْآفاقِ آیاتُہُ یَا مَنْ فِی الاَْیاتِ بُرْہانُہُ، یَا مَنْ فِی الْمَماتِ قُدْرَتُہُ، یَا مَنْ فِی الْقُبُورِ عِبْرَتُہُ،

اپنی نشانیاں بنائیں اے وہ جسکی نشانیوں میں قوی دلیل ہے اے وہ کہ موت میں جسکی قدرت ظاہرہے اے وہ جس نے قبروں میں عبرت رکھی ہے

یَا مَنْ فِی الْقِیامَۃِ مُلْکُہُ، یَا مَنْ فِی الْحِسابِ ھَیْبَتُہُ، یَا مَنْ فِی الْمِیزانِ قَضاؤُہُ، یَا مَنْ فِی

اے وہ کہ قیامت میں جسکی بادشاہت ہے اے وہ کہ حساب میں جسکی ہیبت ہے اے وہ کہ میزان عمل میں جسکی منصفی ہے اے وہ کہ جس کیطرف سے

الْجَنَّۃِ ثَوابُہُ یَا مَنْ فِی النَّارِ عِقابُہُ ﴿43﴾ یَا مَنْ إلَیْہِ یَھْرَبُ الْخائِفُونَ، یَا مَنْ إلَیْہِ یَفْزَعُ

ثوابِ جنت ہے اے وہ کہ جسکا عذاب دوزخ ہے۔ اے وہ کہ خوف زدہ جسکی طرف بھاگتے ہیں اے وہ کہ گنہگار جسکی

الْمُذْنِبُونَ یَا مَنْ إلَیْہِ یَقْصِدُ الْمُنِیبُونَ یَا مَنْ إلَیْہِ یَرْغَبُ الزَّاھِدُونَ یَا مَنْ إلَیْہِ یَلْجَٲُ الْمُتَحَیِّرُونَ

پناہ لیتے ہیں اے وہ کہ توبہ کرنے والے جسکا قصد کرتے ہیں اے وہ کہ جسکی طرف پرہیز گار رغبت کرتے ہیں اے وہ کہ پریشان لوگ جسکی پناہ چاہتے ہیں

یَا مَنْ بِہِ یَسْتَٲْنِسُ الْمُرِیدُونَ یَا مَنْ بِہِ یَفْتَخِرُ الْمُحِبُّونَ یَا مَنْ فِی عَفْوِہِ یَطْمَعُ الْخاطِئُونَ

اے وہ کہ ارادہ کرنے والے جس سے مانوس ہیں اے وہ کہ جس پر محبت کرنے والے فخر کرتے ہیںاے وہ کہ خطاکار جسکے عفو کی خواہش رکھتے ہیں

یَا مَنْ إلَیْہِ یَسْکُنُ الْمُوقِنُونَ یَا مَنْ عَلَیْہِ یَتَوَکَّلُ الْمُتَوَکِّلُونَ ﴿44﴾ اَللّٰھُمَّ إنِّی ٲَسْٲَلُکَ

اے وہ جسکے ہاں یقین والے سکون پاتے ہیں اے وہ کہ توکل کرنے والے جس پر توکل کرتے ہیں۔ اے معبود میں تجھ سے سوال کرتا ہوں تیرے نام کے

بِاسْمِکَ یَا حَبِیبُ یَا طَبِیبُ یَا قَرِیبُ یَا رَقِیبُ یَا حَسِیبُ یَا مُھِیبُ یَا مُثِیبُ یَا مُجِیبُ

واسطے سے اے محبوب اے چارہ گر اے نزدیک تر اے نگہدار اے حساب رکھنے والے اے ہیبت والے اے ثواب دینے والے اے دعا قبول کرنے والے

یَا خَبِیرُ یَا بَصِیرُ ﴿45﴾ یَا ٲَقْرَبَ مِنْ کُلِّ قَرِیبٍ یَا ٲَحَبَّ مِنْ کُلِّ حَبِیبٍ یَا ٲَبْصَرَ مِنْ

اے با خبر اے بینا۔ اے ہر قریب سے زیادہ قریب اے ہر محب سے زیادہ محبت کرنے والے اے ہر دیکھنے والے

کُلِّ بَصِیرٍ یَا ٲَخْبَرَ مِنْ کُلِّ خَبِیرٍ یَا ٲَشْرَفَ مِنْ کُلِّ شَرِیفٍ یَا ٲَرْفَعَ مِنْ کُلِّ رَفِیعٍ یَا ٲَقْوی

سے زیادہ بینا اے ہر باخبر سے زیادہ خبر والے اے ہر بزرگ سے زیادہ بزرگ اے ہر بلند سے زیادہ بلند اے ہر توانا

مِنْ کُلِّ قَوِیٍّ یَا ٲَغْنی مِنْ کُلِّ غَنِیٍّ یَا ٲَجْوَدَ مِنْ کُلِّ جَوادٍ یَا ٲَرْٲَفَ مِنْ کُلِّ رَؤُوفٍ ﴿46﴾

سے زیادہ توانا اے ہر باثروت سے زیادہ باثروت اے ہر داتا سے زیادہ دینے والے اے ہر مہربان سے زیادہ مہربان۔

یَا غالِباً غَیْرَ مَغْلُوبٍ یَا صانِعاً غَیْرَ مَصْنُوعٍ یَا خالِقاً غَیْرَ مَخْلُوقٍ یَا مالِکاً غَیْرَ مَمْلُوکٍ

اے وہ غالب جس پر کوئی غالب نہیں اے وہ صانع جسے کسی نے نہیں بنایا اے وہ خالق جو خلق نہیں ہوا اے وہ مالک جسکا کوئی مالک نہیں

یَا قاھِراً غَیْرَ مَقْھُورٍ، یَا رافِعاً غَیْرَ مَرْفُوعٍ، یَا حافِظاً غَیْرَ مَحْفُوظٍ، یَا ناصِراً

اے وہ زبردست جو کسی کے زیر نگیں نہیں اے وہ بلند جسے کسی نے بلند نہیں کیا اے وہ نگہبان جسکا کوئی نگہبان نہیں اے وہ مددگار

غَیْرَ مَنْصُورٍ یَا شاھِداً غَیْرَ غائِبٍ یَا قَرِیباً غَیْرَ بَعِیدٍ ﴿47﴾ یَا نُورَ النُّورِ، یَا مُنَوِّرَ النُّورِ،

جسکا کوئی مددگار نہیں اے وہ حاضر جو کہیں بھی غائب نہیں اے وہ قریب جو کبھی دور نہیں ہوا۔ اے نور کی روشنی اے نور روشن کرنے والے

یَا خالِقَ النُّورِ یَا مُدَبِّرَ النُّورِ، یَا مُقَدِّرَ النُّورِ، یَا نُورَ کُلِّ نُورٍ، یَا نُوراً قَبْلَ کُلِّ نُورٍ، یَا نُوراً

اے نور پیدا کرنے والے اے نور کا بندوبست کرنے والے اے نور کی اندازہ گیری کرنے والے اے نور کی روشنی اے ہر نور سے اولین نور

بَعْدَ کُلِّ نُورٍ یَا نُوراً فَوْقَ کُلِّ نُورٍ یَا نُوراً لَیْسَ کَمِثْلِہِ نُورٌ ﴿48﴾ یَا مَنْ عَطَاؤُہُ شَرِیفٌ

اے ہر نور کے بعد روشن رہنے والے اے ہرنور سے بالاتر نور اے وہ نور جسکی مثل کوئی نور نہیں۔ اے وہ جسکی عطا بلند تر ہے

یَا مَنْ فِعْلُہُ لَطِیفٌ یَا مَنْ لُطْفُہُ مُقِیمٌ یَا مَنْ إحْسانُہُ قَدِیمٌ یَا مَنْ قَوْلُہُ حَقٌّ یَا مَنْ وَعْدُہُ صِدْقٌ

اے وہ جسکا فعل باریک تر ہے اے وہ جسکا لطف پائندہ ہے اے وہ جسکا احسان قدیم ہے اے وہ جسکا قول حق ہے اے وہ جسکا وعدہ سچا ہے

یَا مَنْ عَفْوُہُ فَضْلٌ، یَا مَنْ عَذابُہُ عَدْلٌ، یَا مَنْ ذِکْرُہُ حُلْوٌ، یَا مَنْ فَضْلُہُ عَمِیمٌ ۔ ﴿49﴾

اے وہ جسکی عفو میں احسان ہے اے وہ جسکے عذاب میں عدل ہے اے وہ جسکا ذکر شیریں ہے اے وہ جسکا احسان عام ہے۔

اَللّٰھُمَّ إنِّی ٲَسْٲَ لُکَ بِاسْمِکَ یَا مُسَہِّلُ، یَا مُفَصِّلُ، یَا مُبَدِّلُ، یَا

اے معبودمیں تجھ سے سوال کرتا ہوں تیرے نام کے واسطے سے اے ہموار کرنے والے اے جدا کرنے والے اے تبدیل کرنے والے اے

مُذَلِّلُ، یَا مُنَزِّلُ، یَا مُنَوِّلُ، یَا مُفْضِلُ، یَا مُجْزِلُ، یَا مُمْھِلُ، یَا مُجْمِلُ ۔ ﴿50﴾

پست کرنیوالے اے اتارنے والے اے عطا کرنے والے اے نعمت دینے والے اے احسان کرنیوالے اے مہلت دینے والے اے نیکوکار۔

یَا مَنْ یَری وَلاَ یُری، یَا مَنْ یَخْلُقُ وَلاَ یُخْلَقُ، یَا مَنْ یَھْدِی وَلاَ یُھْدی، یَا مَنْ یُحْیِی

اے وہ جو دیکھتا ہے خود نظر نہیں آتا اے وہ جو خلق کرتا ہے اور خلق نہیں ہوا اے وہ جو ہدایت دیتا ہے اور ہدایت طلب نہیں کرتا اے وہ جو زندہ کرتا ہے

وَلاَ یُحْیی، یَا مَنْ یَسْٲَلُ وَلاَ یُسْٲَلُ، یَا مَنْ یُطْعِمُ وَلاَ یُطْعَمُ، یَا مَنْ یُجِیرُ وَلاَ یُجارُ عَلَیْہِ، یَا

اور زندہ نہیں کیا گیا اے وہ جومسئول ہے اور سائل نہیں اے وہ جو کھلاتا ہے اور کھاتا نہیں اے وہ جو پناہ دیتا ہے اور محتاجِ پناہ نہیں ہے

مَنْ یَقْضِی وَلاَ یُقْضی عَلَیْہِ، یَا مَنْ یَحْکُمُ وَلاَ یُحْکَمُ عَلَیْہِ، یَا مَنْ لَمْ یَلِدْ وَلَمْ یُولَدْ

اے وہ جو فیصلے کرتا ہے اور طالبِ فیصلہ نہیں ہے اے وہ جو حکم دیتا ہے اور اس پر کسی کا حکم نہیں اے وہ جسکا کوئی بیٹا نہیں نہ وہ کسی کا بیٹا ہے

وَلَمْ یَکُنْ لَہُ کُفُواً ٲَحَدٌ۔﴿51﴾ یَا نِعْمَ الْحَسِیبُ، یَا نِعْمَ الطَّبِیبُ، یَا نِعْمَ الرَّقِیبُ، یَا نِعْمَ

اور نہ کوئی اسکا ہمسر ہے۔ اے بہترین حساب کرنے والے اے بہترین چارہ گر اے بہترین نگہبان اے بہترین

الْقَرِیبُ یَا نِعْمَ الْمُجِیبُ، یَا نِعْمَ الْحَبِیبُ، یَا نِعْمَ الْکَفِیلُ، یَا نِعْمَ الْوَکِیلُ، یَا نِعْمَ الْمَوْلیٰ،

قریب اے بہترین دعا قبول کرنے والے اے وہ جو بہترین محبوب ہے اے وہ جو بہترین سرپرست ہے اے وہ جو بہترین کارساز ہے اے بہترین آقا

یَا نِعْمَ النَّصِیرُ۔ ﴿52﴾ یَا سُرُورَ الْعارِفِینَ یَا مُنَی الْمُحِبِّینَ یَا ٲَنِیسَ الْمُرِیدِینَ، یَا حَبِیبَ

اے بہترین یاور۔ اے عارفوں کی شادمانی اے حب داروں کی تمنا اے ارادت مندوںکے ہمدم اے توبہ کرنے

التَّوَّابِینَ، یَا رازِقَ الْمُقِلِّینَ، یَا رَجائَ الْمُذْنِبِینَ، یَا قُرَّ ۃَ عَیْنِ الْعابِدِینَ

والوں کے محبوب اے بے مایہ لوگوں کے رازق اے گناہگاروں کی آس اے عبادت کرنے والوں کی آنکھوں کی ڈھنڈک

، یَا مُنَفِّساً عَنِ الْمَکْرُوبِینَ، یَا مُفَرِّجاً عَنِ الْمَغْمُومِینَ، یَا إلہَ الْاَوَّلِینَ

اے دکھیاروں کے دکھ دور کرنے والے اے غمزدوں کا غم مٹانے والے اے اولین

وَالاَْخِرِینَ ۔ ﴿53﴾ اَللّٰھُمَّ إنِّی ٲَسْٲَ لُکَ بِاسْمِکَ یَا رَبَّنا، یَا إلھَنا، یَا

و آخرین کے معبود۔ اے معبود میں تجھ سے سوال کرتا ہوں تیرے ہی نام کے واسطے سے اے ہمارے رب اے ہمارے معبود اے

سَیِّدَنا، یَا مَوْلانا، یَا ناصِرَنا، یَا حافِظَنا، یَا دَلِیلَنا، یَا مُعِینَنا، یَا

ہمارے سردار اے ہمارے آقا اے ہمارے یاور اے ہمارے محافظ اے ہمارے رہنما اے ہمارے مددگار اے

حَبِیبَنا، یَا طَبِیبَنا ۔ ﴿54﴾ یَا رَبَّ النَّبِیِّینَ وَ الْاَبْرارِ، یَا رَبَّ الصِّدِّیقِینَ

ہمارے محبوب اے ہمارے چارہ گر۔ اے انبیائ و صالحین کے پروردگار اے صدیقوں اور

وَالْاَخْیارِ، یَا رَبَّ الْجَنَّۃِ وَالنَّارِ، یَا رَبَّ الصِّغارِ وَالْکِبارِ، یَا رَبَّ

نیک لوگوں کے پروردگار اے جنت و دوزخ کے مالک اے چھوٹے بڑے کے رب اے دانہ و ثمر

الْحُبُوبِ وَالثِّمارِ، یَا رَبَّ الْاَ نْہارِ وَالْاَشْجارِ، یَا رَبَّ الصَّحارِی

کے پروان چڑھانے والے اے دریائوں اور درختوں کے مالک اے صحرائوں اور

وَالْقِفارِ، یَا رَبَّ الْبَرارِی وَالْبِحارِ، یَا رَبَّ اللَّیْلِ وَالنَّہارِ، یَا رَبَّ

بستیوں کے مالک اے صحراؤں اور سمندروں کے مالک اے دن اور رات کے مالک اے کھلی

الْاِعْلانِ وَالْاِسْرارِ ۔ ﴿55﴾ یَا مَنْ نَفَذَ فِی کُلِّ شَیْئٍ ٲَمْرُھُ، یَا مَنْ لَحِقَ

اور چھپی باتوں کے مالک۔ اے وہ جسکا حکم ہر چیز پر نافذ ہے اے وہ جسکا علم

بِکُلِّ شَیْئٍ عِلْمُہُ، یَا مَنْ بَلَغَتْ إلی کُلِّ شَیْئٍ قُدْرَتُہُ، یَا مَنْ

ہر چیز پر حاوی ہے اے وہ جسکی قدرت ہر چیز تک پہنچی ہوئی ہے اے وہ جسکی

لاَیُحْصِی الْعِبادُ نِعَمَہُ، یَا مَنْ لاَ تَبْلُغُ الْخَلائِقُ شُکْرَہُ، یَا مَنْ لاَتُدْرِکُ

نعمتوں کوبندے گن نہیں سکتے اے وہ کہ مخلوقات جسکاشکریہ ادا نہیں کر سکتیں اے وہ کہ جسکی جلالت سمجھ میں نہیں

الْاَفْہامُ جَلالَہُ، یَا مَنْ لاَ تَنالُ الْاَوْہامُ کُنْھَہُ، یَا مَنِ الْعَظَمَۃُ

آسکتی اے وہ کہ جسکی حقیقت کو وہم پا نہیں سکتے اے وہ کہ بزرگی اور بڑائی

وَالْکِبْرِیَائُ رِداؤُہُ، یَا مَنْ لاَ یَرُدُّ الْعِبادُ قَضائَہُ، یَا مَنْ لاَ مُلْکَ إلاَّ

جسکا لباس ہے اے وہ جسکی قضا کو بندے ٹال نہیں سکتے اے وہ جسکے سوا کسی کی

مُلْکُہُ، یَا مَنْ لاَ عَطائَ إلاَّ عَطاؤُہُ ۔ ﴿56﴾ یَا مَنْ لَہُ الْمَثَلُ الْاَعْلی، یَا

حکومت نہیں اے وہ جسکی عطا کے سوا کوئی عطا نہیں۔ اے وہ جسکے لئے اعلٰی نمونہ ہے اے

مَنْ لَہُ الصِّفاتُ الْعُلْیا، یَا مَنْ لَہُ الاَْخِرۃُ وَالاَُْولی، یَا مَنْ لَہُ جَنَّۃُ

وہ جسکے لیے بلند صفات ہیں اے وہ دنیا و آخرت جسکی ملکیت ہیں اے وہ جو جنت الماویٰ کا

الْمَٲْوی، یَا مَنْ لَہُ الاَْیاتُ الْکُبْری، یَا مَنْ لَہُ الْاَسْمائُ الْحُسْنی، یَا

مالک ہے اے وہ جسکی نشانیاں عظیم ہیں اے وہ جسکے نام پسندیدہ ہیں اے

مَنْ لَہُ الْحُکْمُ وَالْقَضائُ، یَا مَنْ لَہُ الْھَوائُ وَالْفَضائُ، یَا مَنْ لَہُ الْعَرْشُ

وہ جو حکم و فیصلے کا مالک ہے اے وہ کہ ہوا و فضا جسکی ملک ہیں اے وہ جو عرش و

وَالثَّری، یَا مَنْ لَہُ السَّمَاوَاتُ الْعُلی ۔ ﴿57﴾ اَللّٰھُمَّ إنِّی ٲَسْٲَ لُکَ

فرش کا مالک ہے اے وہ جو بلند آسمانوں کا مالک ہے۔ اے معبود میں تجھ سے سوال کرتا ہوں

بِاسْمِکَ یَا عَفُوُّ، یَا غَفُورُ، یَا صَبُورُ، یَا شَکُورُ، یَا رَؤُوفُ، یَا

تیرے نام کے واسطے سے اے معافی دینے والے اے بخشنے والے اے بہت صبر والے اے بہت شکر والے اے مہربان اے

عَطُوفُ، یَا مَسْؤُولُ، یَا وَدُودُ، یَا سُبُّوحُ، یَا قُدُّوسُ ۔ ﴿58﴾ یَا مَنْ فِی

نرم خو اے مسئول اے محبت والے اے پاک تر اے پاکیزہ۔ اے وہ کہ آسمان

السَّمائِ عَظَمَتُہُ، یَا مَنْ فِی الْاَرْضِ آیاتُہُ، یَا مَنْ فِی کُلِّ شَیْئٍ

میں جسکی بڑائی ہے اے وہ کہ زمین میں جسکی نشانیاں ہیں اے وہ ہر چیز میں جس

دَلائِلُہُ، یَا مَنْ فِی الْبِحارِ عَجائِبُہُ، یَا مَنْ فِی الْجِبالِ خَزائِنُہُ، یَا مَنْ

کی دلیلیں ہیں اے وہ کہ سمندروں میں جسکی انوکھی چیزیں ہیں اے وہ پہاڑوں میں جسکے خزانے ہیں اے وہ جس نے

یَبْدَٲُ الْخَلْقَ ثُمَّ یُعِیدُہُ، یَا مَنْ إلَیْہِ یَرْجِعُ الْاَمْرُ کُلُّہُ، یَا مَنْ ٲَظْھَرَ فِی

خلق کو ظاہر کیا پھر جاری رکھا اے وہ جسکی طرف ہر امر کی بازگشت ہے اے وہ جسکا لطف

کُلِّ شَیْئٍ لُطْفَہُ، یَا مَنْ ٲَحْسَنَ کُلَّ شَیْئٍ خَلْقَہُ، یَا مَنْ تَصَرَّفُ فِی

ہر چیز میں عیاں ہے اے وہ جس نے ہرچیز کو خوبی سے خلق کیا اے وہ جسکی قدرت مخلوقات میں

الْخَلائِقِ قُدْرَتُہُ ۔ ﴿59﴾ یَا حَبِیبَ مَنْ لاَ حَبِیبَ لَہُ، یَا طَبِیبَ مَنْ لاَ

اثراندازی کر رہی ہے۔ اے اسکے ساتھی جسکا کوئی ساتھی نہیں اے اسکے چارہ گر جسکا کوئی

