Danishkadah Danishkadah Danishkadah
حضرت امام علی نے فرمایا، اے بازار والو! قسمیں کھانے میں خدا سے ڈرتے رہو، کیونکہ قسمیں کھانے سے مال ناکارہ ہوجاتا ہے، برکت اُٹھ جاتی ہے، تاجر فاجر بن جاتا ہے، مگر یہ کہ جو حق کے ساتھ لین دین کرے۔ کنزالعمال حدیث 10043

نہج البلاغہ خطبات

خطبہ 75: بنی امیہ کے متعلق فرمایا

بنی امیہ مجھے محمد (ص) کا ورثہ تھوڑا تھوڑا کر کے دیتے ہیں ۔ خدا کی قسم ! اگر میں زندہ رہا، تو انہین اس طرح جھار پھینکوں گا، جس طرح قصائی خاک آلودہ گوشت کے ٹکڑے سے مٹی جھاڑ دیتا ہے ۔

علامہ رضی فرماتے ہیں کہ ایک روایت میں ہے ، الوذام التربة خاک آلودہ گوشت کے ٹکڑے کے بجائے التراب الوذمہ (مٹی جو گوشت کے ٹکڑے میں بھر گئی ہو) آیا ہے ، یعنی صفت کی جگہ موصوف اور موصوف کی جگہ صفت رکھ دی گئی ہے اور لیفو قوننی سے حضرت کی مراد یہ ہے کہ وہ مجھے تھوڑا تھوڑا کر کے دیتے ہیں ۔ جس طرح اونٹنی کو ذرا سادہ لیا جائے ، اور پھر تھنوں کو اس کے بچے کے منہ سے لگا دیا جائے تاکہ وہ دوہے جانے کے لئے تیار ہو جائے ۔ اور وذام وذمہ کی جمع ہے جس کے معنی اوجھری یا جگر کے ٹکڑے کے ہیں جو مٹی میں گرپڑے، اور پھر مٹی اس سے جھاڑ دی جائے۔