Danishkadah Danishkadah Danishkadah
حضرت امام امام مہدی نے فرمایا، میں خدا کی زمین میں بقیۃ اللہ اور اس کے دشمنوں سے انتقام لینے والا ہوں بحارالانوار ابواب النصوص من اللہ تعالیٰ باب18 حدیث16

نہج البلاغہ خطبات

خدا وند عالم کو ایک حالت دوسری حالت سے سدّراہ نہیں ہوتی نہ زمانہ اس میں تبدیلی پید اکر تا ہے ،نہ کوئی جگہ اسے گھیرتی ہے اور نہ زبان اس کا وصف کر سکتی ہے اس سے پانی کے قطروں اور آسمان کے ستارو ں اور ہوا کے جھکڑوں کا شمار چکنے پتھر پر چیونٹی کے چلنے کی آواز اور اندھیری رات میں چھو ٹی چیونٹیوں کے قیام کرنے کی جگہ کوئی پو شیدہ نہیں ہے۔و ہ پتوں کے گرنے کی جگہوں اور آنکھ چوری چھپے اشاروں کو جانتا ہے ،میں گواہی دیتا ہوں کے اللہ کے علاوہ کوئی معبود نہیں نہ اس کا کوئی ہمسر ہے نہ اس کی ہستی میں کوئی شبہ نہ اس کے دین سے سرتابی ہو سکتی ہے اور نہ اس کی آفرنیش سے انکار ،اس شخص کی سی گواہی جس کی نیت سچی،باطن پاکیزہ ،یقین (شبہوں سے )پاک اور (اس کے نیک اعمال )کا پلہ بھاری ہو اور گواہی دیتا ہوں کہ محمداس کے عبد اور رسول ہیں اور مخلوقات میں منتخب بیان شریعت کے لےے برگزیدہ گراں بہا بزرگیوں سے مخصوص ،اور عمدہ پیغاموں (کے پہنچانے)کے لےے منتخب ہیں ۔آپ کے ذریعے سے ہدایت کے نشانات روشن کئے گئے اور گمراہی کی تیرگیوں کو پھانٹا گیا ۔

اے لوگو! جو شخص دنیا کی آرزوئیں کرتا ہے۔اور ا س کی جانب کھنچتا ہے وہ اسے انجام کار ،فریب دیتی ہے اور جو اس کا خواہشمند ہوتا ہے اس سے بخل نہیں کرتی اور جو اس پر چھا جاتا ہے وہ اس پر قابو پالے گی ۔

خدا کی قسم! جن لوگو ں کے پاس زندگی کی ترو تازہ و شاداب نعمتیں تھیں او ر پھر ان کے ہا تھو ں سے نکل گئیں یہ ان کے گناہوں کے مرتکب ہو نے کی پاداش ہے ۔کیونکہ اللہ تو کسی پر ظلم نہیں کرتا اگر لوگ اس وقت کہ جب ان پر مصیبتیں ٹوٹ رہی ہوں اور نعمتیں ان سے زائل ہو رہی ہوں ۔صدق نیت ورجوع قلب سے اپنے اللہ کی طرف متوجہہو ں تو وہ برگشتہ ہوجانے والی نعمتوں کو پھر ان کی طرف پلٹا دے گااور ہر خرابی کی اصلاح کر دے گا ۔مجھے تم سے یہ اندیشہ ہے کہ کہیں تم جہالت و نادانی میں نہ پڑ جاؤ ۔کچھ واقعات ایسے ہوگزرے ہیں کہ جن میں تم نے نامناسب جذبات سے کام لیا ۔میرے نزدیک تم ان میں سراہنے کے قابل نہیں ہو ۔اگر تمہیں پہلی روش پر پھر لگا دیا جائے تو تم یقینا نیک بخت و سعاد ت مند بن جاؤگے۔میرا کام تو صرف کوشش کرنا ہے ۔اگر میں کچھ کہنا چاہوں تو البتہ یہی کہوں گا کہ خدا( تمہاری) گزشتہ لغزشوں سے درگزر کرے۔

خطبہ 176: خداوند عالم کی توصیف ،دُنیا کی بے ثباتی اور زوال نعمت کے اسباب