طَبِیبَ لَہُ، یَا مُجِیبَ مَنْ لاَ مُجِیبَ لَہُ، یَا شَفِیقَ مَنْ لاَ شَفِیقَ لَہُ، یَا

چارہ گر نہیں اے اسکی دعا قبول کرنے والے جسکی کوئی قبول کرنے والا نہیں اے اسکے مہربان جس پرکوئی مہربان نہیں اے

رَفِیقَ مَنْ لاَ رَفِیقَ لَہُ، یَا مُغِیثَ مَنْ لاَ مُغِیثَ لَہُ، یَا دَلِیلَ مَنْ لاَ دَلِیلَ

اسکے ہمراہی جس کا کوئی ہمراہی نہیں اے اسکے فریاد رس جسکا کوئی فریاد رس نہیں اے اسکے رہنما جسکا کوئی رہنمانہیں

لَہُ، یَا ٲَنِیسَ مَنْ لاَ ٲَنِیسَ لَہُ، یَا راحِمَ مَنْ لاَ راحِمَ لَہُ، یَا صاحِبَ مَنْ

اے اسکے ہمدم جسکا کوئی ہمدم نہیں اے اس پر رحم کرنے والے جس پر رحم کرنے والا کوئی نہیں اے اسکے ساتھی جسکا

لاَ صاحِبَ لَہُ ۔ ﴿60﴾ یَا کافِیَ مَنِ اسْتَکْفاہُ، یَا ہادِیَ مَنِ اسْتَھْداہُ، یَا

کوئی ساتھی نہیں۔ اے طالبِ کفایت کی کفایت کرنے والے اے ہدایت طلب کی ہدایت کرنے والے اے

کالِیََ مَنِ اسْتَکْلاہُ، یَا راعِیَ مَنِ اسْتَرْعاہُ، یَا شافِیَ مَنِ اسْتَشْفاہُ،

نگہبانی چاہنے والے کے نگہبان اے حفاظت چاہنے والے کی حفاظت کرنے والے اے شفا مانگنے والے کو شفادینے والے

یَا قاضِیَ مَنِ اسْتَقْضاہُ، یَا مُغْنِیَ مَنِ اسْتَغْناہُ، یَا مُوفِیَ مَنِ اسْتَوْفاہُ

اے فیصلہ چاہنے والے کا فیصلہ کرنے والے اے ثروت خواہ کو ثروت دینے والے اے وفا طلب سے وفا کرنے والے اے قوت

، یَا مُقَوِّیَ مَنِ اسْتَقْواہُ، یَا وَ لِیَّ مَنِ اسْتَوْلاہُ ۔ ﴿61﴾ اَللّٰھُمَّ إنِّی

کے طالب کو قوت عطا کرنے والے اے طالب سرپرستی کی سرپرستی کرنے والے۔ اے معبود میں تجھ سے سوال کرتا ہوں تیرے ہی

ٲَسْٲَلُکَ بِاسْمِکَ یَا خالِقُ، یَا رازِقُ، یَا ناطِقُ، یَا صادِقُ، یَا فالِقُ، یَا

نام کے واسطے سے اے خلق کرنے والے اے رزق دینے والے اے بولنے والے اے صدق والے اے شگافتہ کرنے والے اے

فارِقُ، یَا فاتِقُ، یَا راتِقُ، یَا سابِقُ، یَا سامِقُ ۔ ﴿62﴾ یَا مَنْ یُقَلِّبُ

جداکرنے والے اے توڑنے والے اے جوڑنے والے اے سب سے پہلے اے بلندی والے ۔ اے رات اور دن کو پلٹانے

اللَّیْلَ وَالنَّہارَ، یَا مَنْ جَعَلَ الظُّلُمَاتِ وَالْاَ نْوارَ، یَا مَنْ خَلَقَ الظِّلَّ

والے اے روشنیوں اور تاریکیوں کے پیدا کرنے والے اے وہ جس نے سایہ

وَالْحَرُورَ، یَا مَنْ سَخَّرَ الشَّمْسَ وَالْقَمَرَ، یَا مَنْ قَدَّرَ الْخَیْرَ وَالشَّرَّ، یَا

اور دھوپ کو پیدا کیا اے وہ جس نے سورج اور چاند کو پابند کیا اے وہ جس نے نیکی و بدی کا اندازہ ٹھہرایا اے

مَنْ خَلَقَ الْمَوْتَ وَالْحَیاۃَ، یَا مَنْ لَہُ الْخَلْقُ وَالْاَمْرُ، یَا مَنْ لَمْ یَتَّخِذْ

وہ جس نے موت اور زندگی کو پیدا کیا اے وہ جسکے ہاتھ میں خلق و امر ہے اے وہ جسکی نہ کوئی

صاحِبَۃً وَلاَ وَلَداً، یَا مَنْ لَیْسَ لَہُ شَرِیکٌ فِی الْمُلْکِ، یَا مَنْ لَمْ یَکُنْ

زوجہ اور نہ فرزند ہے اے وہ جسکی حکومت میں کوئی شریک نہیںاے وہ جوعاجز نہیں کہ اسکا

لَہُ وَ لِیٌّ مِنَ الذُّلِّ ۔ ﴿63﴾ یَا مَنْ یَعْلَمُ مُرادَ الْمُرِیدِینَ، یَا مَنْ یَعْلَمُ

کوئی مددگار ہو۔ اے وہ جو ارادہ کرنے والوں کی مراد کو جانتا ہے اے وہ جو خاموش

ضَمِیرَ الصَّامِتِینَ، یَا مَنْ یَسْمَعُ ٲَنِینَ الْواھِنِینَ، یَا مَنْ یَری بُکائَ

لوگوں کے دل کی باتیں جانتا ہے اے وہ جوکمزوروں کی زاری کو سنتا ہے اے وہ جو ڈرنے والے لوگوں

الْخائِفِینَ، یَا مَنْ یَمْلِکُ حَوائِجَ السَّائِلِینَ، یَا مَنْ یَقْبَلُ عُذْرَ

کا رونا دیکھ لیتا ہے اے وہ جو سائلین کی حاجتوں کا مالک ہے اے وہ جو توبہ کرنے والوں کا عذر

التَّائِبِینَ، یَا مَنْ لاَ یُصْلِحُ عَمَلَ الْمُفْسِدِینَ، یَا مَنْ لاَ یُضِیعُ ٲَجْرَ

قبول کرتا ہے اے وہ جو فسادیوں کے عمل کو اچھا نہیں سمجھتا اے وہ جو نیکوکاروں کے اجر کو

الْمُحْسِنِینَ، یَا مَنْ لاَ یَبْعُدُ عَنْ قُلُوبِ الْعارِفِینَ، یَا ٲَجْوَدَ الْاَجْوَدِینَ ۔ ﴿64﴾

ضائع نہیں کرتا اے وہ جو عارفوں کے دلوں سے دور نہیں رہتا اے سب داتائوں سے بڑے داتا

یَا دائِمَ الْبَقائِ، یَا سامِعَ الدُّعائِ، یَا واسِعَ الْعَطائِ، یَا غافِرَ

اے ہمیشہ باقی رہنے والے اے دعا کے سننے والے اے بہت زیادہ عطا کرنے والے اے خطا کے

الْخَطائِ، یَا بَدِیعَ السَّمائِ، یَا حَسَنَ الْبَلائِ، یَا جَمِیلَ الثَّنائِ، یَا قَدِیمَ

بخشنے والے اے آسمان کے بنانے والے اے بہترین آزمائش کرنے والے اے بھلی تعریف والے اے قدیمی

السَّنائِ، یَا کَثِیرَ الْوَفائِ، یَا شَرِیفَ الْجَزائِ ۔ ﴿65﴾ اَللّٰھُمَّ إنِّی ٲَسْٲَ لُکَ

بلندی والے اے بہت وفاداری کرنے والے اے بہترین جزادینے والے اے معبود میں تجھ سے سوال کرتا ہوں

بِاسْمِکَ یَا سَتَّارُ، یَا غَفَّارُ، یَا قَہَّارُ، یَا جَبَّارُ، یَا صَبَّارُ، یَا بارُّ، یَا

تیرے نام کے واسطے سے اے پردہ پوش اے بخشنے والے غلبہ والے اے زور والے اے بہت صبروالے اے نیکی والے اے

مُخْتارُ، یَا فَتَّاحُ، یَا نَفَّاحُ، یَا مُرْتاحُ ۔ ﴿66﴾ یَا مَنْ خَلَقَنِی وَسَوَّانِی، یَا

اختیار والے اے کھولنے والے اے نفع دینے والے اے شاداں۔ اے وہ جس نے مجھے پیدا کیا اور سنوارا اے

مَنْ رَزَقَنِی وَرَبَّانِی، یَا مَنْ ٲَطْعَمَنِی وَسَقانِی، یَا مَنْ قَرَّبَنِی وَٲَدْنانِی

وہ جس نے مجھے رزق دیا اور پالااے وہ جس نے مجھے طعام دیا اور سیراب کیا اے وہ جس نے مجھے قریب کیا اور قربت عطا کی

، یَا مَنْ عَصَمَنِی وَکَفانِی، یَا مَنْ حَفِظَنِی وَکَلانِی، یَا مَنْ ٲَعَزَّنِی

اے وہ جس نے میری نگہداشت کی اور کفالت کی اے وہ جس نے میری حفاظت کی اور حمایت کی اے وہ جس نے مجھے عزت دی

وَٲَغْنانِی، یَا مَنْ وَفَّقَنِی وَھَدانِی، یَا مَنْ آنَسَنِی وَآوانِی، یَا مَنْ

اور دولتمند بنایا اے وہ جس نے میری مدد کی اور ہدایت عطا کی اے وہ جس نے مجھ سے انس کیا اور پناہ دی اے وہ جس نے

ٲَماتَنِی وَٲَحْیانِی ۔ ﴿67﴾ یَا مَنْ یُحِقُّ الْحَقَّ بِکَلِماتِہِ، یَا مَنْ یَقْبَلُ

مجھے موت دی اور زندہ کیا۔ اے وہ جو اپنے کلام سے حق کو ثابت کرتا ہے اے وہ جو اپنے بندوں کی

التَّوْبَۃَ عَنْ عِبادِہِ، یَا مَنْ یَحُولُ بَیْنَ الْمَرْئِ وَقَلْبِہِ، یَا مَنْ لاَ تَنْفَعُ

توبہ قبول فرماتا ہے اے وہ جو انسان اور اسکے دل کے درمیان حائل ہوتاہے اے وہ جسکے اذن کے بغیر

الشَّفاعَۃُ إلاَّ بِ إذْنِہِ، یَا مَنْ ہُوَ ٲَعْلَمُ بِمَنْ ضَلَّ عَنْ سَبِیلِہِ، یَا مَنْ لاَ

شفاعت کچھ نفع نہیں پہنچاتی اے وہ جو راہ سے بھٹکے ہوئے لوگوں کو خوب جانتا ہے اے وہ جسکے

مُعَقِّبَ لِحُکْمِہِ، یَا مَنْ لاَ رَادَّ لِقَضائِہِ، یَا مَنِ انْقادَ کُلُّ شَیْئٍ لاََِمْرِہِ

حکم کو کوئی ہرگز نہیں ٹال سکتا اے وہ جسکے فیصلے کو کوئی پلٹا نہیں سکتا اے وہ جسکے امرکے آگے ہر چیز جھکی ہوئی ہے

یَا مَنِ السَّمَاوَاتُ مَطْوِیَّاتٌ بِیَمِینِہِ، یَا مَنْ یُرْسِلُ الرِّیاحَ بُشْراً بَیْنَ

اے وہ جسکی قدرت سے آسمان باہم لپٹے ہوئے ہیں اے وہ جو اپنی رحمت سے ہوائوں کی خوشخبری دے کر

یَدَیْ رَحْمَتِہِ ۔ ﴿68﴾ یَا مَنْ جَعَلَ الْاَرْضَ مِہاداً، یَا مَنْ جَعَلَ الْجِبالَ

بھیجتاہے۔ اے وہ جس نے زمین کوفرش بنایا اے وہ جس نے پہاڑوں کو میخیں بنایا

ٲَوْتاداً، یَا مَنْ جَعَلَ الشَّمْسَ سِراجاً، یَا مَنْ جَعَلَ الْقَمَرَ نُوراً، یَا مَنْ

اے وہ جس نے سورج کو چراغ بنایا اے وہ جس نے چاند کو روشن کیا اے وہ جس نے

جَعَلَ اللَّیْلَ لِباساً، یَا مَنْ جَعَلَ النَّہارَ مَعَاشاً، یَا مَنْ جَعَلَ النَّوْمَ سُباتاً

رات کو پردہ پوشی کے لیے بنایا اے وہ جس نے دن کو کام کاج کا وقت ٹھہرایا اے وہ جس نے نیند کو ذریعہ راحت بنایا

یَا مَنْ جَعَلَ السَّمَائَ بِنائً، یَا مَنْ جَعَلَ الْأَشْیائَ ٲَزْواجاً، یَا مَنْ جَعَلَ

اے وہ جس نے آسمان کا شامیانہ لگایا اے وہ جس نے چیزوں میں جوڑے مقرر کیے اے وہ جس نے آتش دوزخ کو

النَّارَ مِرْصاداً ۔ ﴿69﴾ اَللّٰھُمَّ إنِّی ٲَسْٲَلُکَ بِاسْمِکَ یَا سَمِیعُ، یَا شَفِیعُ،

کمین گاہ بنایا۔ اے معبود میں تجھ سے سوال کرتا ہوں تیرے نام کے واسطے سے اے سننے والے اے شفاعت والے

یَا رَفِیعُ، یَا مَنِیعُ، یَا سَرِیعُ، یَا بَدِیعُ، یَا کَبِیرُ، یَا قَدِیرُ، یَا خَبِیرُ، یَا

اے بلندی والے اے محفوظ اے جلدی کرنے والے اے ابتداکرنے والے اے بڑائی والے اے قدرت والے اے خبر والے

مُجِیرُ۔ ﴿70﴾ یَا حَیّاً قَبْلَ کُلِّ حَیٍّ، یَا حَیّاً بَعْدَ کُلِّ حَیٍّ، یَا حَیُّ الَّذِی

اے پناہ دینے والے۔ اے ہرزندہ سے پہلے زندہ ہو اے ہرزندہ کے بعد زندہ اے وہ زندہ جسکی

لَیْسَ کَمِثْلِہِ حَیٌّ، یَا حَیُّ الَّذِی لاَ یُشارِکُہُ حَیٌّ، یَا حَیُّ الَّذِی لاَ

مثل کوئی اور زندہ نہیں اے وہ زندہ جسکا کوئی زندہ شریک نہیں اے وہ زندہ جو کسی زندہ کا

یَحْتاجُ إلی حَیٍّ، یَا حَیُّ الَّذِی یُمِیتُ کُلَّ حَیٍّ، یَا حَیُّ الَّذِی یَرْزُقُ

محتاج نہیں اے وہ زندہ جو سب زندوں کو موت دیتا ہے اے وہ زندہ جو سب زندوں کو رزق

کُلَّ حَیٍّ، یَا حَیّاً لَمْ یَرِثِ الْحَیا ۃَ مِنْ حَیٍّ، یَا حَیُّ الَّذِی یُحْیِی الْمَوْتیٰ

دیتا ہے اے وہ زندہ جس نے کسی زندہ سے زندگی نہیں پائی اے وہ زندہ جو زندوں کو موت دیتا ہے

یَا حَیُّ یَا قَیُّومُ لاَ تَٲْخُذُہُ سِنَۃٌ وَلاَ نَوْمٌ ۔ ﴿71﴾ یَا مَنْ لَہُ ذِکْرٌ لاَ یُنْسی

اے وہ نگہبان جسے نہ نیند آتی ہے نہ اونگھ۔ اے وہ جسکا ذکر بھلایا نہیں جا سکتا

یَا مَنْ لَہُ نُورٌ لاَ یُطْفیٰ، یَا مَنْ لَہُ نِعَمٌ لاَ تُعَدُّ، یَا مَنْ لَہُ مُلْکٌ لاَ

اے وہ جسکے نور کو بجھایا نہیں جا سکتا اے وہ جسکی نعمتوں کوشمار نہیں کیا جا سکتا اے وہ جسکی بادشاہی

یَزُولُ، یَا مَنْ لَہُ ثَنَائٌ لاَ یُحْصیٰ، یَا مَنْ لَہُ جَلالٌ لاَ یُکَیَّفُ، یَا مَنْ لَہُ

ختم ہونے والی نہیں اے وہ جسکی تعریف کی کوئی حد نہیں اے وہ جسکے جلال کی کیفیت بے بیان ہے اے وہ جسکے

کَمالٌ لاَ یُدْرَکُ، یَا مَنْ لَہُ قَضائٌ لاَ یُرَدُّ، یَا مَنْ لَہُ صِفَاتٌ لاَ تُبَدَّلُ، یَا

کمال کو سمجھا نہیں جا سکتا اے وہ جسکا فیصلہ ٹالا نہیں جا سکتا اے وہ جسکی صفات میں تبدیلی نہیں آسکتی اے

مَنْ لَہُ نُعُوتٌ لاَ تُغَیَّرُ ۔ ﴿72﴾ یَا رَبَّ الْعالَمِینَ، یَا مالِکَ یَوْمِ الدِّینِ، یَا

وہ جسکے وصفوں میں تبدیلی نہیں۔ اے عالمین کے پروردگار اے روز جزا کے مالک اے

غایَۃَ الطَّالِبِینَ، یَا ظَھْرَ اللاَّجِینَ، یَا مُدْرِکَ الْہارِبِینَ، یَا مَنْ یُحِبُّ

طالبوں کے مقصود اے پناہ لینے والوں کی پناہ گاہ اے بھاگنے والوں کو پالینے والے اے وہ جو صبر والوں کو

الصَّابِرِینَ، یَا مَنْ یُحِبُّ التَّوَّابِینَ، یَا مَنْ یُحِبُّ الْمُتَطَہِّرِینَ، یَا مَنْ

دوست رکھتا ہے اے وہ جو توبہ کرنے والوں سے محبت کرتا ہے اے وہ جو پاکیزگی والوں کو پسندکرتا ہے اے وہ جو

یُحِبُّ الُْمحْسِنِینَ، یَا مَنْ ھُوَ ٲَعْلَمُ بِالْمُھْتَدِینَ ۔ ﴿73﴾ اَللّٰھُمَّ إنِّی

نیکوکاروں کو پسند کرتا ہے اے وہ جو ہدایت یافتہ لوگوں کو جانتا ہے۔ اے معبود میں تجھ سے

ٲَسْٲَلُکَ بِأِسْمِکَ یَا شَفِیقُ، یَا رَفِیقُ، یَا حَفِیظُ، یَا مُحِیطُ، یَا مُقِیتُ، یَا

سوال کرتا ہوں تیرے نام کے واسطے سے اے مہربان اے ہمدم اے نگہدار اے احاطہ کرنے والے اے رزق دینے والے اے

مُغِیثُ، یَا مُعِزُّ، یَا مُذِلُّ، یَا مُبْدِیُٔ، یَا مُعِیدُ ۔ ﴿74﴾ یَا مَنْ ھُوَ ٲَحَدٌ بِلا

فریاد رس اے عز ت دینے والے اے ذلت دینے والے اے پیدا کرنے والے اے لوٹانے والے ۔ اے وہ جو ایسا یگانہ ہے جس کا

ضِدٍّ، یَا مَنْ ھُوَ فَرْدٌ بِلا نِدٍّ، یَا مَنْ ھُوَ صَمَدٌ بِلا عَیْبٍ، یَا مَنْ ھُوَ وِتْرٌ

کوئی مقابل نہیں اے وہ جو ایسا یکتا ہے جسکا شریک نہیں اے وہ جو بے نیاز ہے جس میں کوئی عیب نہیں اے وہ جوایسا فرد ہے

بِلا کَیْفٍ، یَا مَنْ ھُوَ قاضٍ بِلا حَیْفٍ، یَا مَنْ ھُوَ رَبٌّ بِلا وَزِیرٍ، یَا مَنْ

جس میں کوئی کیفیت نہیں اے وہ جسکا فیصلہ خلاف حق نہیں ہوتا اے وہ رب جسکا کوئی وزیرنہیں ہے اے وہ

ھُوَ عَزِیزٌ بِلا ذُلٍّ، یَا مَنْ ھُوَ غَنِیٌّ بِلا فَقْرٍ، یَا مَنْ ھُوَ مَلِکٌ بِلا عَزْلٍ، یَا

عزت دار جسے ذلت نہیں اے وہ ثروت مند جو محتاج نہیں اے وہ بادشاہ جسے ہٹایا نہیں جا سکتا اے

مَنْ ھُوَ مَوْصُوفٌ بِلا شَبِیہٍ ۔ ﴿75﴾ یَا مَنْ ذِکْرُھُ شَرَفٌ لِلذَّاکِرِینَ، یَا

ایسے صفتوں والے جسکی کوئی مثال نہیں۔ اے وہ جسکا ذکر ذاکروں کے لیے وجہ بزرگی ہے اے

