Danishkadah Danishkadah Danishkadah
حضرت امام علی نے فرمایا، جو شخص توبہ کے بارے میں ٹال مٹول سے کام لے، وہ اپنے آپ کو دھوکے میں رکھتا ہے، (پھر)اُس پر موت کے اچانک حملے کا خطرہ زیادہ ہوتا ہے۔ غررالحکم حدیث 3791

نہج البلاغہ خطبات

خطبہ 43: جب آپ کے ساتھیوں نے جنگ کی تیاری کے لیے کہا تو آپ (ع) نے فرمایا

جب امیرالمومنین نے جریر ابن عبداللہ بجلی کو معاویہ کے پاس(بیعت لینے کے لیے) بھیجا تو آپ کے اصحاب نے آپ کو جنگ کی تیاری کا مشورہ دیا جس پر آپ نے فرمایا:۔

۱#جنگ کے لیئے مستعدو آمادہ ہونا جب کہ جریر ابھی وہیں ہے ۔ شام کا دروازہ بند کرنا ہے اور وہاں کے لوگ بیعت کا ارادہ بھی کریں ، تو انہیں اس ارادہٴ خیر سے روک دینا ہے بے شک میں نے جریر کے لئے ایک وقت مقرر کر دیا ہے ۔ اس کے بعد وہ ٹھہرے گا۔ تو یا ان سے قریب میں مبتلا ہو کر یا (عمداً)سرتابی کرتے ہوئے صحیح رائے کا تقاضا صبر و توقف ہے ۔ اس لئے ابھی ٹھہرے رہو۔ البتہ اس چیز کو میں تمہارے لئے بُرا نہیں سمجھتا کہ (دَر پردہ) جنگ کا سازو سامان کرتے رہو۔

میں نے اس امر کو اچھی طرح سے پرکھ لیا ہے اور اندر باہر سے دیکھ لیا ہے ۔ مجھے تو جنگ کے علاوہ کوئی چارہ نظر نہیں آتا ۔ یا یہ کہ رسول ﷺ کی دی ہوئی خبروں سے انکار کر دوں ۔ حقیقت یہ ہے (مجھ سے پہلے ) اس امت پر ایک ایسا حکمران تھا۔ جس نے دین میں بدعتیں پھیلائیں ، اور لوگوں کو زبانِ بعن کھولنے کا موقعہ دیا(پہلے تو ) لوگوں نے اسے اُسے زبانی کہا سنا، پھر اس پر بگڑے ، اور آخر سارا ڈھانچہ بدل دیا۔