حقیقت ِشیطان

سوال ۸۸: ۔ شیطان جن تھا یا فرشتہ؟ اگر جن تھا تو کس طرح حضرت آدم ؑ کو ملائکہ کے سجدے کے وقت حاضر تھا؟
قرآنِ کریم فرماتا ہے کہ ہم نے فرشتوں کو حکم دیا کہ آدم کو سجدہ کریں اورسوائے ابلیس کے سب نے سجدہ کیا۔
وَإِذْ قُلْنَا لِلْمَلَائِکَۃِ اسْجُدُوا لِآدَمَ فَسَجَدُوا إِلَّا إِبْلِیْسَ کَانَ مِنَ الْجِنِّ فَفَسَقَ عَنْ أَمْرِ رَبِّہِ(ا)
اور (یہ بات بھی) یاد کریں جب ہم نے فرشتوں سے کہا: آدم کو سجدہ کرو تو سب نے سجدہ کیا سوائے ابلیس کے،وہ جنات میں سے تھا،پس وہ اپنے رب کی اطاعت سے خارج ہوگیا۔
اس آیت کا ظاہر یہ ہے کہ ابلیس فرشتوں میں سے ہے لیکن چند دلائل سے معلوم ہوتا ہے کہ فرشتوں میں سے نہیں تھا۔
۱۔ قرآن کریم صریحی طور پر فرماتا ہے، شیطان جن کی نوع سے تھا اور خدا کی راہ و رسم زندگی سے خارج تھا، فسق یعنی راہ سے انحراف، دوسری جگہ پر خدا فرماتا ہے:۔
وَالْجَآنَّ خَلَقْنَاہُ مِن قَبْلُ مِن نَّارِ السَّمُومِ(۲)
ہم نے جن کو آگ سے پیدا کیا ہے
اور دوسری جگہ فرمایا:
أَنَاْ خَیْْرٌ مِّنْہُ خَلَقْتَنِیْ مِن نَّارٍ وَخَلَقْتَہُ مِن طِیْنٍ(۳)
شیطان نے کہا کہ میں انسان سے بہتر ہوں چونکہ تو نے مجھے آگ سے پیدا کیا ہے اور اسے مٹی سے۔
یہ سب باتیں بتاتی ہیں کہ شیطان جن ہے اور آگ سے پیدا ہوا ہے۔
۲۔ قرآن کریم فرشتوں کے بارے میں فرماتا ہے۔
لَا یَعْصُونَ اللَّہَ مَا أَمَرَہُمْ (۴)
جو فرشتے اللہ کے حکم کی نافرمانی نہیں کرتے۔
وہ فرشتے جو حریم جہنم کی حفاظت کرتے ہیں نافرمان نہیں،چہ جائیکہ وہ فرشتے جو
حریمِ بہشت کی پاسبانی کرتے ہیں یا فرشتگانِ عرشِ الٰہی، پس فرشتہ گناہ نہیں کرتا اور شیطان فرشتہ نہیں تھا، یہ پہلی بات کا جواب۔
لیکن دوسرے حصے کا جواب کہ کس طرح شیطان جو کہ جنوں جنس میں سے تھا، سجدۂ ملائکہ کے واقعہ میں حاضر تھا، کہنا چاہیے کہ یہ جو قرآن کہتا ہے۔
قُلْنَا لِلْمَلاَئِکَۃِ اسْجُدُواْ لآدَمَ فَسَجَدُواْ إِلاَّ إِبْلِیْس (۵)
اور(اس وقت کو یاد کرو) جب ہم نے فرشتوں سے کہا: آدم کو سجدہ کرو تو ان سب نے سجدہ کیا سوائے ابلیس کے۔
یہ علامت تغلیب ہے یعنی اگر ایک گروہ کے سو آدمی ایک جگہ پر ہوں لیکن ان کے گروہ میں ایک غیر آدمی ہو مثلاً ننانوے (۹۹) طالبِ علم ہوں اور ایک غیر طالبِ علم، تو جب ہم پکارتے ہیں تو کہتے ہیں، طالب علمو آئو وہ ایک آدمی بھی ان طلبہ میں بلایا جائے گا، یہ محاورات میں یہ کثیر کا قلیل پر غلبہ رائج ہے، شیطان نے اس قدر عبادت کی تھی کہ فرشتوں کے ہمراہ ہو گیا تھا نہ کہ فرشتہ تھا۔

(حوالہ جات)
(ا) سورہ کہف آیت ۵۰
(۲) سورہ حجر آیت ۲۷
(۳) سورہ اعراف آیت ۱۲
(۴) سورہ تحریم آیت۶
(۵) سورہ بقرہ آیت ۳۴