مَنْ شُکْرُہُ فَوْزٌ لِلشَّاکِرِینَ، یَا مَنْ حَمْدُہُ عِزٌّ لِلْحامِدِینَ، یَا مَنْ

وہ جسکاشکر شاکروں کے لیے کامیابی ہے اے وہ جسکی حمد، حمدکرنے والوں کے لیے وجہ عزت ہے اے وہ جسکی

طَاعَتُہُ نَجاۃٌ لِلْمُطِیعِینَ، یَا مَنْ بابُہُ مَفْتُوحٌ لِلطَّالِبِینَ، یَا مَنْ سَبِیلُہُ

فرمانبرداری فرمانبرداروں کے لیے وجہ نجات ہے اے وہ جسکا دروازہ طلبگاروں کے لیے کھلا رہتا ہے اے وہ جسکا راستہ

واضِحٌ لِلْمُنِیبِینَ، یَا مَنْ آیاتُہُ بُرْہانٌ لِلنَّاظِرِینَ، یَا مَنْ کِتابُہُ تَذْکِرَۃٌ

توبہ کرنے والوں کیلئے ظاہر و واضح ہے اے وہ جسکی نشانیاں دیکھنے والوں کیلئے پختہ دلیل ہیں اے وہ جسکی کتاب پرہیزگاروں

لِلْمُتَّقِینَ، یَا مَنْ رِزْقُہُ عُمُومٌ لِلطَّائِعِینَ وَالْعاصِینَ، یَا مَنْ رَحْمَتُہُ

کے لیے نصیحت ہے اے وہ جسکا رزق فرمانبرداروں اور نافرمانوں کے لیے یکساں ہے اے وہ جسکی رحمت

قَرِیبٌ مِنَ الُْمحْسِنِینَ ۔ ﴿76﴾ یَا مَنْ تَبارَکَ اسْمُہُ، یَا مَنْ تَعالی جَدُّہُ،

نیکوکاروں کے نزدیک تر ہے۔ اے وہ جسکا نام برکت والا ہے اے وہ جسکی شان بلند ہے

یَا مَنْ لاَ إلہَ غَیْرُہُ، یَا مَنْ جَلَّ ثَناؤُہُ، یَا مَنْ تَقَدَّسَتْ ٲَسْماؤُہُ، یَا مَنْ

اے وہ جسکے سوا کوئی معبود نہیں اے وہ جسکی تعریف روشن ہے اے وہ جسکے نام پاک وپاکیزہ ہیں اے وہ جسکی

یَدُومُ بَقاؤُہُ، یَا مَنِ الْعَظَمَۃُ بَہاؤُہُ، یَا مَنِ الْکِبْرِیائُ رِداؤُہُ، یَا مَنْ لاَ

ذات ہمیشہ رہنے والی ہے اے وہ کہ بزرگی جسکا جلوہ ہے اے وہ کہ بڑای جسکا لباس ہے اے وہ جسکی

تُحْصی آلاؤُہُ، یَا مَنْ لاَ تُعَدُّ نَعْماؤُہُ ۔ ﴿77﴾ اَللّٰھُمَّ إنِّی ٲَسْٲَ لُکَ

نعمتوں کی حد نہیں اے وہ جسکی نعمتوں کا شمار نہیں۔ اے معبود میں تجھ سے سوال کرتا ہوں

بِاسْمِکَ یَا مُعِینُ، یَا ٲَمِینُ، یَا مُبِینُ، یَا مَتِینُ، یَا مَکِینُ، یَا رَشِیدُ، یَا

تیرے نام کے واسطے سے اے مددگار اے امانتدار اے آشکار اے سنجیدہ اے قدرت والے اے ہدایت والے اے

حَمِیدُ، یَا مَجِیدُ، یَا شَدِیدُ، یَا شَھِیدُ ۔ ﴿78﴾ یَا ذَا الْعَرْشِ الَْمجِیدِ، یَا ذَا

تعریف والے اے بزرگی والے اے محکم اے گواہ۔ اے عرش عظیم کے مالک اے سچے قول

الْقَوْلِ السَّدِیدِ، یَا ذَا الْفِعْلِ الرَّشِیدِ، یَا ذَا الْبَطْشِ الشَّدِیدِ، یَا ذَا

والے اے پختہ تر کام کرنے والے اے سخت گرفت کرنے والے اے وعدہ کرنے

الْوَعْدِ وَالْوَعِیدِ، یَا مَنْ ھُوَ الْوَ لِیُّ الْحَمِیدُ، یَا مَنْ ھُوَ فَعَّالٌ لِما یُرِیدُ،

اور دھمکی دینے والے اے وہ جو قابل تعریف سرپرست ہے اے وہ جو چاہے کر گزرتا ہے

یَا مَنْ ھُوَ قَرِیبٌ غَیْرُ بَعِیدٍ، یَا مَنْ ھُوَ عَلی کُلِّ شَیْئٍ شَھِیدٌ، یَا مَنْ ھُوَ

اے وہ جو ایسا قریب ہے کہ دور نہیں ہوتا اے وہ جو ہر چیز کا دیکھنے والا ہے اے وہ جو

لَیْسَ بِظَلاَّمٍ لِلْعَبِیدِ ۔ ﴿79﴾ یَا مَنْ لاَ شَرِیکَ لَہُ وَلاَ وَزِیرَ، یَا مَنْ لاَ

بندوں پر ہرگز ظلم نہیں کرتا۔ اے وہ جسکا نہ کوئی شریک ہے نہ وزیر اے وہ جسکی نہ

شَبِیہَ لَہُ وَلاَ نَظِیرَ، یَا خالِقَ الشَّمْسِ وَالْقَمَرِ الْمُنِیرِ، یَا مُغْنِیَ الْبائِسِ

کوئی مثل ہے نہ ثانی اے سورج اور روشن چاند کے خالق اے نادار و بے نوا کو ثروت

الْفَقِیرِ، یَا رازِقَ الطِّفْلِ الصَّغِیرِ، یَا راحِمَ الشَّیْخِ الْکَبِیرِ، یَا جابِرَ

دینے والے اے ننھے بچے کو رزق دینے والے اے بڑے بوڑھے پر رحم کرنے والے اے ٹوٹی ہوئی

الْعَظْمِ الْکَسِیرِ، یَا عِصْمَۃَ الْخائِفِ الْمُسْتَجِیرِ، یَا مَنْ ھُوَ بِعِبادِھِ خَبِیرٌ

ہڈیوں کو جوڑنے والے اے خوفزدہ کو پناہ دینے والے اے وہ جو خود اپنے بندوں کو جانتا اور

بَصِیرٌ، یَا مَنْ ھُوَ عَلی کُلِّ شَیْئٍ قَدِیرٌ ۔ ﴿80﴾ یَا ذَا الْجُودِ وَالنِّعَمِ ، یَا

دیکھتا ہے اے وہ جو ہرچیز پر قدرت رکھتا ہے۔ اے نعمتوں والے سخی اے

ذَا الْفَضْلِ وَالْکَرَمِ، یَا خالِقَ اللَّوْحِ وَالْقَلَمِ، یَا بارِیَٔ الذَّرِّ وَالنَّسَمِ ، یَا

فضل و کرم کرنے والے اے لوح و قلم کے پیدا کرنے والے اے انسانوں اور حشرات کے خلق کرنے والے اے

ذَا الْبَٲْسِ وَالنِّقَمِ، یَا مُلْھِمَ الْعَرَبِ وَالْعَجَمِ، یَا کَاشِفَ الضُّرِّ وَالْاَلَمِ، یَا

سخت گیر اور بدلہ لینے والے اے عرب و عجم کو الہام کرنے والے اے درد و غم کو دور کرنے والے اے

عَالِمَ السِّرِّ وَالْھِمَمِ، یَا رَبَّ الْبَیْتِ وَالْحَرَمِ، یَا مَنْ خَلَقَ الْاَشْیائَ مِنَ

راز و نیت کے جاننے والے اے کعبہ و حرم کے پروردگار اے وہ جس نے چیزوں کو عدم سے پیدا کیا۔

الْعَدَمِ ۔ ﴿81﴾ اَللّٰھُمَّ إنِّی ٲَسْٲَ لُکَ بِاسْمِکَ یَا فاعِلُ، یَا جاعِلُ، یَا قابِلُ،

اے معبود میں تجھ سے سوال کرتا ہوں تیرے نام کے واسطے سے اے کام کرنے والے اے بنانے والے اے قبول کرنے والے

یَا کامِلُ، یَا فاصِلُ، یَا واصِلُ، یَا عادِلُ، یَا غالِبُ، یَا طالِبُ، یَا

اے کامل اے جداکرنے والے اے ملانے والے اے عدل کرنے والے اے غلبہ والے اے طلب کرنے والے اے

واھِبُ ۔ ﴿82﴾ یَا مَنْ ٲَ نْعَمَ بِطَوْ لِہِ، یَا مَنْ ٲَکْرَمَ بِجُودِہِ، یَا مَنْ جادَ

عطا کرنے والے اے وہ جس نے اپنے فضل سے نعمت بخشی اے وہ جو سخاوت میں بلند ہے اے وہ جس نے مہربانی

بِلُطْفِہِ، یَا مَنْ تَعَزَّزَ بِقُدْرَتِہِ، یَا مَنْ قَدَّرَ بِحِکْمَتِہِ، یَا مَنْ حَکَمَ

سے عطافرمایا اے وہ جس نے اپنی قدرت سے عزت دی اے وہ جس نے حکمت سے اندازہ ٹھہرایا اے وہ جس نے اپنی رائے سے

بِتَدْبِیرِہِ، یَا مَنْ دَ بَّرَ بِعِلْمِہِ، یَا مَنْ تَجاوَزَ بِحِلْمِہِ، یَا مَنْ دَنَا فِی عُلُّوِہِ،

حکم دیا اے وہ جس نے اپنے علم سے نظم قائم کیا اے وہ جو اپنی بردباری سے معاف کرتا ہے اے وہ جو بلند ہوتے ہوئے بھی قریب

یَا مَنْ عَلا فِی دُ نُوِّہِ ۔ ﴿83﴾ یَا مَنْ یَخْلُقُ ما یَشَائُ، یَا مَنْ یَفْعَلُ ما

ہے اے وہ جو نزدیکی میں بھی بلند ہے۔ اے وہ کہ جو چاہے پیدا کرتا ہے اے وہ کہ جو چاہے کرگزرتا

یَشَائُ، یَا مَنْ یَھْدِی مَنْ یَشَائُ، یَا مَنْ یُضِلُّ مَنْ یَشَائُ، یَا مَنْ یُعَذِّبُ

ہے اے وہ کہ جسے چاہے ہدایت دیتا ہے اے وہ کہ جسے چاہے گمراہ کرتا ہے اے وہ کہ جسے چاہے عذاب

مَنْ یَشَائُ، یَا مَنْ یَغْفِرُ لِمَنْ یَشَائُ، یَا مَنْ یُعِزُّ مَنْ یَشَائُ، یَا مَنْ یُذِلُّ

دیتا ہے اے وہ کہ جسے چاہے بخشتا ہے اے وہ کہ جسے چاہے عزت دیتا ہے اے وہ کہ جسے چاہے

مَنْ یَشَائُ، یَا مَنْ یُصَوِّرُ فِی الْاَرْحامِ مَا یَشَائُ، یَا مَنْ یَخْتَصُّ

ذلت دیتا ہے اے وہ کہ شکموں میں جیسی چاہے صورت بناتا ہے اے وہ کہ جسے چاہے اپنی

بِرَحْمَتِہِ مَنْ یَشَائُ ۔ ﴿84﴾ یَا مَنْ لَمْ یَتَّخِذْ صاحِبَۃً وَلاَ وَلَداً، یَا مَنْ

رحمت سے خاص کرتا ہے۔ اے وہ جس نے نہ بیوی کی اور نہ اولاد والا ہوا اے وہ جس نے ہر چیز کا

جَعَلَ لِکُلِّ شَیْئٍ قَدْراً، یَا مَنْ لاَ یُشْرِکُ فِی حُکْمِہِ ٲَحَداً، یَا مَنْ جَعَلَ

ایک انداز ٹھہرایا اے وہ جسکی حکومت میں کوئی حصہ دار نہیں اے وہ جس نے فرشتوں

الْمَلائِکَۃَ رُسُلاً، یَا مَنْ جَعَلَ فِی السَّمائِ بُرُوجاً، یَا مَنْ جَعَلَ الْاَرْضَ

کو قاصد قرار دیا اے وہ جس نے آسمان میں برج ترتیب دیے اے وہ جس نے زمین کو رہنے کی

قَراراً، یَا مَنْ خَلَقَ مِنَ الْمَائِ بَشَراً، یَا مَنْ جَعَلَ لِکُلِّ شَیْئٍ ٲَمَداً، یَا

جگہ بنایا اے وہ جس نے انسان کو قطرہ آب سے پیدا کیا اے وہ جس نے ہر چیز کی مدت مقرر فرمائی اے

مَنْ ٲَحاطَ بِکُلِّ شَیْئٍ عِلْماً، یَا مَنْ ٲَحْصی کُلَّ شَیْئٍ عَدَداً ۔ ﴿85﴾

وہ جسکا علم ہر چیز کو گھیرے ہوئے ہے اے وہ جس نے سب چیزوں کا شمار کر رکھا ہے۔

اَللّٰھُمَّ إنِّی ٲَسْٲَ لُکَ بِاسْمِکَ یَا ٲَوَّلُ، یَا آخِرُ، یَا ظاھِرُ، یَا باطِنُ، یَا بَرُّ،

اے معبود میں تجھ سے سوال کرتا ہوں تیرے نام کے واسطے سے اے اول اے آخر اے ظاہر اے باطن اے نیک

یَا حَقُّ، یَا فَرْدُ، یَا وِتْرُ، یَا صَمَدُ، یَا سَرْمَدُ ۔ ﴿86﴾ یَا خَیْرَ مَعْرُوفٍ

اے حق اے یکتا اے یگانہ اے بے نیاز اے دائم۔ اے پہچانے ہوئوں میں بہترین

عُرِفَ، یَا ٲَ فْضَلَ مَعْبُودٍ عُبِدَ، یَا ٲَجَلَّ مَشْکُورٍ شُکِرَ، یَا ٲَعَزَّ مَذْکُورٍ

پہچانے ہوئے اے بہترین معبود کہ جسکی عبادت کی جائے اے شکر کیے ہو ؤں میں بہترین شکر کیے گئے اے ذکر کئے ہوؤں میں

ذُکِرَ، یَا ٲَعْلی مَحْمُودٍ حُمِدَ، یَا ٲَقْدَمَ مَوْجُودٍ طُلِبَ، یَا ٲَرْفَعَ

بلندتر اے تعریف کیے ہوؤں میں بالاتر اے ہر موجود سے قدیم جو طلب کیا گیا اے ہر موصوف سے

مَوْصُوفٍ وُصِفَ، یَا ٲَکْبَرَ مَقْصُودٍ قُصِدَ، یَا ٲَکْرَمَ مَسْؤُولٍ سُئِلَ، یَا

اعلٰی جس کی توصیف کی گئی اے ہرمقصود سے بلند کہ جسکا قصد کیا گیا اے ہر سوال شدہ سے باعزت جس سے سوال ہوا اے

ٲَشْرَفَ مَحْبُوبٍ عُلِمَ ۔ ﴿87﴾ یَا حَبِیبَ الْباکِینَ، یَا سَیِّدَ الْمُتَوَکِّلِینَ، یَا

بہترین محبوب۔ اے رونے والوں کے دوست اے توکل کرنے والوں کے سردار اے

ہادِیَ الْمُضِلِّینَ، یَا وَ لِیَّ الْمُئْومِنِینَ، یَا ٲَنِیسَ الذَّاکِرِینَ، یَا مَفْزَعَ

گمراہوں کو ہدایت دینے والے اے مومنوں کے سرپرست اے یادکرنے والوں کے ہمدم اے دل جلوں

الْمَلھُوفِینَ، یَا مُنْجِیَ الصَّادِقِینَ، یَا ٲَقْدَرَ الْقادِرِینَ، یَا ٲَعْلَمَ

کی پناہ گاہ اے سچے لوگوں کو نجات دینے والے اے قدرت والوں میں بڑے باقدرت اے علم والوں سے

الْعالِمِینَ، یَا إلہَ الْخَلْقِ ٲَجْمَعِینَ ۔ ﴿88﴾ یَا مَنْ عَلا فَقَھَرَ، یَا مَنْ مَلَکَ

زیادہ علم رکھنے والے اے ساری مخلوق کے معبود۔ اے وہ جو بلند اور مسلط ہے اے وہ جو مالک

فَقَدَرَ، یَا مَنْ بَطَنَ فَخَبَرَ، یَا مَنْ عُبِدَ فَشَکَرَ، یَا مَنْ عُصِیَ فَغَفَرَ، یَا

و توانا ہے اے وہ جونہاں اور خبردار ہے اے وہ جو معبود ہے تو شاکر بھی ہے اے وہ جسکی معصیت ہو تو بخش دیتا ہے اے

مَنْ لاَ تَحْوِیہِ الْفِکَرُ، یَا مَنْ لاَ یُدْرِکُہُ بَصَرٌ، یَا مَنْ لاَ یَخْفی عَلَیْہِ ٲَثَرٌ

وہ جسکو فکر پا نہیں سکتی اے وہ جسے آنکھ دیکھ نہیں سکتی اے وہ جس پر کوئی نشان مخفی نہیں ہے اے بشر کو

یَا رازِقَ الْبَشَرِ، یَا مُقَدِّرَ کُلِّ قَدَرٍ ۔ ﴿89﴾ اَللّٰھُمَّ إنِّی ٲَسْٲَ لُکَ بِاسْمِکَ

روزی دینے والے اے ہر اندازے کے مقرر کرنے والے۔ اے معبود میں تجھ سے سوال کرتا ہوں تیرے نام کے واسطے سے اے

یَا حافِظُ، یَا بارِیُٔ، یَا ذارِیُٔ یَا باذِخُ، یَا فارِجُ، یَا فاتِحُ، یَا کاشِفُ،

نگہبان اے پیدا کرنے والے اے ظاہر کرنے والے اے بلندی والے اے کشائش دینے والے اے کھولنے والے اے نمایاں

یَا ضامِنُ، یَا آمِرُ، یَا ناھِی ۔ ﴿90﴾ یَا مَنْ لاَ یَعْلَمُ الْغَیْبَ إلاَّ ھُوَ، یَا مَنْ

کرنے والے اے ذمہ دار اے حکم کرنے والے اے روکنے والے۔ اے وہ جسکے سوا کوئی بھی غیب نہیں جانتا اے وہ جسکے

لاَ یَصْرِفُ السُّوئَ إلاَّ ھُوَ، یَا مَنْ لاَ یَخْلُقُ الْخَلْقَ إلاَّ ھُوَ، یَا مَنْ لاَ

سوا کوئی دکھ دور نہیں کر سکتا اے وہ جسکے سوا کوئی بھی خلق نہیں کر سکتااے وہ جسکے سوا

یَغْفِرُ الذَّنْبَ إلاَّ ھُوَ، یَا مَنْ لاَ یُتِمُّ النِّعْمَۃَ إلاَّ ھُوَ، یَا مَنْ لاَ یُقَلِّبُ

کوئی گناہ معاف نہیں کرتا اے وہ جسکے سوا کوئی نعمت تمام نہیں کرتا اے وہ جسکے سوا کوئی دلوں کو

الْقُلُوبَ إلاَّ ھُوَ، یَا مَنْ لاَ یُدَبِّرُ الْاَمْرَ إلاَّ ھُوَ، یَا مَنْ لاَ یُنَزِّلُ الْغَیْثَ إلاَّ

نہیں پلٹاتا اے وہ جسکے سوا کوئی کام پورے نہیں کرتا اے وہ جسکے سوا کوئی بارش نہیں برساتا

ھُوَ، یَا مَنْ لاَ یَبْسُطُ الرِّزْقَ إلاَّ ھُوَ، یَا مَنْ لاَ یُحْیِی الْمَوْتی إلاَّ ھُوَ ۔ ﴿91﴾

اے وہ جسکے سوا کوئی روزی نہیں بڑھاتا اے وہ جسکے سوا کوئی مردے زندہ نہیں کرتا۔

یَا مُعِینَ الْضُعَفائِ، یَا صاحِبَ الْغُرَبائِ، یَا ناصِرَ الْاَوْ لِیائِ، یَا

اے کمزوروں کے مددگار اے مسافروںکے ہمدم اے دوستوں کی مدد کرنے والے اے

قاھِرَ الْاَعْدائِ، یَا رافِعَ السَّمائِ، یَا ٲَنِیسَ الْاَصْفِیائِ، یَا حَبِیبَ

دشمنوں پر غلبہ پانے والے اے آسمان کو بلند کرنے والے اے خواص کے ساتھی اے پرہیزگاروں کے

الْاَتْقِیائِ، یَا کَنْزَ الْفُقَرائِ، یَا إلہَ الْاَغْنِیائِ، یَا ٲَکْرَمَ الْکُرَمائِ ۔ ﴿92﴾ یَا

دوست اے بے مایوں کے خزانے اے دولتمندوں کے معبود اے کریموں سے زیادہ کریم۔ اے

کافِیاً مِنْ کُلِّ شَیْئٍ، یَا قائِماً عَلَیٰ کُلِّ شَیْئٍ، یَا مَنْ لاَ یُشْبِھُہُ شَیْئٌ،

ہر چیز سے کفایت کرنے والے اے ہر چیز کی نگرانی کرنے والے اے وہ جسکی مثل کوئی چیز نہیں

یَا مَنْ لاَ یَزِیدُ فِی مُلْکِہِ شَیْئٌ، یَا مَنْ لاَ یَخْفی عَلَیْہِ شَیْئٌ، یَا مَنْ لاَ

اے وہ جسکی حکومت میں کوئی چیز اضافہ نہیں کر سکتی اے وہ جس سے کوئی چیز مخفی نہیں اے وہ جسکے

یَنْقُصُ مِنْ خَزائِنِہِ شَیْئٌ، یَا مَنْ لَیْسَ کَمِثْلِہِ شَیْئٌ، یَا مَنْ لاَ یَعْزُبُ

خزانوں میں کسی شئی سے کمی نہیں آتی اے وہ جسکی مثل کوئی چیز نہیں اے وہ جسکے علم سے

عَنْ عِلْمِہِ شَیْئٌ، یَا مَنْ ھُوَ خَبِیرٌ بِکُلِّ شَیْئٍ، یَا مَنْ وَسِعَتْ رَحْمَتُہُ

کوئی چیز باہر نہیں ہے اے وہ جو ہر چیز کی خبر رکھتا ہے اے وہ جسکی رحمت ہر چیز تک وسیع ہے۔

کُلَّ شَیْئٍ ۔ ﴿93﴾ اَللّٰھُمَّ إنِّی ٲَسْٲَ لُکَ بِاسْمِکَ یَا مُکْرِمُ، یَا مُطْعِمُ، یَا

اے معبود میں تجھ سے سوال کرتا ہوں تیرے نام کے واسطے سے اے عزت دینے والے اے کھانا دینے والے اے نعمت دینے

مُنْعِمُ، یَا مُعْطِی، یَا مُغْنِی، یَا مُقْنِی، یَا مُفْنِی، یَا مُحْیِی، یَا مُرْضِی،

والے اے عطا کرنے والے اے غنی بنانے والے اے ذخیرہ کرنے والے اے فنا کرنے والے اے زندہ کرنے والے اے بیماری

یَا مُنْجِی ۔ ﴿94﴾ یَا ٲَوَّلَ کُلِّ شَیْئٍ وَآخِرَہُ، یَا إلہَ کُلِّ شَیْئٍ وَمَلِیکَہُ، یَا

دینے والے اے نجات دینے والے۔ اے ہر چیز سے پہلے اور اسکے بعد اے ہرچیز کے معبود اور اسکے مالک اے

رَبَّ کُلِّ شَیْئٍ وَصانِعَہُ، یَا بارِیَٔ کُلِّ شَیْئٍ وَخالِقَہُ، یَا قابِضَ کُلِّ

ہر چیز کے پروردگار اور اسے بنانے والے اے ہر چیز کے پیدا کرنے والے اوراندازہ ٹھہرانے والے اے ہرچیز کو بند کرنے

شَیْئٍ وَباسِطَہُ، یَا مُبْدِیَٔ کُلِّ شَیْئٍ وَمُعِیدَہُ، یَا مُنْشِیَٔ کُلِّ شَیْئٍ

اور کھولنے والے اے ہر چیزکا آغاز کرنے والے اور اسے لوٹانے والے اے ہر چیز کو بڑھانے

وَمُقَدِّرَہُ، یَا مُکَوِّنَ کُلِّ شَیْئٍ وَمُحَوِّلَہُ، یَا مُحْیِیَ کُلِّ شَیْئٍ وَمُمِیتَہُ،

اور اسکا اندازہ کرنے والے اے ہر چیز کو بنانے اور اسے تبدیل کرنے والے اے ہر چیز کو زندہ کرنے اور اسے موت دینے والے

یَا خالِقَ کُلِّ شَیْئٍ وَوارِثَہُ ۔ ﴿95﴾ یَا خَیْرَ ذاکِرٍ وَمَذْکُورٍ، یَا خَیْرَ

اے ہر چیز کے خالق و وارث۔ اے بہترین ذکر کرنے والے اور ذکر کیے ہوئے اے بہترین شکر کرنے والے اور شکرکیے ہوئے

شاکِرٍ وَمَشْکُورٍ، یَا خَیْرَ حامِدٍ وَمَحْمُودٍ، یَا خَیْرَ شاھِدٍ وَمَشْھُودٍ، یَا

اے بہترین حمد کرنے والے اور حمد کیے ہوئے اے بہترین گواہ اور گواہی دیے ہوئے اے بہترین بلانے

خَیْرَ داعٍ وَمَدْعُوٍّ، یَا خَیْرَ مُجِیبٍ وَمُجابٍ، یَا خَیْرَ مُؤْنِسٍ وَٲَنِیسٍ، یَا

والے اور بلائے ہوئے اے بہترین جواب دینے والے اور جواب دیئے ہوئے اے بہترین انس کرنے والے اور انس کیے ہوئے

خَیْرَ صاحِبٍ وَجَلِیسٍ، یَا خَیْرَ مَقْصُودٍ وَمَطْلُوبٍ، یَا خَیْرَ حَبِیبٍ

اے بہترین رفیق اور ہم نشین اور بہترین قصد کیے ہوئے اور طلب کئے گئے اے بہترین دوست

وَمَحْبُوبٍ ﴿96﴾ یَا مَنْ ھُوَ لِمَنْ دَعاھُ مُجِیبٌ، یَا مَنْ ھُوَ لِمَنْ ٲَطاعَہُ

اوردوست رکھے ہوئے۔ اے وہ جسے پکارا جائے توجواب دیتا ہے اے وہ جسکی اطاعت کی جائے تو

حَبِیبٌ، یَا مَنْ ھُوَ إلَی مَنْ ٲَحَبَّہُ قَرِیبٌ، یَا مَنْ ھُوَ بِمَنِ اسْتَحْفَظَہُ

محبت کرتا ہے اے وہ جو محبت کرنے والے کے قریب ہوتا ہے اے وہ جو طالبِ حفاظت کا نگہبان ہے

رَقِیبٌ، یَا مَنْ ھُوَ بِمَنْ رَجاہُ کَرِیمٌ، یَا مَنْ ہُوَ بِمَنْ عَصاہُ حَلِیمٌ، یَا

اے وہ جو امیدوار پر کرم کرتا ہے اے وہ جو نافرمان کے ساتھ نرمی کرتا ہے اے

مَنْ ھُوَ فِی عَظَمَتِہِ رَحِیمٌ، یَا مَنْ ھُوَ فِی حِکْمَتِہِ عَظِیمٌ، یَا مَنْ ھُوَ فِی

وہ جو اپنی بڑائی کے باوجود مہربان ہے اے وہ جو اپنی حکمت میں بلند ہے اے وہ جو قدیم احسان

إحْسانِہِ قَدِیمٌ، یَا مَنْ ھُوَ بِمَنْ ٲَرادَہُ عَلِیمٌ ۔ ﴿97﴾ اَللّٰھُمَّ إنِّی ٲَسْٲَ لُکَ

والا ہے اے وہ جو ارادہ رکھنے والے کو جانتا ہے۔ اے معبود میں تجھ سے سوال کرتا ہوں تیرے نام کے واسطے سے

بِاسْمِکَ یَا مُسَبِّبُ، یَا مُرَغِّبُ، یَا مُقَلِّبُ، یَا مُعَقِّبُ، یَا مُرَتِّبُ، یَا

اے سبب بنانے والے اے شوق دلانے والے اے پلٹانے والے اے پیچھا کرنے والے اے تربیت کرنے والے اے

مُخَوِّفُ، یَا مُحَذِّرُ، یَا مُذَکِّرُ، یَا مُسَخِّرُ، یَا مُغَیِّرُ ۔ ﴿98﴾ یَا مَنْ عِلْمُہُ

خوف دلانے والے اے ڈرانے والے اے یادکرنے والے اے پابند کرنے والے اے بدلنے والے۔ اے وہ جسکا علم

سابِقٌ، یَا مَنْ وَعْدُہُ صادِقٌ، یَا مَنْ لُطْفُہُ ظاھِرٌ، یَا مَنْ ٲَمْرُہُ غالِبٌ،

سبقت رکھتا ہے اے وہ جسکا وعدہ سچا ہے اے وہ جسکا لطف ظاہر ہے اے وہ جسکا حکم غالب ہے

یَا مَنْ کِتابُہُ مُحْکَمٌ، یَا مَنْ قَضاؤُہُ کائِنٌ، یَا مَنْ قُرْآنُہُ مَجِیدٌ، یَا مَنْ

اے وہ جسکی کتاب محکم ہے اے وہ جسکا فیصلہ نافذ ہے اے وہ جسکا قرآن شان والا ہے اے وہ جسکی

مُلْکُہُ قَدِیمٌ، یَا مَنْ فَضْلُہُ عَمِیمٌ، یَا مَنْ عَرْشُہُ عَظِیمٌ ۔ ﴿99﴾ یَا مَنْ لاَ

حکومت قدیمی ہے اے وہ جسکا فضل عام ہے اے وہ جسکا عرش عظیم ہے۔ اے وہ جسے ایک

یَشْغَلُہُ سَمْعٌ عَنْ سَمْعٍ، یَا مَنْ لاَ یَمْنَعُہُ فِعْلٌ عَنْ فِعْلٍ، یَا مَنْ لاَ یُلْھِیہِ

سماعت دوسری سماعت سے غافل نہیں کرتی اے وہ جس کیلئے ایک فعل دوسرے فعل سے مانع نہیں ہوتا اے وہ جس کیلئے ایک قول

قَوْلٌ عَنْ قَوْلٍ، یَا مَنْ لاَ یُغَلِّطُہُ سُوَالٌ عَنْ سُوَالٍ، یَا مَنْ لاَ یَحْجُبُہُ

دوسرے قول میں خلل نہیں ڈالتا اے وہ جسے ایک سوال دوسرے سوال میں غلطی نہیں کراتا اے وہ جسکے لیے ایک چیز دوسری

شَیْئٌ عَنْ شَیْئٍ، یَا مَنْ لاَ یُبْرِمُہُ إلْحاحُ الْمُلِحِّینَ، یَا مَنْ ھُوَ غایَۃُ

چیز کے آگے حائل نہیں ہوئی اے وہ جسے اصرار کرنے والوں کااصرار تنگ دل نہیں کرتا اے وہ جو ارادہ کرنے والوں کے

مُرادِ الْمُرِیدِینَ، یَا مَنْ ھُوَ مُنْتَہی ھِمَمِ الْعارِفِینَ، یَا مَنْ ھُوَ مُنْتَہی

ارادے کی انتہا ہے اے وہ جو عارفوں کی امنگوں کا نقطئہ آخر ہے اے وہ جو طلبگاروں کی طلب

طَلَبِ الطَّالِبِینَ، یَا مَنْ لاَ یَخْفی عَلَیْہِ ذَرَّ ۃٌ فِی الْعالَمِینَ ۔ ﴿100﴾ یَا

کی انتہا ہے اے وہ جسکے لیے سارے جہانوں میںسے ایک ذرہ بھی پوشیدہ نہیں۔ اے

حَلِیماً لاَ یَعْجَلُ، یَا جَوَاداً لاَ یَبْخَلُ، یَا صادِقاً لاَ یُخْلِفُ، یَا وَہَّاباً لاَ

وہ بردبار جو جلدی نہیں کرتا اے وہ داتا جو ہاتھ نہیں کھینچتا اے وہ صادق جو خلاف ورزی نہیں کرتا اے وہ دینے والا جو

یَمَلُّ، یَا قاھِراً لاَ یُغْلَبُ، یَا عَظِیماً لاَ یُوصَفُ، یَا عَدْلاً لاَ یَحِیفُ، یَا

تھکتا نہیں اے زبردست جو مغلوب نہیں ہوتا اے بے بیان عظمت والے اے وہ عادل جو ظالم نہیں اے

غَنِیّاً لاَ یَفْتَقِرُ، یَا کَبِیراً لاَ یَصْغُرُ، یَا حافِظاً لاَ یَغْفُلُ، سُبْحانَکَ یَا لاَ إلہَ

وہ دولت والے جو کسی کا محتاج نہیں اے وہ بڑا جو چھوٹا نہیں اے وہ نگہبان جو غافل نہیں تو پاک ہے اے وہ کہ سوائے تیرے

إلاَّ ٲَ نْتَ، الْغَوْثَ الْغَوْثَ خَلِّصْنا مِنَ النَّارِ یَا رَبِّ۔

کوئی معبود نہیں اے فریاد رس اے فریاد رس ہمیں آتش جہنم سے بچالے اے پالنے والے

دعائے جوشن صغیر

معتبر کتابوں میں دعائ جوشن صغیر کا ذکر جوشن کبیر سے زیادہ شرح کیساتھ آیا ہے ۔کفعمی نے بلدالامین کے حاشیے میں فرمایا ہے کہ یہ بہت بلند مرتبہ اور بڑی قدر و منزلت والی دعا ہے جب ہادی عباسی نے امام موسیٰ کاظم -کے قتل کا ارادہ کیا توآپ نے یہ دعا پڑھی، تو آپ نے خواب میں اپنے جد بزرگوار رسول اللہ کو دیکھا کہ آپ فرمارہے ہیں کہ حق تعالیٰ آپکے دشمن کو ہلاک کردے گا۔ یہ دعا سید ابن طاؤس نے بھی مہج الدعوات میں نقل کی ہے، لیکن کفعمی اور ابن طاؤس کے نسخوں میں کچھ اختلاف ہے، ہم اسے کفعمی کی بلدالامین سے نقل کررہے ہیں اور دعا یہ ہے۔

بِسْمِ اللّهِ الرَّحْمنِ الرَّحِیمِ

خدا کے نام سے شروع جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے

إلھِی کَمْ مِنْ عَدُوٍّ انْتَضیٰ عَلَیَّ سَیْفَ عَداوَتِہِ، وَشَحَذَ لِی ظُبَۃَ

میرے معبود کتنے ہی دشمنوں نے مجھ پر عداوت کی تلوار کھینچ رکھی ہے اور میرے لیے اپنے خنجر کی دھار تیز کرلی ہے

مِدْیَتِہِ، وَٲَرْھَفَ لِی شَبَا حَدِّہِ، وَدافَ لِی قَواتِلَ سُمُومِہِ، وَسَدَّدَ إلیَّ

اور اسکی تیز نوک میری طرف کر رکھی ہے اورمیرے لیے قاتل زہر مہّیا کر رکھے ہیں اور اپنے تیروں کے

صَوائِبَ سِہامِہِ، وَلَمْ تَنَمْ عَنِّی عَیْنُ حِراسَتِہِ، وَٲَضْمَرَ ٲَنْ یَسُومَنِی

نشانے مجھ پر باندھ لیے ہوئے ہیں اور اسکی آنکھ میری طرف سے جھپکتی نہیں اور اس نے مجھے تکلیف دینے کی ٹھان رکھی ہے

الْمَکْرُوہَ، وَیُجَرِّعَنِی ذُعافَ مَرارَتِہِ نَظَرْتَ إلی ضَعْفِی عَنِ احْتِمالِ

اور مجھے زہر کے گھونٹ پلانے پر آمادہ ہے لیکن تو ہی ہے جس نے بڑی سختیوں کے مقابل میری

الْفَوادِحِ وَعَجْزِی عَنِ الانْتِصارِ مِمَّنْ قَصَدَنِی بِمُحارَبَتِہِ، وَوَحْدَتِی

کمزوری اورمجھ سے مقابلہ کرنے کا قصد رکھنے والوں کے سامنے میری ناطاقتی اور مجھ پر یورش کرنے والوں

فِی کَثِیرٍ مِمَّنْ ناوانِی وَٲَرْصَدَ لِی فِیما لَمْ ٲُعْمِلْ فِکْرِی فِی الْاِرْصادِ

کے درمیان میری تنہائی کو دیکھا جو مجھے ایسی تکلیف دینا چاہتے ہیں جسکا سامنا کرنے کا میں نے

لَھُمْ بِمِثْلِہِ، فَٲَیَّدْتَنِی بِقُوَّتِکَ، وَشَدَدْتَ ٲَزْرِی بِنُصْرَتِکَ، وَفَلَلْتَ لِی

سوچا بھی نہ تھا پس تو نے اپنی قوت سے میری حمایت کی اور اپنی نصرت سے مجھے سہارا دیا اور میرے دشمن کی

حَدَّہُ، وَخَذَلْتَہُ بَعْدَ جَمْعِ عَدِیدِہِ وَحَشْدِہِ، وَٲَعْلَیْتَ کَعْبِی عَلَیْہِ،

تلوار کو کند کردیا اور تو نے انہیں رسوا کردیا جبکہ وہ اپنی بہت بڑی تعداد اور سامان کے ساتھ جمع تھے تو نے مجھے دشمن پر غالب کیا

وَوَجَّھْتَ ما سَدَّدَ إلَیَّ مِنْ مَکائِدِہِ إلَیْہِ، وَرَدَدْتَہُ عَلَیْہِ، وَلَمْ یَشْفِ

اور اس نے میرے لیے مکر و فریب کے جو جال بنے تھے تو نے میری جگہ ان میںاسی کو پھنسادیا تو نہ اسکی تشنگی دور

غَلِیلَہُ، وَلَمْ تَبْرُدْ حَزازاتُ غَیْظِہِ، وَقَدْ عَضَّ عَلَیَّ ٲَنامِلَہُ، وَٲَدْبَرَ

ہوئی نہ اسکے غصے کی آگ ٹھنڈی ہوئی اور افسوس کیساتھ اس نے اپنی انگلیاں چبالیں اور وہ پست ہوگیا

مُوَلِّیاً قَدْ ٲَخْفَقَتْ سَرایاہُ، فَلَکَ الْحَمْدُ یَا رَبِّ مِنْ مُقْتَدِرٍ لاَ یُغْلَبُ،

جب اسکے جھنڈے گر پڑے۔ پس حمد تیرے ہی لیے ہے اے پروردگار کہ تو وہ توانا ہے جسے شکست نہیں ہوتی

وَذِیٔ ٲَنَا ۃٍ لاَ یَعْجَل صَلِّ عَلی مُحَمَّدٍ وَآلِ مُحَمَّدٍ وَاجْعَلْنِی لِنَعْمائِکَ مِن

اور تو وہ بردبار ہے جو جلدی نہیں کرتا محمد(ص) اور آل محمد(ع) پر رحمت فرما اور مجھے اپنی نعمتوں کا شکر ادا کرنے

الشَّاکِرِینَ، وَلاَِلائِکَ مِنَ الذَّاکِرِینَ ۔ إلھِی وَکَمْ مِنْ باغٍ بَغانِی

والوں اور اپنے احسانوں کے یاد کرنے والوں میں قرار دے اے معبود کسی سرکش نے میرے خلاف مکر

بِمَکائِدِہِ، وَنَصَبَ لِی ٲَشْراکَ مَصائِدِہِ، وَوَکَّلَ بِی تَفَقُّدَ رِعایَتِہِ،

سے مجھ پر زیادتی کی اور مجھے پھانسنے کے لیے شکاری جال بچھایا اور مجھے اپنی فرصت کے سپرد کردیا

وَٲَضْبَٲَ إلَیَّ إضْبائَ السَّبُعِ لِطَرِیدَتِہِ، انْتِظاراً لاِنْتِہازِ فُرْصَتِہِ، وَھُوَ

اور اس طرح تاک لگائی ہے جیسے درندہ اپنے بھاگے ہوئے شکار کو پکڑے جانے تک دیکھتا رہتا ہے حالانکہ یہ

یُظْھِرُ بَشاشَۃَ الْمَلَقِ، وَیَبْسُطُ وَجْہاً غَیْرَ طَلِقٍ فَلَمّا رَٲَیْتَ دَغَلَ

شخص مجھ سے ملنے میں خوشگوار اور کشادہ رو ہے اور اصل میں بد نیت ہے پس جب تو نے اسکی بدباطنی کو

سَرِیرَتِہِ، وَقُبْحَ مَا انْطَویٰ عَلَیْہِ لِشَرِیکِہِ فِی مِلَّتِہِ، وَٲَصْبَحَ مُجْلِباً لِی

اور اپنی ملت کے ایک فرد کے لیے اسکی خباثت کو دیکھا یعنی میرے لیے اسے ستمگر پایا تو اسے تو نے سر کے بل

فِی بَغْیِہِ ٲَرْکَسْتَہُ لاَُِمِّ رَٲْسِہِ، وَٲَتَیْتَ بُنْیانَہُ مِنْ ٲَساسِہِ، فَصَرَعْتَہُ فِی

زمین پر پھینک دیا اور اسکی ساختگی کو جڑ سے اکھاڑ ڈالا پس تو نے اسے اسی کے کھودے ہوئے کنوئیں میں

زُبْیَتِہِ، وَرَدَّیْتَہُ فِی مَھْویٰ حُفْرَتِہِ، وَجَعَلْتَ خَدَّہُ طَبَقاً لِتُرابِ رِجْلِہِ،

دھکیلا اور اسی کے کھودے ہوئے گڑھے میں پھینکا اور تو نے اسکے منہ پر اسی کے پاؤں کی خاک ڈالی

وَشَغَلْتَہُ فِی بَدَنِہِ وَرِزْقِہِ، وَرَمَیْتَہُ بِحَجَرِہِ، وَخَنَقْتَہُ بِوَتَرِہِ، وَذَکَّیْتَہُ

اور اسے اسکے بدن اور رزق میں گم کردیا اسے اسی کے پتھر سے مارا اور اسکی گردن اسی کی کمان سے چھیدی اسکا

بِمَشاقِصِہِ، وَکَبَبْتَہُ لِمَنْخِرِہِ، وَرَدَدْتَ کَیْدَہُ فِی نَحْرِہِ،

سر اسی کی تلوار سے اڑایا اور اسے منہ کے بل گرایا اس کا مکر اسی کی گردن میں ڈالا

وَرَبَقْتَہُ بِنَدامَتِہِ، وَفَسَٲْتَہُ بِحَسْرَتِہِ، فَاسْتَخْذَٲَ وتَضائَلَ بَعْدَ نَخْوَتِہِ،

اور پشیمانی کی زنجیر اس کے گلے میں ڈال دی اسکی حسرت سے اسے فنا کیا پس میرا وہ دشمن اکڑبازاور ذلیل ہوااور گھٹنوں کے بل گرا

وَانْقَمَعَ بَعْدَ اسْتِطالَتِہِ ذَلِیلاً مَٲْسُوراً فِی رِبْقِ حِبالَتِہِ الَّتِی کانَ یُؤَمِّلُ

اور سرکشی و تندی کے بعد رسوا ہوا اور اپنے مکر و فریب کی رسیوں میں جگڑا گیا یہ وہ پھندا ہے جس میںوہ مجھے

ٲَنْ یَرانِی فِیہا یَوْمَ سَطْوَتِہِ، وَقَدْ کِدْتُ یَا رَبِّ لَوْلا رَحْمَتُکَ ٲَنْ

اپنے تسلط میںدیکھنا چاہتا تھا اور اے پروردگار اگر تیری رحمت مجھ پر نہ ہوتی تو قریب تھا کہ میرے

یَحُلَّ بِی ما حَلَّ بِساحَتِہِ، فَلَکَ الْحَمْدُ یَا رَبِّ مِنْ مُقْتَدِرٍ لاَ یُغْلَبُ ،

ساتھ وہی ہوتا جو اسکے ساتھ ہوا پس حمد تیرے ہی لیے ہے اے پروردگار کہ تو وہ توانا ہے جسے شکست نہیں

وَذِی ٲَناۃٍ لاَ یَعْجَلُ، صَلِّ عَلی مُحَمَّدٍ وَآلِ مُحَمَّدٍ وَاجْعَلْنِی لِنَعْمائِکَ

تو وہ بردبار ہے جو جلدی نہیں کرتا محمد(ص) و آل محمد(ع) پر رحمت فرما اور مجھے اپنی نعمتوں کا

مِنَ الشَّاکِرِینَ، وَلاَِلائِکَ مِنَ الذَّاکِرِینَ ۔ إلھِی وَکَمْ مِنْ حاسِدٍ شَرِقَ

شکر کرنے والوں اور اپنے احسانوں کے یاد کرنے والوں میں قرار دے خدایا میرے کئی حاسد حسرت سے گلوگیر

بِحَسْرَتِہِ، وَعَدُوٍّ شَجِیَ بِغَیْظِہِ، وَسَلَقَنِی بِحَدِّ لِسانِہِ، وَوَخَزَنِی بِمُوقِ

ہوئے اوردشمن غصے میں جل بھن گئے اور تیزی زبان سے مجھے اذیت دی اور مجھے اپنی آنکھوں کی پلکوں سے زخمِ جگر

عَیْنِہِ، وَجَعَلَنِی غَرَضاً لِمَرامِیہِ، وَقَلَّدَنِی خِلالاً لَمْ تَزَلْ فِیہِ نادَیْتُکَ

لگائے اور مجھے اپنی نفرت کے تیروں کا نشانہ بنایا میرے گلے میں پھندا ڈالا تو اے پروردگارمیں نے تجھے لگاتار پکارا کہ

یَا رَبِّ مُسْتَجِیراً بِکَ، واثِقاً بِسُرْعَۃِ إجابَتِکَ، مُتَوَکِّلاً عَلی ما لَمْ ٲَزَلْ

تیری پناہ لوں جو یقینی ہے کہ تو جلد قبولیت کرنے والا ہے میر ابھروسہ تیرے حسن دفاع پر رہا ہے جسکی مجھے

ٲَتَعَرَّفُہُ مِنْ حُسْنِ دِفاعِکَ، عالِماً ٲَ نَّہُ لاَ یُضْطَھَدُ مَنْ ٲَوی إلی ظِلِّ

پہلے ہی معرفت ہے میں جانتا ہوں کہ جو تیرے سایہ رحمت میں آجائے تو تو اسکی پردہ

کَنَفِکَ، وَلَنْ تَقْرَعَ الْحَوادِثُ مَنْ لَجَٲَ إلی مَعْقِلِ الانْتِصارِ بِکَ،

دری نہیں کرتا اور جو تجھ سے مدد مانگتا رہے مصائب اسکی سرکوبی نہیں کرسکتے

فَحَصَّنْتَنِی مِنْ بَٲْسِہِ بِقُدْرَتِکَ، فَلَکَ الْحَمْدُ یَا رَبِّ مِنْ مُقْتَدِرٍ لاَ

پس تو اپنی قدرت سے تو مجھے دشمن کی اذیت سے محفوظ فرما پس حمد تیرے ہی لیے ہے اے پروردگار کہ تو وہ توانا ہے جسے

یُغْلَبُ وَذِی ٲَنا ۃٍ لاَ یَعْجَلُ ، صَلِّ عَلی مُحَمَّدٍ وَآلِ مُحَمَّدٍ وَاجْعَلْنِی

شکست نہیں ہوتی تو وہ بردباد ہے جو جلدی نہیں کرتا محمد(ص) و آل محمد(ع) پر رحمت فرما اور مجھے اپنی نعمتوں

لِنَعْمائِکَ مِنَ الشَّاکِرِینَ، وَلاَِلائِکَ مِنَ الذَّاکِرِینَ، إلھِی وَکَمْ مِنْ

کا شکر ادا کرنے والوں اور اپنے احسانوں کے یاد کرنے والوں میں قرار دے خدایا کتنے ہی

سَحائِبِ مَکْرُوہٍ جَلَّیْتَہا، وَسَمائِ نِعْمَۃٍ مَطَرْتَہا، وَجَداوِلِ کَرامَۃٍ

خطرناک بادلوں کو تو نے میرے سر سے ہٹایا اور نعمتوںکے آسمان سے مجھ پر مینہ برسایا اور عزت و آبرو کی

ٲَجْرَیْتَہا، وَٲَعْیُنِ ٲَحْداثٍ طَمَسْتَہا، وَناشِیَۃِ رَحْمَۃٍ نَشَرْتَہا، وَجُنَّۃِ

نہریں جاری کیں اور سختیوںکے سرچشموں کو ناپید کردیا اور رحمت کا سایہ پھیلا دیا اور عافیت کی

عافِیَۃٍ ٲَ لْبَسْتَہا، وَغَوامِرِ کُرُباتٍ کَشَفْتَہا، وَٲُمُورٍ جارِیَۃٍ قَدَّرْتَہا، لَمْ

زرہ پہنادی اور دکھوں کے بھنور توڑ کر رکھ دیے اور جو کچھ ہو رہا تھا اسے قابو کر لیا جو تو

تُعْجِزْکَ إذْ طَلَبْتَہا، وَلَمْ تَمْتَنِعْ مِنْکَ إذْ ٲَرَدْتَہا، فَلَکَ الْحَمْدُ یَا رَبِّ

کرنا چاہے اس سے عاجز نہیں اور جسکا تو ارادہ کرے اس میں تجھے دشواری نہیں پس حمد تیرے ہی لیے ہے اے پروردگار

مِنْ مُقْتَدِرٍ لاَ یُغْلَبُ، وَذِی ٲَناۃٍ لاَ یَعْجَلُ، صَلِّ عَلی مُحَمَّدٍ وَآلِ

کہ تو وہ توانا ہے جسے شکست نہیں ہوتی اور تو وہ بردباد ہے جو جلدی نہیں کرتا محمد(ص) و آل

مُحَمَّدٍ وَاجْعَلْنِی لِنَعْمائِکَ مِنَ الشَّاکِرِینَ، وَلاَِلائِکَ مِنَ الذَّاکِرِینَ ۔

محمد(ع) پر رحمت فرما اور مجھے اپنی نعمتوں کا شکر کرنے والوں اور اپنے احسانوں کے یاد کرنے والوں میںقرار دے

إلھِی وَکَمْ مِنْ ظَنٍّ حَسَنٍ حَقَّقْتَ، وَمِنْ کَسْرِ إمْلاقٍ جَبَرْتَ، وَمِنْ

اے اللہ تو نے بہت سی خوش خیالیوں کو حقیقت بنادیا اور میری تنگدستی کو دور فرما دیا اور میری بے چارگی

امَسْکَنَۃٍ فادِحَۃٍ حَوَّلْتَ، وَمِنْ صَرْعَۃٍ مُھْلِکَۃٍ نَعَشْتَ، وَمِنْ مَشَقَّۃٍ

کو مجھ سے دور کردیا اور مار ڈالنے والے تھپیڑوں سے امن دیا اور مشقت کی بجائے

ٲَرَحْتَ لاَ تُسْٲَلُ عَمَّا تَفْعَلُ وَھُمْ یُسْٲَ لُونَ، وَلاَ یَنْقُصُکَ ما ٲَ نْفَقْتَ،

راحت دی جو تو کرے میرے دشمن اس پر تجھے کچھ کہہ نہیں سکتے کہ وہ تیرے سامنے جوابدہ ہیں عطا و بخشش سے تیرا خزانہ کم نہیں ہوتا

وَلَقَدْ سُئِلْتَ فَٲَعْطَیْتَ، وَلَمْ تُسْٲَلْ فَابْتَدَٲْتَ، وَاسْتُمِیحَ بابُ فَضْلِکَ

جب بھی تجھ سے مانگا گیا تو، تو نے عطا کیا اور سوال نہ کیا گیا تو، بھی تو نے دیا اور تیری درگاہ عالی سے جو طلب کیا گیا

فَما ٲَکْدَیْتَ، ٲَبَیْتَ إلاَّ إنْعاماً وَامْتِناناً، وَ إلاَّ تَطَوُّلاً یَا رَبِّ وَ إحْساناً،

تو نے اس سے دریغ نہ کیا نہ ہی دیر کی مگر یہ کہ نعمت دی اور احسان کیا اور بہت زیادہ دیا اے پروردگار تو نے خوب دیا

وَٲَبَیْتُ إلاَّ انْتِہاکاً لِحُرُماتِکَ، وَاجْتِرائً عَلی مَعاصِیکَ، وَتَعَدِیّاً

اور میںنے تو تیری حرمتوں کو توڑا اور تیری نافرمانی کرنے میں جرأت کی اور تیری حدوںسے تجاوز

لِحُدُودِکَ، وَغَفْلَۃً عَنْ وَعِیدِکَ، وَطاعَۃً لِعَدُوِّی وَعَدُوِّکَ، لَمْ یَمْنَعْکَ

کیا اور تیرے ڈرانے کے باوجود بے پروائی کی اور اپنے اور تیرے دشمن کی اطاعت کی لیکن

یَا إلھِی وَناصِرِی إخْلالِی بِالشُّکْرِ عَنْ إتْمامِ إحْسانِکَ، وَلاَ حَجَزَنِی

اے میرے پروردگار اے میرے مددگار میری ناشکری پر تو نے اپنے احسان کو مجھ سے نہیںروکا اور میری

ذلِکَ عَنِ ارْتِکابِ مَساخِطِکَ ۔ اَللّٰھُمَّ وَہذا مَقَامُ عَبْدٍ ذَلِیلٍ اعْتَرَفَ

نافرمانیاں ان عنائتوںمیں آڑے نہیں آئیں اے معبود یہ حال ہے تیرے اس ذلیل بندے کا جو تیری توحید کو

لَکَ بِالتَّوْحِیدِ، وَٲَقَرَّ عَلی نَفْسِہِ بِالتَّقْصِیرِ فِی ٲَدائِ حَقِّکَ، وَشَھِدَ لَکَ

مانتا ہے اور خود کو تیرے حق کی ادائیگی میں قصوروار گردانتا ہے اور گواہی دیتا ہے کہ تو نے

بِسُبُوغِ نِعْمَتِکَ عَلَیْہِ وَجَمِیلِ عادَتِکَ عِنْدَہُ وَ إحْسانِکَ إلَیْہِ، فَھَبْ لِی

اس پر نعمتوں کی بارش فرمائی اوراسکے ساتھ اچھا برتاؤ کیا اور اس پر تیرا احسان ہی احسان ہے پس

یَا إلھِی وَسَیِّدِی مِنْ فَضْلِکَ ما ٲُرِیدُہُ سَبَباً إلی رَحْمَتِکَ، وَٲَتَّخِذُہُ

اے میرے معبود اور اے میرے آقا مجھے اپنے فضل سے وہ رحمت نصیب فرما جس کا میں خواہاں ہوں تا کہ میںاسے زینہ بنا

سُلَّماً ٲَعْرُجُ فِیہِ إلی مَرْضاتِکَ، وَ آمَنُ بِہِ مِنْ سَخَطِکَ، بِعِزَّتِکَ

کر تیری رضاؤں تک پہنچ پاؤں اور تیری ناراضگی سے بچ سکوں تجھے واسطہ ہے اپنی عزت

وَطَوْلِکَ وَبِحَقِّ نَبِیِّکَ مُحَمَّدٍ صَلَّی اللّهُ عَلَیْہِ وَآلِہِ، فَلَکَ الْحَمْدُ یَا

و سخاوت اور اپنے نبی محمد مصطفیٰ کا پس حمد تیرے ہی لیے

رَبِّ مِنْ مُقْتَدِرٍ لاَ یُغْلَبُ، وَذِی ٲَناۃٍ لاَ یَعْجَلُ، صَلِّ عَلی مُحَمَّدٍ وَآلِ

اے پروردگار کہ تو وہ توانا ہے جسے شکست نہیں ہوتی تو بردبار ہے جو جلدی نہیں کرتا محمد(ص) و آل

مُحَمَّدٍ وَاجْعَلْنِی لِنَعْمائِکَ مِنَ الشَّاکِرِینَ، وَلاَِلائِکَ مِنَ الذَّاکِرِینَ ۔

محمد(ع) پر رحمت فرما اور مجھے اپنی نعمتوں کا شکر کرنے والوں اور اپنے احسانوں کے یاد کرنے والوں میں قرار دے

إلھِی وَکَمْ مِنْ عَبْدٍ ٲَمْسی وَٲَصْبَحَ فِی کَرْبِ الْمَوْتِ، وَحَشْرَجَۃِ

اے معبود بہت سے بندے ایسے ہیں جو موت کے شکنجے میں صبح اور شام کرتے ہیں جب کہ دم سینے میں

الصَّدْرِ، وَالنَّظَرِ إلی ما تَقْشَعِرُّ مِنْہُ الْجُلُودُ، وَتَفْزَعُ لَہُ الْقُلُوبُ، وَٲَ نَا

گھٹ جاتا ہے اور آنکھیں وہ چیز دیکھتی ہیں جس سے بدن کانپ اٹھا ہے اوردل گھبراہٹ میں جاتا ہے اور میں

فِی عافِیَۃٍ مِنْ ذلِکَ کُلِّہِ فَلَکَ الْحَمْدُ یَا رَبِّ مِنْ مُقْتَدِرٍ لاَ یُغْلَبُ،

ان حالتوں سے امن میں رہا ہوں پس حمد تیرے ہی لیے ہے اے پروردگار کہ تو وہ توانا ہے جسے شکست نہیں ہوتی

وَذِی ٲَناۃٍ لاَ یَعْجَلُ، صَلِّ عَلی مُحَمَّدٍ وَآلِ مُحَمَّدٍ وَاجْعَلْنِی لِنَعْمائِکَ

اور تو وہ بردبار ہے جو جلدی نہیں کرتا محمد(ص) و آل محمد(ع) پر رحمت فرما اور مجھ کو اپنی نعمتوں کا

مِنَ الشَّاکِرِینَ، وَلاَِلائِکَ مِنَ الذَّاکِرِینَ ۔ إلھِی وَکَمْ مِنْ عَبْدٍ ٲَمْسی

شکر کرنے والوں اور اپنے احسانوں کے یاد کرنے والوں میںقرار دے اے معبود بہت سے ایسے بندے ہیں جو صبح

وَٲَصْبَحَ سَقِیماً مُوجَعاً فِی ٲَ نَّۃٍ وَعَوِیلٍ یَتَقَلَّبُ فِی غَمِّہِ لاَ یَجِدُ

اور شام کرتے ہیں بیماری اور درد میں آہ و زاری کے ساتھ اور غم سے بے قرار ہوتے ہیں نہ کوئی چارہ رکھتے

مَحِیصاً، وَلاَ یُسِیغُ طَعاماً وَلاَ شَراباً، وَٲَ نَا فِی صِحَّۃٍ مِنَ الْبَدَنِ،

ہیں نہ انہیں کھانے پینے کا مزا بھلا لگتا ہے لیکن میں جسمانی لحاظ سے تندرست

وَسَلامَۃٍ مِنَ الْعَیْشِ کُلُّ ذلِکَ مِنْکَ فَلَکَ الْحَمْدُ یَا رَبِّ مِنْ مُقْتَدِرٍ لاَ

اور زندگی کے لحاظ سے آرام میں ہوں اور یہ سب تیرا ہی کرم ہے پس حمد تیرے ہی لیے ہے اے پروردگارکہ تو وہ تواناہے

یُغْلَبُ، وَذِی ٲَناۃٍ لاَ یَعْجَلُ، صَلِّ عَلی مُحَمَّدٍ وَآلِ مُحَمَّدٍ وَاجْعَلْنِی

جسے شکست نہیں ہوتی اور تو وہ بردبار ہے جو جلدی نہیںکرتا محمد(ص) و آل محمد(ع) پر رحمت فرما اور مجھ کو اپنی

لِنَعْمائِکَ مِنَ الشَّاکِرِینَ، وَلاَِلائِکَ مِنَ الذَّاکِرِینَ ۔ إلھِی وَکَمْ مِنْ

نعمتوں کا شکر کرنے والوں اور اپنے احسانوں کے یاد کرنے والوں میں قرار دے اے معبود بہت سے ایسے

عَبْدٍ ٲَمْسی وَٲَصْبَحَ خائِفاً مَرْعُوباً مُشْفِقاً وَجِلاً ہارِباً طَرِیداً

بندے ہیں جو صبح اور شام کرتے ہیں ڈرے ہوئے دبے ہوئے سہمے ہوئے کانپتے ہوئے بھاگے ہوئے دھتکارے ہوئے

مُنْجَحِراً فِی مَضِیقٍ وَمَخْبَٲَۃٍ مِنَ الَْمخابِیََ قَدْ ضاقَتْ عَلَیْہِ الْاَرْضُ

تنگ کوٹھڑی میںگھسے ہوئے اور اوٹ میں چھپے ہوئے کہ یہ زمین اپنی وسعتوں کے باوجود ان کے لیے تنگ ہے

بِرُحْبِہا، لاَ یَجِدُ حِیلَۃً وَلاَ مَنْجی وَلاَ مَٲْوی، وَٲَ نَا فِی ٲَمْنٍ وَطُمَٲْنِینَۃٍ

نہ انکا کوئی وسیلہ ہے نہ نجات کا ذریعہ اور نہ پناہ کی جگہ ہے جبکہ میںان باتوں سے امن و چین

وَعافِیَۃٍ مِنْ ذلِکَ کُلِّہِ، فَلَکَ الْحَمْدُ یَا رَبِّ مِنْ مُقْتَدِرٍ لاَ یُغْلَبُ وَذِی

اور آرام و آسائش میں ہوں پس حمدتیرے ہی لیے ہے اے پروردگار کہ تو وہ توانا ہے جسے شکست نہیں ہوتی اور تو وہ

ٲَناۃٍ لاَ یَعْجَلُ، صَلِّ عَلی مُحَمَّدٍ وَآلِ مُحَمَّدٍ وَاجْعَلْنِی لِنَعْمائِکَ مِنَ

بردبار ہے جو جلدی نہیںکرتا محمد(ص) و آل محمد(ع) پر رحمت فرما اور مجھ کو اپنی نعمتوں کا

الشَّاکِرِینَ، وَلاَِلائِکَ مِنَ الذَّاکِرِینَ ۔ إلھِی وَسَیِّدِی وَکَمْ مِنْ عَبْدٍ

شکر کرنے والوں اپنے احسانوںکا ذکر کرنے والوں میں قرار دے اے معبود بہت لوگ ایسے ہیں جنہوں

ٲَمْسی وَٲَصْبَحَ مَغْلُولاً مُکَبَّلاً فِی الْحَدِیدِ بِٲَیْدِی الْعُداۃِ لاَ یَرْحَمُونَہُ

نے صبح اور شام کی جب کہ دشمنوں کے ہاتھوں ہتھکڑیوںاور بیڑیوں میںجکڑے ہیں کہ ان پر رحم نہیںکیا جاتا وہ

فَقِیداً مِنْ ٲَھْلِہِ وَوَلَدِہِ، مُنْقَطِعاً عَنْ إخْوانِہِ وَبَلَدِہِ، یَتَوَقَّعُ کُلَّ ساعَۃٍ

اپنے زن و فرزندسے جدا قید تنہائی میں ہیں اپنے شہر اور اپنے بھائیوں سے دور ہر لمحہ اس خیال میں ہیں کہ کس

بِٲَیِّ قِتْلَۃٍ یُقْتَلُ، وَبِٲَیِّ مُثْلَۃٍ یُمَثَّلُ بِہِ، وَٲَ نَا فِی عافِیَۃٍ مِنْ ذلِکَ کُلِّہِ

طرح انہیں قتل کیا جائے گا اور کس کس طرح ان کے جوڑ کا ٹے جائیں گے اور میں ان سب سختیوںسے محفوظ ہوں

فَلَکَ الْحَمْدُ یَا رَبِّ مِنْ مُقْتَدِرٍ لاَ یُغْلَبُ، وَذِی ٲَناۃٍ لاَ یَعْجَلُ، صَلِّ

پس حمد ہے تیرے ہی لیے ہے اے پروردگار تو وہ تواناہے جسے شکست نہیں ہوتی اور تو وہ بردبارہے جو جلدی نہیں کرتا

عَلی مُحَمَّدٍ وَآلِ مُحَمَّدٍ وَاجْعَلْنِی لِنَعْمائِکَ مِنَ الشَّاکِرِینَ، وَلاَِلائِکَ

محمد(ص) و آل محمد(ع) پر رحمت فرما اور مجھے اپنی نعمتوں کا شکر کرنے والوں اور اپنے احسانوں کے

مِنَ الذَّاکِرِینَ ۔ إلھِی وَکَمْ مِنْ عَبْدٍ ٲَمْسی وَٲَصْبَحَ یُقاسِی الْحَرْبَ

یاد کرنے والوں میں قرار دے میرے معبود بہت سے ایسے بندے ہیںجنہوںنے صبح اور شام کی حالت جنگ

و َمُبا شَرَۃَ الْقِتالِ بِنَفْسِہِ قَدْ غَشِیَتْہُ الْاَعْدائُ مِنْ کُلِّ جانِبٍ بِالسُّیُوفِ

اور میدان قتال میں جب کہ ان پر دشمن چھائے ہوئے ہیں اور ہر طرف سے ان پر آبدار شمشیریں

وَالرِّماحِ وَآلَۃِ الْحَرْبِ، یَتَقَعْقَعُ فِی الْحَدِیدِ قَدْ بَلَغَ مَجْھُودَھُ لاَ یَعْرِفُ

اور تیز دھار نیزے اور دیگر اسلحہ کے وار ہورہے ہیں ان کی ہمت ٹوٹ چکی ہے وہ نہیں جانتے کہ اب کیاکریں

حِیلَۃً، وَلاَ یَجِدُ مَھْرَباً، قَدْ ٲُدْنِفَ بِالْجِراحَاتِ، ٲَوْ مُتَشَحِّطاً بِدَمِہِ

کوئی جگہ نہیں جہاںبھاگ کے چلے جائیں وہ زخموں سے چور ہیں یا اپنے خون میں غلطاں گھوڑوں

تَحْتَ السَّنابِکِ وَالْاَرْجُلِ، یَتَمَنَّی شَرْبَۃً مِنْ مائٍ ٲَوْ نَظْرَ ۃً إلی ٲَھْلِہِ

کے سموں کی زد میں بے بس پڑے ہیں وہ ایک گھونٹ پانی کو ترس رہے ہیں یا اپنے زن و فرزند کو ایک نظر دیکھنے کے

وَوَلَدِھِ لاَ یَقْدِرُ عَلَیْہا، وَٲَ نَا فِی عافِیَۃٍ مِنْ ذلِکَ کُلِّہِ فَلَکَ الْحَمْدُ یَا

تڑپ رہے ہیں اور اتنی طاقت نہیں رکھتے اور میں ان سب دکھوں سے بچا ہؤا ہوں پس حمد تیرے ہی لیے ہے

رَبِّ مِنْ مُقْتَدِرٍ لاَ یُغْلَبُ، وَذِی ٲَناۃٍ لاَ یَعْجَلُ، صَلِّ عَلی مُحَمَّدٍ وَآلِ

اے پروردگار کہ تو وہ توانا ہے جسے شکست نہیںہوتی اور تو وہ بردبار ہے جو جلدی نہیں کرتا محمد(ص) و آل

مُحَمَّدٍ وَاجْعَلْنِی لِنَعْمائِکَ مِنَ الشَّاکِرِینَ، وَلاَِلائِکَ مِنَ الذَّاکِرِینَ ۔

محمد(ع) پر رحمت فرما اور مجھے اپنی نعمتوں کا شکر کرنے والوں اور اپنے احسانوں کے یاد کرنے والوں میں سے قرار دے

إلھِی وَکَمْ مِنْ عَبْدٍ ٲَمْسی وَٲَصْبَحَ فِی ظُلُماتِ الْبِحارِ وَعَواصِفِ

میرے معبود بہت سے بندے ایسے ہیں جنہوں نے صبح اور شام کی سمندروں کی تاریکیوں اور باد و باران کے بلاخیز طوفانوں

الرِّیاحِ وَالْاَھْوالِ وَالْاَمْواجِ، یَتَوَقَّعُ الْغَرَقَ وَالْھَلاکَ، لاَ یَقْدِرُ عَلی

میں اور بپھری ہوئی موجوں کے خطروں میں جب کہ انہیں ڈوب کے مرجانے کا خوف ہو وہ اس سے بچ نکلنے کا کوئی

حِیلَۃٍ، ٲَوْ مُبْتَلیً بِصاعِقَۃٍ ٲَوْ ھَدْمٍ ٲَوْ حَرْقٍ ٲَوْشَرْقٍ ٲَوْ خَسْفٍ ٲَوْ

راستہ نہیںپاتے یا وہ گھر چمکتی بجلیوں میں گھرے ہوئے ہیں یا بے موت مرنے یا جل جانے یا دم گھٹ جانے یا زمین میں دھنسنے

مَسْخٍ ٲَوْ قَذْفٍ، وَٲَ نَا فِی عافِیَۃٍ مِنْ ذلِکَ کُلِّہِ فَلَکَ الْحَمْدُ یَا رَبِّ مِنْ

یا صورت بگڑنے یا بیماری کے حال میں ہیں اور میں ان ساری تکلیفوں سے امن میں ہوں پس حمد تیرے ہی لیے ہے اے پروردگار

مُقْتَدِرٍ لاَ یُغْلَبُ، و َذِی ٲَناۃٍ لاَ یَعْجَلُ، صَلِّ عَلی مُحَمَّدٍ وَآلِ مُحَمَّدٍ

کہ تو وہ توانا ہے جسے شکست نہیںہوتی تو وہ بردبار ہے جو جلدی نہیںکرتا محمد(ص) و آل محمد(ع) پر رحمت فرما

وَاجْعَلْنِی لِنَعْمائِکَ مِنَ الشَّاکِرِینَ، وَلاَِلائِکَ مِنَ الذَّاکِرِینَ، إلھِی

اور مجھے اپنی نعمتوں کا شکر کرنے والوں اور اپنے احسانوں کے یاد کرنے والوں میں قرار دے اے معبود

وَکَمْ مِنْ عَبْدٍ ٲَمْسی وَٲَصْبَحَ مُسافِراً شاخِصاً عَنْ ٲَھْلِہِ وَوَلَدِہِ،

بہت بندے ایسے ہیں جنہوں نے صبح اور شام کی حالت سفر میںاپنے زن و فرزند سے دور بیابانوں

مُتَحَیِّراً فِی الْمَفاوِزِ، تایِہاً مَعَ الْوُحُوشِ وَالْبَہائِمِ وَالْھَوامِّ، وَحِیداً

میںراستہ بھولے ہوئے ہیںوہ وحشی درندوں، چوپایوں اور کا ٹنے والے کیڑے مکوڑوں میں یکتا و تنہا

فَرِیداً لاَ یَعْرِفُ حِیلَۃً وَلاَ یَھْتَدِی سَبِیلاً، ٲَوْ مُتَٲَذِّیاً بِبَرْدٍ ٲَوْ حَرٍّ ٲَوْ

پریشان ہیںجہاںان کاکوئی چارہ نہیںاور نہ انہیںکوئی راہ سوجھتی ہے یا سردی میںٹھٹھرتے یا گرمی میں جلتے ہیںیا

جُوعٍ ٲَوْ عُرْیٍ ٲَوْ غَیْرِھِ مِنَ الشَّدائدِ مِمَّا ٲَ نَا مِنْہُ خِلْوٌ فِی عافِیَۃٍ مِنْ

بھوک یا عریانی و غیرہ ایسی سختیوں میں گرفتار ہیں جن سے میں ایک طرف ہوں اور ان سب دکھوں

ذلِکَ کُلِّہِ فَلَکَ الْحَمْدُ یا رَبِّ مِنْ مُقْتَدِرٍ لاَ یُغْلَبُ، وَذِی ٲَناۃٍ لاَ

سے آرام میں ہوں پس حمدتیرے ہی لیے ہے اے پروردگار تو وہ توانا ہے جسے شکست نہیںہوتی اور تو وہ بردبار ہے جو

یَعْجَلُ، صَلِّ عَلی مُحَمَّدٍ وَآلِ مُحَمَّدٍ وَاجْعَلْنِی لِنَعْمائِکَ مِنَ

جلدی نہیں کرتا محمد(ص) و آل محمد(ع) رحمت نازل فرما پر اور مجھے اپنی نعمتوں کا شکر کرنے

الشَّاکِرِینَ، وَلاَِلائِکَ مِنَ الذَّاکِرِینَ، إلھِی وَسَیِّدِی وَکَمْ مِنْ عَبْدٍ

والوں اور اپنے احسانوں کے یاد کرنے والوں میں قرار دے میرے معبود اور میرے آقا بہت سے بندے ایسے ہیںجو

ٲَمْسی وَٲَصْبَحَ فَقِیراً عائِلاً عارِیاً مُمْلِقاً مُخْفِقاً مَھْجُوراً جائِعاً

صبح و شام کرتے ہیںجبکہ وہ محتاج بے خرچ بے لباس بے نوا سرنگوں گوشہ نشیں خالی پیٹ

ظَمْآناً، یَنْتَظِرُ مَنْ یَعُودُ عَلَیْہِ بِفَضْلٍ، ٲَوْ عَبْدٍ وَجِیہٍ عِنْدَکَ ھُوَ ٲَوْجَہُ

اورپیاسے ہیںوہ دیکھتے ہیںکہ کون آتا ہے جو ہمیں خیرات دے یا ایسا آبرومند بندہ جو تیرے ہاںمجھ سے زیادہ

مِنِّی عِنْدَکَ وَٲَشَدُّ عِبادَۃً لَکَ، مَغْلُولاً مَقْھُوراً قَدْ حُمِّلَ ثِقْلاً مِنْ تَعَبِ

عزت دار ہے اور تیری عبادت و فرمانبرداری میںبڑھا ہؤا ہے وہ حقارت کی قید میںہے اس نے تکلیفوں کا بوجھ کندھوں

الْعَنائِ، وَشِدَّۃِ الْعُبُودِیَّۃِ، وَکُلْفَۃِ الرِّقِّ، وَثِقْلِ الضَّرِیبَۃِ، ٲَوْ مُبْتَلیً بِبَلائٍ

پر اٹھا رکھا ہے ا ور غلامی کی سختی اور بندگی کی تکلیف اور تلوار کا زخم کھائے ہوئے یا بڑی مصیبت میں گرفتار

شَدِیدٍ لاَ قِبَلَ لَہُ إلاَّ بِمَنِّکَ عَلَیْہِ، وَٲَ نَا الْمَخْدُومُ الْمُنَعَّمُ الْمُعافَی

ہے کہ جن کو سہہ نہیںسکتا سوائے اس مدد کے جو تو کرے اور مجھے خدمتگار نعمتیں عافیت اور عزت

الْمُکَرَّمُ فِی عافِیَۃٍ مِمَّا ھُوَ فِیہِ فَلَکَ الْحَمْدُ عَلی ذلِکَ کُلِّہِ مِنْ مُقْتَدِرٍ

حاصل ہے میںان چیزوں سے امان میں ہوںپس حمد تیرے ہی لیے ہے ان تمام عنایتوں پر کہ تو وہ توانا ہے

لاَ یُغْلَبُ، وَذِی ٲَناۃٍ لاَ یَعْجَلُ، صَلِّ عَلی مُحَمَّدٍ وَآلِ مُحَمَّدٍ وَاجْعَلْنِی

جسے شکست نہیںہوتی اور تو وہ بردبار ہے جو جلدی نہیںکرتا محمد(ص) و آل محمد(ع) پر رحمت نازل فرما اور مجھے اپنی

<

لِنَعْمائِکَ مِنَ الشَّاکِرِینَ، وَلاَِلائِکَ مِنَ الذَّاکِرِینَ ۔ إلھِی وَسَیِّدِی وَکَمْ

نعمتوںکا شکر کرنے والوں اور اپنے احسانوں کو یاد کرنے والوں میں قرار دے میرے معبود اور میرے مولا بہت سے ایسے بندے

مِنْ عَبْدٍ ٲَمْسَی وَٲَصْبَحَ عَلِیلاً مَرِیضاً سَقِیماً مُدْنِفاً عَلی فُرُشِ الْعِلَّۃِ

ہیںجنہوں نے صبح وشام کی جب کہ وہ علیل بیمار کمزور بدحال ہیں بستر علالت پر بیماروں کے لباس

وَفِی لِباسِہا یَتَقَلَّبُ یَمِیناً وَشِمالاً، لاَ یَعْرِفُ شَیْئاً مِنْ لَذَّۃِ الطَّعامِ وَلاَ

میں دائیں بائیں کروٹیں بدل رہے ہیں ان کو کھانے کی کسی چیز کا ذائقہ نصیب نہیںاور نہ پینے کی کوئی چیز

مِنْ لَذَّۃِ الشَّرابِ ، یَنْظُرُ إلی نَفْسِہِ حَسْرَۃً لاَ یَسْتَطِیعُ لَہا ضَرّاً وَلاَ

پی سکتے ہیںوہ اپنے آپ پرحسرت کی نظر ڈالتے ہیںکہ وہ خود کو کچھ فائدہ یا نقصان پہنچانے پر قادر نہیں

نَفْعاً، وَٲَ نَا خِلْوٌ مِنْ ذلِکَ کُلِّہِ بِجُودِکَ وَکَرَمِکَ فَلا إلہَ إلاَّ ٲَ نْتَ

اور میںان دکھوں سے امن میں ہوں یہ تیرا کرم اور تیری نوازش ہے پس تیرے سوا کوئی معبود نہیں

سُبْحانَکَ مِنْ مُقْتَدِرٍ لاَ یُغْلَبُ، وَذِی ٲَناۃٍ لاَ یَعْجَلُ، صَلِّ عَلی مُحَمَّدٍ

تو پاک ہے ایسا توانا ہے جسے شکست نہیںہوتی اور تو وہ بردبار ہے جو جلدی نہیں کرتا محمد(ص)

وَآلِ مُحَمَّدٍ وَاجْعَلْنِی لَکَ مِنَ الْعابِدِینَ، وَ لِنَعْمائِکَ مِنَ الشَّاکِرِینَ،

و آل محمد(ع) پر رحمت نازل فرما اور مجھے اپنے عبادت گذاروں سے اور اپنی نعمتوں کا شکر ادا کرنے والوں

وَلاَِلائِکَ مِنَ الذَّاکِرِینَ، وَارْحَمْنِی بِرَحْمَتِکَ یَا ٲَرْحَمَ الرَّاحِمِینَ ۔

اور اپنے احسانوں کے یاد کرنے والوں میں قرار دے اور اپنی مہربانی سے مجھ پر رحمت فرما اے سب سے زیادہ رحم کرنے والے

مَوْلایَ وَسَیِّدِی وَکَمْ مِنْ عَبْدٍ ٲَمْسی وَٲَصْبَحَ وَقَدْ دَنا یَوْمُہُ مِنْ

میرے مولا اور میرے آقا بہت سے بندے ہیں جنہوں نے صبح اور شام کی جبکہ ان کی موت کا وقت قریب

حَتْفِہِ، وَٲَحْدَقَ بِہِ مَلَکُ الْمَوْتِ فِی ٲَعْوانِہِ یُعالِجُ سَکَراتِ الْمَوْتِ

آگیا ہے اور فرشتہ اجل نے اپنے ساتھیوں سمیت انہیں گھیر رکھا ہے وہ موت کی غشیوں میں جان کنی کی سختیوں میں

وَحِیاضَہُ، تَدُورُ عَیْناہُ یَمِیناً وَشِمالاً یَنْظُرُ إلی ٲَحِبَّائِہِ وَٲَوِدَّائِہِ

پڑے ہیں وہ دائیں بائیں نظریں گھما گھما کر اپنے دوستوں مہربانوں اور ساتھیوں کو دیکھتے ہیں جبکہ وہ

وَٲَخِلاَّئِہِ، قَدْ مُنِعَ مِنَ الْکَلامِ، وَحُجِبَ عَنِ الْخِطابِ ، یَنْظُرُ إلی

بولنے سے قاصر اور گفتگو کرنے سے عاجز ہیں وہ اپنے آپ پر حسرت کی نگاہ ڈالتے ہیں

نَفْسِہِ حَسْرَۃً لاَ یَسْتَطِیعُ لَہا ضَرّاً وَلاَ نَفْعاً، وَٲَ نَا خِلْوٌ مِنْ ذلِکَ کُلِّہِ

جس کے نفع و نقصان پر قدرت نہیں رکھتے اور میں ان تمام مشکلوں سے محفوظ ہوں

بِجُودِکَ وَکَرَمِکَ فَلاَ إلہَ إلاَّ ٲَ نْتَ سُبْحانَکَ مِنْ مُقْتَدِرٍ لاَ یُغْلَبُ، وَذِی

یہ تیرا کرم اور احسان ہے پس تیرے سوا کوئی معبود نہیں تو پاک ہے ایسا توانا ہے جسے شکست نہیں ہوتی اور ایسا

ٲَناۃٍ لاَ یَعْجَلُ، صَلِّ عَلی مُحَمَّدٍ وَآلِ مُحَمَّدٍ وَاجْعَلْنِی لِنَعْمائِکَ مِنَ

بردبار ہے جو جلدی نہیں کرتا محمد(ص)و آل محمد(ع) پر رحمت نازل فرما اور مجھے اپنی نعمتوں کے شکر گزاروں

الشَّاکِرِینَ، وَلاَِلائِکَ مِنَ الذَّاکِرِینَ، وَارْحَمْنِی بِرَحْمَتِکَ یَا ٲَرْحَمَ

اور اپنے احسانوں کے یاد کرنے والوں میں سے قرار دے اور اپنی مہربانی سے مجھ پر رحمت فرما اے سب سے زیادہ

<

الرَّاحِمِینَ ۔ مَوْلایَ وَسَیِّدِی وَکَمْ مِنْ عَبْدٍ ٲَمْسی وَٲَصْبَحَ فِی

رحم کرنے والے میرے مولا اور میرے آقا بہت سے بندے ہیں جنہوں نے صبح اور شام کی جب وہ

مَضائِقِ الْحُبُوسِ وَالسُّجُونِ وَکُرَبِہا وَذُ لِّہا وَحَدِیدِہا یَتَداوَلُہُ

زندانوں اور قید خانوں کی تنگ کوٹھڑیوں میں تکلیفوں اور ذلتوں کے ساتھ بیڑیوں میں جکڑے ایک نگران سے

ٲَعْوانُہا وَزَبانِیَتُہا فَلا یَدْرِی ٲَیُّ حالٍ یُفْعَلُ بِہِ، وَٲَیُّ مُثْلَۃٍ یُمَثَّلُ بِہِ،

دوسرے سخت گیر نگران کے حوالے کیے جاتے ہیں پس نہیں جانتے کہ ان کا کیا حال ہوگا اور ان کا کون کون سا جوڑ کاٹا جائے گا

فَھُوَ فِی ضُرٍّ مِنَ الْعَیْشِ وَضَنْکٍ مِنَ الْحَیاۃِ یَنْظُرُ إلی نَفْسِہِ حَسْرَۃً لاَ

تو وہ گزرہ مشکل اور زندگی دشوار ہے۔ وہ اپنے آپ کو حسرت کی نگاہ سے دیکھتے ہیں کہ جس کے

یَسْتَطِیعُ لَہا ضَرّاً وَلاَ نَفْعاً، وَٲَ نَا خِلْوٌ مِنْ ذلِکَ کُلِّہِ بِجُودِکَ وَکَرمِکَ

نفع و نقصان پر اختیار نہیں رکھتے اور میں ان سب غموں سے آزاد ہوں یہ تیرا کرم اور احسان ہے

فَلاَ إلہَ إلاَّ ٲَ نْتَ سُبْحانَکَ مِنْ مُقْتَدِرٍ لاَ یُغْلَبُ، وَذِی ٲَناۃٍ لاَ یَعْجَلُ،

پس تیرے سوا کوئی معبود نہیں تو پاک ہے ایسا توانا ہے جسے شکست نہیںہوتی اور ایسا بردبار ہے جو جلدی نہیں کرتا

صَلِّ عَلی مُحَمَّدٍ وَآلِ مُحَمَّدٍ وَاجْعَلْنِی لَکَ مِنَ الْعابِدِینَ، وَ لِنَعْمائِکَ

محمد(ع) و آل محمد(ع) پر رحمت نازل فرما اور مجھے اپنے عبادت گزاروں اور اپنی نعمتوں کا

<

مِنَ الشَّاکِرِینَ، وَلاَِلائِکَ مِنَ الذَّاکِرِینَ، وَارْحَمْنِی بِرَحْمَتِکَ یَا

شکر ادا کرنے والوں اور اپنے احسانوں کے یاد کرنے والوں میں قرار دے اور اپنی مہربانی سے مجھ پر رحمت فرما اے

ٲَرْحَمَ الرَّاحِمِینَ ۔ سَیِّدِی وَمَوْلایَ وَکَمْ مِنْ عَبْدٍ ٲَمْسی وَٲَصْبَحَ قَدِ

سب سے زیادہ رحم کرنے والے میرے سردار اور میرے مولا بہت سے بندے ہیں جنہوں نے صبح اور شام کی جن پر

اسْتَمَرَّ عَلَیْہِ الْقَضائُ، وَٲَحْدَقَ بِہِ الْبَلائُ، وَفارَقَ ٲَوِدَّائَہُ وَٲَحِبَّائَہُ

قضا وارد ہوچکی ہے اور بلاؤں نے انہیں گھیرا ہؤا ہے اور وہ اپنے دوستوں مہربانوں اور ساتھیوں سے جدا ہیں

وَٲَخِلاَّئَہُ، وَٲَمْسی ٲَسِیراً حَقِیراً ذَلِیلاً فِی ٲَیْدِی الْکُفَّارِ وَالْاَعْدائِ

اور انہوں نے کافروں کے ہاتھوں قیدی ناپسندیدہ اور خوار ہوکر شام کی ہے اور دشمن ان کو

یَتَداوَلُونَہُ یَمِیناً وَشِمالاً قَدْ حُصِرَ فِی الْمَطامِیرِ، وَثُقِّلَ بِالْحَدِیدِ، لاَ

دائیں بائیں کھینچتے ہیں جب کہ وہ کال کوٹھڑیوں میں بند ہیں اور بیڑیاںلگی ہوئی وہ زمین پر پھیلنے

یَری شَیْئاً مِنْ ضِیائِ الدُّنْیا وَلاَ مِنْ رَوْحِہا، یَنْظُرُ إلی نَفْسِہِ حَسْرَۃً لاَ

والے اجالے کو نہیں دیکھ پاتے اور نہ کوئی خوشبو سونگھتے ہیں وہ اپنے آپ کو حسرت سے دیکھتے ہیں کہ جس کے

یَسْتَطِیعُ لَہا ضَرّاً وَلاَ نَفْعاً، وَٲَ نَا خِلْوٌ مِنْ ذلِکَ کُلِّہِ بِجُودِکَ وَکَرمِکَ

نفع و نقصان پر وہ کچھ بھی اختیار نہیںرکھتے اور میں ان سب تنگیوں سے امن میں ہوں یہ تیرا کرم اور احسان ہے

فَلاَ إلہَ إلاَّ ٲَ نْتَ سُبْحانَکَ مِنْ مُقْتَدِرٍ لاَ یُغْلَبُ، وَذِی ٲَناۃٍ لاَ یَعْجَلُ،

پس تیرے سوا کوئی معبود نہیں تو پاک ہے ایسا توانا ہے جسے شکست نہیں ہوتی اور ایسا بردبار ہے جو جلدی نہیں کرتا

صَلِّ عَلی مُحَمَّدٍ وَآلِ مُحَمَّدٍ وَاجْعَلْنِی لَکَ مِنَ الْعابِدِینَ، وَ لِنَعْمائِکَ

محمد(ص) و آل محمد(ع) پر رحمت نازل فرما اور مجھے اپنے عبادت گذاروں اور اپنی نعمتوں کاشکر ادا کرنے والوں اور

مِنَ الشَّاکِرِینَ، وَلاَِلائِکَ مِنَ الذَّاکِرِینَ، وَارْحَمْنِی بِرَحْمَتِکَ یَا ٲَرْحَمَ الرَّاحِمِینَ

اپنے احسانوں کے یاد کرنے والوں میں قراردے اور اپنی مہربانی سے مجھ پر رحمت فرما ایسب سے زیادہ رحم کرنے والے

وَعِزَّتِکَ یَا کَرِیمُ لاَََطْلُبَنَّ مِمَّا لَدَیْکَ، وَلاََُلِحَّنَّ عَلَیْکَ، وَلاَََمُدَّنَّ یَدِی نَحْوَکَ

واسطہ ہے تیری عزت کا اے کریم کہ میں وہ طلب کرتا ہوں جو تیرے پاس ہے اور باربارمانگتا ہوں اور تیرے آگے ہاتھ پھیلاتا ہوں

مَعَ جُرْمِہا إلَیْکَ یَا رَبِّ فَبِمَنْ ٲَعُوذُ وَبِمَنْ ٲَلُوذُ لاَ ٲَحَدَ لِی إلاَّ ٲَ نْتَ،

اگرچہ یہ تیرے ہاں مجرم ہے اے پروردگار پھر کس کی پناہ لوں اور کس سے عرض کروں سوائے تیرے میرا کوئی نہیں کیا تو مجھے ہنکا دے گا

ٲَفَتَرُدَّنِی وَٲَ نْتَ مُعَوَّلِی وَعَلَیْکَ مُتَّکَلِی ٲَسْٲَ لُکَ بِاسْمِکَ الَّذی وَضَعْتَہُ عَلَی

جب کہ تو ہی میرا تکیہ ہے اور تجھی پر میرابھروسہ ہے میںتیرے اس نام کے ذریعے سوال کرتا ہوں جسے تو نے آسمانوں پر رکھا

السَّمائِ فَاسْتَقَلَّتْ وَعَلَی الْاَرْضِ فَاسْتَقَرَّتْ وَعَلَی الْجِبالِ فَرَسَتْ وَعَلَی اللَّیْلِ

تو وہ مستقل ہوگئے اور زمین پر رکھا تو قائم ہوگئی اور پہاڑوں پر رکھا تو وہ اپنی جگہ جم گئے اور رات پر رکھا تو

فَٲَظْلَمَ وَعَلَی النَّہارِ فَاسْتَنارَ، ٲَنْ تُصَلِّیَ عَلی مُحَمَّدٍ وَآلِ مُحَمَّدٍ وَٲَنْ تَقْضِیَ لِی

وہ کالی ہوگئی اور دن پر رکھا تو وہ چمک اٹھا ہاں تومحمد(ص) وآل محمد(ص)پر رحمت نازل فرما اور میری تمام حاجتیں

حَوائِجِی کُلَّہا وَتَغْفِرَ لِی ذُنُوبِی کُلَّہا صَغِیرَہا وَکَبِیرَہا وَتُوَسِّعَ عَلَیَّ مِنَ الرِّزْقِ

پوری کردے اور میرے سبھی گناہ معاف فرمادے چھوٹے بھی اوربڑے بھی اور میرے رزق میں فراخی فرما

ما تُبَلِّغُنِی بِہِ شَرَفَ الدُّنْیا وَالاَْخِرَۃِ یَا ٲَرْحَمَ الرَّاحِمِینَ مَوْلایَ بِکَ اسْتَعَنْتُ

کہ جس سے مجھے دنیا اور آخرت میں عزت حاصل ہو اے سب سے زیادہ رحم کرنے والے میرے مولا میں تجھی سے مدد مانگتا ہوں

فَصَلِّ عَلی مُحَمَّدٍ وَآلِ مُحَمَّدٍ وَٲَعِنِّی وَبِکَ اسْتَجَرْتُ فَٲَجِرْنِی وَٲَغْنِنِی

پس محمد(ص) و آل محمد(ع) پر رحمت نازل فرما اور میری مدد کر میں تیری پناہ لیتا ہوں پس مجھے پناہ دے اور اپنی اطاعت کے ذریعے مجھے اپنے

بِطاعَتِکَ عَنْ طاعَۃِ عِبادِکَ وَبِمَسْٲَلَتِکَ عَنْ مَسْٲَلَۃِ خَلْقِکَ وَانْقُلْنِی مِنْ ذُلِّ الْفَقْرِ

بندوں کی اطاعت سے بے نیاز کردے اپنا سوالی بناکر لوگوں کا سوالی بننے سے بچالے اور فقر کی ذلت سے نکال کر بے نیازی کی

إلی عِزِّ الْغِنیٰ وَمِنْ ذُلِّ الْمَعاصِی إلی عِزِّ الطَّاعَۃِ فَقَدْ فَضَّلْتَنِی عَلی کَثِیرٍ مِنْ

عزت دے اور نافرمانی کی ذلت کے بجائے فرمانبرداری کی عزت دے تو نے مجھے اپنے کثیر بندوں پر جو بڑائی دی ہے وہ محض تیرا

خَلْقِکَ جُوداً مِنْکَ وَکَرَماً لاَ بِاسْتِحْقاقٍ مِنِّی إلھِی فَلَکَ الْحَمْدُ عَلی ذلِکَ کُلِّہِ صَلِّ عَلی

فضل و کرم ہے نہ یہ کہ میں اس کا حقدار ہوں اے معبود تیرے ہی لیے حمد ہے کہ تو نے یہ مہربانیاں فرمائیں محمد(ص) و آل محمد(ع) پر

مُحَمَّدٍ وَآلِ مُحَمَّدٍ وَاجْعَلْنِی لِنَعْمائِکَ مِنَ الشَّاکِرِینَ، وَلاَِلائِکَ مِنَ الذَّاکِرِینَ۔

رحمت نازل فرما اور مجھے اپنی نعمتوں کے شکرگذاروں اور اپنے احسانوں کو یاد کرنے والوں میں قرار دے

پھر سجدہ میں جائے اور کہے: سَجَدَ وَجْھِیَ الذَّلِیلُ لِوَجْھِکَ الْعَزِیزِ الْجَلِیلِ، سَجَدَ وَجْھِیَ

میرے کمتر چہرے نے تیری ذات عزیز و جلیل کو سجدہ کیا میرے فانی و پست

الْبالِي الْفانِی لِوَجْھِکَ الدَّائِمِ الْباقِی، سَجَدَ وَجْھِیَ الْفَقِیرُ لِوَجْھِکَ الْغَنِيِّ

چہرے نے تیری ہمیشہ قائم رہنے والی ذات کو سجدہ کیا میرے محتاج چہرے نے تیری بے نیاز

الْکَبِیرِ، سَجَدَ وَجْھِی وَسَمْعِی وَبَصَرِی وَلَحْمِی وَدَمِی وَجِلْدِی

و بلند ذات کو سجدہ کیا میرے چہرے کان آنکھ گوشت خون چمڑے

وَعَظْمِی وَما ٲَقَلَّتِ الْاَرْضُ مِنِّی لِلّٰہِِ رَبِّ الْعالَمِینَ ۔ اَللّٰھُمَّ عُدْ عَلی

اور ہڈی نے اور میرا جو کچھ روئے زمین پر ہے اس نے عالمین کے رب کو سجدہ کیا خدایا میری جہالت کو

جَھْلِی بِحِلْمِکَ، وَعَلی فَقْرِی بِغِناکَ، وَعَلی ذُ لِّی بِعِزِّکَ وَسُلْطانِکَ،

بردباری سے ڈھانپ لے میری محتاجی پر اپنی دولت برسادے میری پستی کو اپنی بلندی و اختیار سے دور فرما

وَعَلی ضَعْفِی بِقُوَّتِکَ، وَعَلی خَوْفِی بِٲَمْنِکَ، وَعَلی ذُ نُوبِی

اور میری کمزوری کو اپنی قوت سے دور کردے اور میرے خوف کو اپنے امن سے مٹادے اور میری خطاؤں

وَخَطایایَ بِعَفْوِکَ وَرَحْمَتِکَ یَا رَحْمنُ یَا رَحِیمُ ۔ اَللّٰھُمَّ إنِّی ٲَدْرَٲُ بِکَ

اور گناہوں کو اپنی رحمت سے بخش دے اے رحم والے اے مہربان اے اللہ میں تیری پناہ لیتا

فِی نَحْرِ فُلانِ بْنِ فُلان، وَٲَعُوذُ بِکَ مِنْ شَرِّھِ فَاکْفِنِیہِ بِما کَفَیْتَ بِہِ

ہوں فلاں بن فلاں کے حملوں سے اور اس کے شر سے تیری پناہ چاہتا ہوں پس اس سے میری کفایت کر جیسے اپنے

ٲَنْبِیائَکَ وَٲَوْ لِیائَکَ مِنْ خَلْقِکَ وَصالِحِی عِبادِکَ مِنْ فَراعِنَۃِ خَلْقِکَ،

انبیائ کی اور اولیائ کی اپنی مخلوق سے اپنے نیک بندوں کی کفایت فرمائی اپنی مخلوق میںسے سرکشوں

وَطُغاۃِ عُداتِکَ، وَشَرِّ جَمِیعِ خَلْقِکَ، بِرَحْمَتِکَ یَا ٲَرْحَمَ الرّاحِمِینَ،

اور شریروں سے جو تیرے دشمن تھے اور ساری مخلوق کے شر سے اپنی رحمت کے ساتھ اے سب سے زیادہ رحم کرنے والے

إنَّکَ عَلی کُلِّ شَیْئٍ قَدِیرٌ، وَحَسْبُنَا اللّهُ وَنِعْمَ الْوَکِیلُ ۔

بے شک تو ہر چیز پر قادر ہے اور اللہ ہمارے لیے کا فی ہے جو بہترین کارساز ہے

دعائے سیفی صغیر یعنی دعائے قاموس

شیخ اجل ثقتہ الاسلام نوری(رح)نے صحیفہ علویہ ثانیہ میں دعا سیفی کا ذکر کیا ہے اور فرمایا ہے کہ طلسمات اور علم تسخیرکے ماہرین نے اس دعا کی عجیب و غریب شرح کی اور اسکے حیرت انگیز اثرات بیان کیے ہیں چونکہ میں ایسے لوگوں پر چنداں اعتماد نہیں کرتا لہذا میں نے انکے اقوال نقل نہیں کیے لیکن یہاں میں اصل دعا کو بطور تسامح اور چشم پوشی اور علمائے اعلام کی پیروی میں نقل کر رہاہوں اور وہ یہ ہے :

بِسْمِ اللّهِ الرَّحْمنِ الرَّحِیمِ

شروع خدا کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے

رَبِّ ٲَدْخِلْنِی فِی لُجَّۃِ بَحْرِ ٲَحَدِیَّتِکَ، وَطَمْطَامِ یَمِّ وَحْدانِیَّتِکَ،

خدایا مجھے اپنی یگانگی کے سمندر میں داخل فرما اور اپنی یکتائی کی

وَقَوِّنِی بِقُوَّۃِ سَطْوَۃِ سُلْطانِ فَرْدانِیَّتِکَ، حَتَّی ٲَخْرُجَ إلی فَضَائِ سَعَۃِ

موجوں میں وارد کردے اورمجھے اپنی سلطنتِ وحدانیت کے دبدبہ سے قوت عطا کر یہاں تک کہ میں تیری رحمت کی وسیع

رَحْمَتِکَ، وَفِی وَجْھِی لَمَعاتُ بَرْقِ الْقُرْبِ مِنْ آثارِ حِمایَتِکَ، مَھِیباً

فضائ میں جاپہنچوں اور میرے چہرے پر تیرے قرب کی روشنی کی کرنیں تیری حمایت کی نشانیاں بن جائیں

بِھَیْبَتِکَ، عَزِیزاً بِعِنایَتِکَ، مُتَجَلِّلاً مُکَرَّماً بِتَعْلِیمِکَ وَتَزْکِیَتِکَ، وَ

تیرے رعب سے مجھے رعب ملے تیری مہربانی سے معزز ہوجائوں تیری تعلیم وتربیت سے مجھے جلالت و کرامت حاصل ہو

ٲَلْبِسْنِی خِلَعَ الْعِزَّۃِ وَالْقَبُولِ، وَسَہِّلْ لِی مَناھِجَ الْوُصْلَۃِ وَالْوُصُولِ،

مجھے عزت وقبولیت کا لباس پہنا دے اور میرے لیے اپنے قرب و وصال کی راہیں آسان فرما دے

وَتَوِّجْنِی بِتاجِ الْکَرامَۃِ وَالْوَقارِ، وَٲَ لِّفْ بَیْنِی وَبَیْنَ ٲَحِبَّائِکَ فِی دارِ

میرے سر پر شان و شوکت کا تاج سجادے اور اس دنیا اور دوسری دنیا میں اپنے پیاروں اورمیرے درمیان

الدُّنْیا وَدارِ الْقَرارِ، وَارْزُقْنِی مِنْ نُورِ اسْمِکَ ھَیْبَۃً وَسَطْوَۃً تَنْقادُ لِیَ

الفت قائم کر دے اپنے نام کے نور سے مجھے ایسارعب ودبدبہ عطا فرما کہ لوگوں کے دل اور جانیں میری مطیع ہوں

الْقُلُوبُ وَالْاَرْواحُ، وَتَخْضَعُ لَدَیَّ النُّفُوسُ وَالْاَشْباحُ، یَا مَنْ ذَ لَّتْ

اور ان کے جسم اور نفوس میرے آگے جھکے رہیں اے وہ جس کے سامنے ظالم لوگ پست ہیں

لَہُ رِقابُ الْجَبابِرَۃِ، وَخَضَعَتْ لَدَیْہِ ٲَعْناقُ الْاَکاسِرَۃِ، لاَ مَلْجَٲَ وَلاَ

اور جس کے حضور بادشاہوں کی گردنیں جھکی ہوئی ہیں پناہ اور نجات نہیں

مَنْجیً مِنْکَ إلاَّ إلَیْکَ، وَلاَ إعانَۃَ إلاَّ بِکَ، وَلاَ اتِّکائَ إلاَّ عَلَیْکَ، ادْفَعْ

مگر تیری ہی جناب میں اور نہیں کوئی امداد مگر تیری طر ف سے نہیں کوئی تکیہ گاہ مگر تو ہی ہے

عَنِّی کَیْدَ الْحاسِدِینَ، وَظُلُماتِ شَرِّ الْمُعانِدِینَ، وَارْحَمْنِی تَحْتَ

مجھ سے حاسدوں کے فریب اور دشمنوں کے شر کے اندھیرے دور فرما اور پردہ ہائے عرش کے سائے میں جگہ دے

سُرادِقَاتِ عَرْشِکَ یَا ٲَکْرَمَ الْاَکْرَمِینَ، ٲَیِّدْ ظاھِرِی فِی تَحْصِیلِ

مجھ پر رحمت فرما اے سب سے زیادہ بزرگی والے میری کمر مضبوط فرما کہ میں تیری پسندیدہ

مَراضِیکَ، وَنَوِّرْ قَلْبِی وَسِرِّی بِالاطِّلاعِ عَلی مَناھِجِ مَساعِیکَ،

چیزیں حاصل کروں میرے قلب وروح کو روشن کر دے تاکہ میں تیرے لیے کوشش کرنے کی راہیں دیکھوں

إلھِی کَیْفَ ٲَصْدُرُ عَنْ بابِکَ بِخَیْبَۃٍ مِنْکَ، وَقَدْ وَرَدْتُہُ عَلی ثِقَۃٍ بِکَ

میرے معبود میں کس طرح تیرے دروازے سے مایوس ہو کر پلٹ جائوں جبکہ تجھ پر بھروسہ کر کے یہاں حاضر ہوا ہوں

وَکَیْفَ تُؤْیِسُنِی مِنْ عَطائِکَ وَقَدْ ٲَمَرْتَنِی بِدُعائِکَ وَھَا ٲَ نَا مُقْبِلٌ

اور تواپنی اطاعت سے مجھے کیسے مایوس کرے گا جب کہ تیرا حکم ہے کہ تجھے پکارا کروں اور اب میں تیرے حضور آن پڑا ہوں

عَلَیْکَ، مُلْتَجِیٌَ إلَیْکَ، باعِدْ بَیْنِی وَبَیْنَ ٲَعْدائِی کَما باعَدْتَ بَیْنَ

تجھ سے عرض کرتا ہوں کہ میرے اور میرے دشمنوں میں دوری کردے جیسے تو نے میرے دشمنوں میں دوری

ٲَعْدائِی، اخْتَطِفْ ٲَبْصارَھُمْ عَنِّی بِنُورِ قُدْسِکَ وَجَلالِ مَجْدِکَ، إنَّکَ

ڈالی میری طرف سے ان کی آنکھوں کو چندھیا دے اپنے پاکیزہ نور اور اپنی جلالت شان سے بے شک تو ہی

ٲَنْتَ اللّهُ الْمُعْطِی جَلائِلَ النِّعَمِ الْمُکَرَّمَۃِ لِمَنْ نَاجَاکَ بِلَطائِفِ

وہ اﷲ ہے جواپنے لطف وکرم سے اپنی عظیم نعمتیں اسے عطا فرماتا ہے جو چپکے چپکے تجھ سے

رَحْمَتِکَ، یَا حَیُّ یَا قَیُّومُ یَا ذَا الْجَلالِ وَالْاِکْرامِ ۔ وَصَلَّی اللّهُ عَلی

سوال کرتا ہے اے زندہ نگہبان اے جلالت و بزرگی کے مالک اور اے اﷲ ہمارے

سَیِّدِنا وَنَبِیِّنا مُحَمَّدٍ وَآلِہِ ٲَجْمَعِینَ الطَّیِّبِینَ الطَّاھِرِینَ ۔

سردار اور ہمارے نبی(ص) محمد(ص) اور ان کی ساری طاہر و اطہر آل پر رحمت فرما۔

 

 

 

فہرست مفاتیح الجنان

فہرست سورہ قرآنی

تعقیبات, دعائیں، مناجات

جمعرات اور جمعہ کے فضائل

جمعرات اور جمعہ کے فضائل
شب جمعہ کے اعمال
روز جمعہ کے اعمال
نماز رسول خدا ﷺ
نماز حضرت امیرالمومنین
نماز حضرت فاطمہ زہرا سلام اللہ علیہا
بی بی کی ایک اور نماز
نماز امام حسن
نماز امام حسین
نماز امام زین العابدین
نماز امام محمد باقر
نماز امام جعفر صادق
نماز امام موسیٰ کاظم
نماز امام علی رضا
نماز امام محمد تقی
نماز حضرت امام علی نقی
نماز امام حسن عسکری
نماز حضرت امام زمانہ (عج)
نماز حضرت جعفر طیار
زوال روز جمعہ کے اعمال
عصر روز جمعہ کے اعمال

تعین ایام ہفتہ برائے معصومین

بعض مشہور دعائیں

قرآنی آیات اور دعائیں

مناجات خمسہ عشرہ

ماہ رجب کی فضیلت اور اعمال

ماہ شعبان کی فضیلت واعمال

ماہ رمضان کے فضائل و اعمال

ماہ رمضان کے فضائل و اعمال
(پہلا مطلب)
ماہ رمضان کے مشترکہ اعمال
(پہلی قسم )
اعمال شب و روز ماہ رمضان
(دوسری قسم)
رمضان کی راتوں کے اعمال
دعائے افتتاح
(ادامہ دوسری قسم)
رمضان کی راتوں کے اعمال
(تیسری قسم )
رمضان میں سحری کے اعمال
دعائے ابو حمزہ ثمالی
دعا سحر یا عُدَتِیْ
دعا سحر یا مفزعی عند کربتی
(چوتھی قسم )
اعمال روزانہ ماہ رمضان
(دوسرا مطلب)
ماہ رمضان میں شب و روز کے مخصوص اعمال
اعمال شب اول ماہ رمضان
اعمال روز اول ماہ رمضان
اعمال شب ١٣ و ١٥ رمضان
فضیلت شب ١٧ رمضان
اعمال مشترکہ شب ہای قدر
اعمال مخصوص لیلۃ القدر
اکیسویں رمضان کی رات
رمضان کی ٢٣ ویں رات کی دعائے
رمضان کی ٢٧ویں رات کی دعا
رمضان کی٣٠ویں رات کی دعا

(خاتمہ )

رمضان کی راتوں کی نمازیں
رمضان کے دنوں کی دعائیں

ماہ شوال کے اعمال

ماہ ذیقعدہ کے اعمال

ماہ ذی الحجہ کے اعمال

اعمال ماہ محرم

دیگر ماہ کے اعمال

نوروز اور رومی مہینوں کے اعمال

باب زیارت اور مدینہ کی زیارات

مقدمہ آداب سفر
زیارت آئمہ کے آداب
حرم مطہر آئمہ کا اذن دخول
مدینہ منورہ کی زیارات
کیفیت زیارت رسول خدا ۖ
زیارت رسول خدا ۖ
کیفیت زیارت حضرت فاطمہ سلام اللہ علیہا
زیارت حضرت فاطمہ زہرا سلام اللہ علیہا
زیارت رسول خدا ۖ دور سے
وداع رسول خدا ۖ
زیارت معصومین روز جمعہ
صلواة رسول خدا بزبان حضرت علی
زیارت آئمہ بقیع
قصیدہ ازریہ
زیارت ابراہیم بن رسول خدا ۖ
زیارت فاطمہ بنت اسد
زیارت حضرت حمزہ
زیارت شہداء احد
تذکرہ مساجد مدینہ منورہ
زیارت وداع رسول خدا ۖ
وظائف زوار مدینہ

امیرالمومنین کی زیارت

فضیلت زیارت علی ـ
کیفیت زیارت علی
پہلی زیارت مطلقہ
نماز و زیارت آدم و نوح
حرم امیر المومنین میں ہر نماز کے بعد کی دعا
حرم امیر المومنین میں زیارت امام حسین ـ
زیارت امام حسین مسجد حنانہ
دوسری زیارت مطلقہ (امین اللہ)
تیسری زیارت مطلقہ
چوتھی زیارت مطلقہ
پانچویں زیارت مطلقہ
چھٹی زیارت مطلقہ
ساتویں زیارت مطلقہ
مسجد کوفہ میں امام سجاد کی نماز
امام سجاد اور زیارت امیر ـ
ذکر وداع امیرالمؤمنین
زیارات مخصوصہ امیرالمومنین
زیارت امیر ـ روز عید غدیر
دعائے بعد از زیارت امیر
زیارت امیر المومنین ـ یوم ولادت پیغمبر
امیر المومنین ـ نفس پیغمبر
ابیات قصیدہ ازریہ
زیارت امیر المومنین ـ شب و روز مبعث

کوفہ کی مساجد

امام حسین کی زیارت

فضیلت زیارت امام حسین
آداب زیارت امام حسین
اعمال حرم امام حسین
زیارت امام حسین و حضرت عباس
(پہلا مطلب )
زیارات مطلقہ امام حسین
پہلی زیارت مطلقہ
دوسری زیارت مطلقہ
تیسری زیارت مطلقہ
چوتھی زیارت مطلقہ
پانچویں زیارت مطلقہ
چھٹی زیارت مطلقہ
ساتویں زیارت مطلقہ
زیارت وارث کے زائد جملے
کتب حدیث میں نااہلوں کا تصرف
دوسرا مطلب
زیارت حضرت عباس
فضائل حضرت عباس
(تیسرا مطلب )
زیارات مخصوص امام حسین
پہلی زیارت یکم ، ١٥ رجب و ١٥شعبان
دوسری زیارت پندرہ رجب
تیسری زیارت ١٥ شعبان
چوتھی زیارت لیالی قدر
پانچویں زیارت عید الفطر و عید قربان
چھٹی زیارت روز عرفہ
کیفیت زیارت روز عرفہ
فضیلت زیارت یوم عاشورا
ساتویں زیارت یوم عاشورا
زیارت عاشورا کے بعد دعا علقمہ
فوائد زیارت عاشورا
دوسری زیارت عاشورہ (غیر معروفہ )
آٹھویں زیارت یوم اربعین
اوقات زیارت امام حسین
فوائد تربت امام حسین

کاظمین کی زیارت

زیارت امام رضا

سامرہ کی زیارت

زیارات جامعہ

چودہ معصومین پر صلوات

دیگر زیارات

ملحقات اول

ملحقات دوم

باقیات الصالحات

مقدمہ
شب وروز کے اعمال
شب وروز کے اعمال
اعمال مابین طلوعین
آداب بیت الخلاء
آداب وضو اور فضیلت مسواک
مسجد میں جاتے وقت کی دعا
مسجد میں داخل ہوتے وقت کی دعا
آداب نماز
آذان اقامت کے درمیان کی دعا
دعا تکبیرات
نماز بجا لانے کے آداب
فضائل تعقیبات
مشترکہ تعقیبات
فضیلت تسبیح بی بی زہرا
خاک شفاء کی تسبیح
ہر فریضہ نماز کے بعد دعا
دنیا وآخرت کی بھلائی کی دعا
نماز واجبہ کے بعد دعا
طلب بہشت اور ترک دوزخ کی دعا
نماز کے بعد آیات اور سور کی فضیلت
سور حمد، آیة الکرسی، آیة شہادت اورآیة ملک
فضیلت آیة الکرسی بعد از نماز
جو زیادہ اعمال بجا نہ لا سکتا ہو وہ یہ دعا پڑھے
فضیلت تسبیحات اربعہ
حاجت ملنے کی دعا
گناہوں سے معافی کی دعا
ہر نماز کے بعد دعا
قیامت میں رو سفید ہونے کی دعا
بیمار اور تنگدستی کیلئے دعا
ہر نماز کے بعد دعا
پنجگانہ نماز کے بعد دعا
ہر نماز کے بعد سور توحید کی تلاوت
گناہوں سے بخشش کی دعا
ہرنماز کے بعد گناہوں سے بخشش کی دعا
گذشتہ دن کا ضائع ثواب حاصل کرنے کی دعا
لمبی عمر کیلئے دعا
(تعقیبات مختصر)
نماز فجر کی مخصوص تعقیبات
گناہوں سے بخشش کی دعا
شیطان کے چال سے بچانے کی دعا
ناگوار امر سے بچانے والی دعا
بہت زیادہ اہمیت والی دعا
دعائے عافیت
تین مصیبتوں سے بچانے والی دعا
شر شیطان سے محفوظ رہنے کی دعا
رزق میں برکت کی دعا
قرضوں کی ادائیگی کی دعا
تنگدستی اور بیماری سے دوری کی دعا
خدا سے عہد کی دعا
جہنم کی آگ سے بچنے کی دعا
سجدہ شکر
کیفیت سجدہ شکر
طلوع غروب آفتاب کے درمیان کے اعمال
نماز ظہر وعصر کے آداب
غروب آفتاب سے سونے کے وقت تک
آداب نماز مغرب وعشاء
تعقیبات نماز مغرب وعشاء
سونے کے آداب
نیند سے بیداری اور نماز تہجد کی فضیلت
نماز تہجد کے بعددعائیں اور اذکار

صبح و شام کے اذکار و دعائیں

صبح و شام کے اذکار و دعائیں
طلوع آفتاب سے پہلے
طلوع وغروب آفتاب سے پہلے
شام کے وقت سو مرتبہ اﷲاکبر کہنے کی فضیلت
فضیلت تسبیحات اربعہ صبح شام
صبح شام یا شام کے بعد اس آیة کی فضیلت
ہر صبح شام میں پڑھنے والا ذکر
بیماری اور تنگدستی سے بچنے کیلئے دعا
طلوع وغروب آفتاب کے موقعہ پر دعا
صبح شام کی دعا
صبح شام بہت اہمیت والا ذکر
ہر صبح چار نعمتوں کو یاد کرنا
ستر بلائیں دور ہونے کی دعا
صبح کے وقت کی دعا
صبح صادق کے وقت کی دعا
مصیبتوں سے حفاظت کی دعا
اﷲ کا شکر بجا لانے کی دعا
شیطان سے محفوظ رہنے کی دعا
دن رات امان میں رہنے کی دعا
صبح شام کو پڑھنی کی دعا
بلاؤں سے محفوظ رہنے کی دعا
اہم حاجات بر لانے کی دعا

دن کی بعض ساعتوں میں دعائیں

پہلی ساعت
دوسری ساعت
تیسری ساعت
چوتھی ساعت
پانچویں ساعت
چھٹی ساعت
ساتویں ساعت
آٹھویں ساعت
نویں ساعت
دسویں ساعت
گیارہویں ساعت
بارہویں ساعت
ہر روز وشب کی دعا
جہنم سے بچانے والی دعا
گذشتہ اور آیندہ نعمتوں کا شکر بجا لانے کی دعا
نیکیوں کی کثرت اور گناہوں سے بخشش کی دعا
ستر قسم کی بلاؤں سے دوری کی دعا
فقر وغربت اور وحشت قبر سے امان کی دعا
اہم حاجات بر لانے والی دعا
خدا کی نعمتوں کا شکر ادا کرنے والی دعا
دعاؤں سے پاکیزگی کی دعا
فقر وفاقہ سے بچانے والی دعا
چار ہزار گناہ کیبرہ معاف ہو جانے کی دعا
کثرت سے نیکیاں ملنے اور شر شیطان سے محفوظ رہنے کی دعا
نگاہ رحمت الہی حاصل ہونے کی دعا
بہت زیادہ اجر ثواب کی دعا
عبادت اور خلوص نیت
کثرت علم ومال کی دعا
دنیاوی اور آخروی امور خدا کے سپرد کرنے کی دعا
بہشت میں اپنے مقام دیکھنے کی دعا

دیگر مستحبی نمازیں

نماز اعرابی
نماز ہدیہ
نماز وحشت
دوسری نماز وحشت
والدین کیلئے فرزند کی نماز
نماز گرسنہ
نماز حدیث نفس
نماز استخارہ ذات الرقاع
نماز ادا قرض وکفایت از ظلم حاکم
نماز حاجت
نماز حل مہمات
نماز رفع عسرت(پریشانی)
نماز اضافہ رزق
نماز دیگر اضافہ رزق
نماز دیگر اضافہ رزق
نماز حاجت
دیگر نماز حاجت
دیگر نماز حاجت
دیگر نماز حاجت
دیگر نماز حاجت
نماز استغاثہ
نماز استغاثہ بی بی فاطمہ
نماز حضرت حجت(عج)
دیگر نماز حضرت حجت(عج)
نماز خوف از ظالم
تیزی ذہن اور قوت حافظہ کی نماز
گناہوں سے بخشش کی نماز
نماز دیگر
نماز وصیت
نماز عفو
(ایام ہفتہ کی نمازیں)
ہفتہ کے دن کی نماز
اتوار کے دن کی نماز
پیر کے دن کی نماز
منگل کے دن کی نماز
بدھ کے دن کی نماز
جمعرات کے دن کی نماز
جمعہ کے دن کی نماز

بیماریوں کی دعائیں اور تعویذات

بیماریوں کی دعائیں اور تعویذات
دعائے عافیت
رفع مرض کی دعا
رفع مرض کی ایک اوردعا
سر اور کان درد کا تعویذ
سر درد کا تعویذ
درد شقیقہ کا تعویذ
بہرے پن کا تعویذ
منہ کے درد کا تعویذ
دانتوں کے درد کا تعویذ
دانتوں کے درد کا تعویذ
دانتوں کے درد کا ایک مجرب تعویذ
دانتوں کے درد کا ایک اور تعویذ
درد سینے کا تعویذ
پیٹ درد کا تعویذ
درد قولنج کا تعویذ
پیٹ اور قولنج کے درد کا تعویذ
دھدر کا تعویذ
بدن کے ورم و سوجن کا تعویذ
وضع حمل میں آسانی کا تعویذ
جماع نہ کر سکنے والے کا تعویذ
بخار کا تعویذ
پیچش دور کرنے کی دعا
پیٹ کی ہوا کیلئے دعا
برص کیلئے دعا
بادی وخونی خارش اور پھوڑوں کا تعویذ
شرمگاہ کے درد کی دعا
پاؤں کے درد کا تعویذ
گھٹنے کے درد
پنڈلی کے درد
آنکھ کے درد
نکسیر کا پھوٹن
جادو کے توڑ کا تعویذ
مرگی کا تعویذ
تعویذسنگ باری جنات
جنات کے شر سے بچاؤ
نظر بد کا تعویذ
نظر بد کا ایک اور تعویذ
نظر بد سے بچنے کا تعویذ
جانوروں کا نظر بد سے بچاؤ
شیطانی وسوسے دور کرنے کا تعویذ
چور سے بچنے کا تعویذ
بچھو سے بچنے کا تعویذ
سانپ اور بچھو سے بچنے کا تعویذ
بچھو سے بچنے کا تعویذ

کتاب الکافی سے منتخب دعائیں

سونے اور جاگنے کی دعائیں

گھر سے نکلتے وقت کی دعائیں

نماز سے پہلے اور بعد کی دعائیں

وسعت رزق کیلئے بعض دعائیں

ادائے قرض کیلئے دعائیں

غم ،اندیشہ و خوف کے لیے دعائیں

بیماریوں کیلئے چند دعائیں

چند حرز و تعویذات کا ذکر

دنیا وآخرت کی حاجات کیلئے دعائیں

بعض حرز اور مختصر دعائیں

حاجات طلب کرنے کی مناجاتیں

بعض سورتوں اور آیتوں کے خواص

خواص با سور قرآنی
خواص بعض آیات سورہ بقرہ وآیة الکرسی
خواص سورہ قدر
خواص سورہ اخلاص وکافرون
خواص آیة الکرسی اورتوحید
خواص سورہ توحید
خواص سورہ تکاثر
خواص سورہ حمد
خواص سورہ فلق و ناس اور سو مرتبہ سورہ توحید
خواص بسم اﷲ اور سورہ توحید
آگ میں جلنے اور پانی میں ڈوبنے سے محفوظ رہنے کی دعا
سرکش گھوڑے کے رام کی دعا
درندوں کی سر زمین میں ان سے محفوظ رہنے کی دعا
تلاش گمشدہ کا دستور العمل
غلام کی واپسی کیلئے دعا
چور سے بچنے کیلئے دعا
خواص سورہ زلزال
خواص سورہ ملک
خواص آیہ الا الی اﷲ تصیر الامور
رمضان کی دوسرے عشرے میں اعمال قرآن
خواب میں اولیاء الہی اور رشتے داروں سے ملاقات کا دستور العمل
اپنے اندر سے غمزدہ حالت کو دور کرنے کا دستور العمل
اپنے مدعا کو خواب میں دیکھنے کا دستور العمل
سونے کے وقت کے اعمال
دعا مطالعہ
ادائے قرض کا دستور العمل
تنگی نفس اور کھانسی دور کرنے کا دستور العمل
رفع زردی صورت اور ورم کیلئے دستور العمل
صاحب بلا ومصیبت کو دیکھتے وقت کا ذکر
زوجہ کے حاملہ ہونے کے وقت بیٹے کی تمنا کیلئے عمل
دعا عقیقہ
آداب عقیقہ
دعائے ختنہ
استخارہ قرآن مجید اور تسبیح کا دستور العمل
یہودی عیسائی اور مجوسی کو دیکھتے وقت کی دعا
انیس کلمات دعا جو مصیبتوں سے دور ہونے کا سبب ہیں
بسم اﷲ کو دروزے پر لکھنے کی فضیلت
صبح شام بلا وں سے تحفظ کی دعا
دعائے زمانہ غیبت امام العصر(عج)
سونے سے پہلے کی دعا
پوشیدہ چیز کی حفاظت کیلئے دستور العمل
پتھر توڑنے کا قرآنی عمل
سوتے اور بیداری کے وقت سورہ توحید کی تلاوت خواص
زراعت کی حفاظت کیلئے دستور العمل
عقیق کی انگوٹھی کی فضیلت
نیسان کے دور ہونے جانے کی دعا
نماز میں بہت زیادہ نیسان ہونے کی دعا
قوت حافظہ کی دوا اور دعا
دعاء تمجید اور ثناء پرودرگار

موت کے آداب اور چند دعائیں

ملحقات باقیات الصالحات

ملحقات باقیات الصالحات
دعائے مختصراورمفید
دعائے دوری ہر رنج وخوف
بیماری اور تکلیفوں کو دور کرنے کی دعا
بدن پر نکلنے والے چھالے دور کرنے کی دعا
خنازیر (ہجیروں )کو ختم کرنے کیلئے ورد
کمر درد دور کرنے کیلئے دعا
درد ناف دور کرنے کیلئے دعا
ہر درد دور کرنے کا تعویذ
درد مقعد دور کرنے کا عمل
درد شکم قولنج اور دوسرے دردوں کیلئے دعا
رنج وغم میں گھیرے ہوے شخص کا دستور العمل
دعائے خلاصی قید وزندان
دعائے فرج
نماز وتر کی دعا
دعائے حزین
زیادتی علم وفہم کی دعا
قرب الہی کی دعا
دعاء اسرار قدسیہ
شب زفاف کی نماز اور دعا
دعائے رہبہ (خوف خدا)
دعائے توبہ منقول از امام سجاد