Danishkadah Danishkadah Danishkadah
حضرت امام علی نے فرمایا، انسان کی دو ہی فضیلتیں ہیں: ایک عقل اور دوسری گفتار ،وہ عقل کے ذریعے فائدہ اٹھاتا ہے اور گفتار کے ذریعے فائدہ پہنچاتا ہے۔ غررالحکم حدیث330

نہج البلاغہ خطبات

جب مال کی تقسیم میں آپ کے برابری و مساوات کا اصول برتنے پر کچھ لوگ بگڑا اٹھے تو آپ نے ارشاد فرمایا۔

کیا تم مجھ پر یہ امر عائد کرنا چاہتے ہو کہ میں جن لوگوں کو حاکم کا حاکم ہوں ان پر ظلم و زیادتی کر کے (کچھ لوگوں کی ) امداد حاصل کروں تو خدا کی قسم جب تک دنیا کا قصہ چلتا رہے گا۔ اور کچھ ستارے دوسرے ستاروں کی طرف جھکتے رہیں گے ہیں اس چیز کے قریب بھی نہیں نہیں بھٹکوں گا۔ اگرچہ خود میرا مال ہوتا جب بھی میں اسے سب میں برابر تقسیم کرتا۔ چہ جائیکہ یہ مال اللہ کا مال ہے ۔ دیکھو بغیر کسی حق کے دودودہش کرنا بے اعتدالی اور فضول خرچی ہے اور یہ اپنے مرتکب کو دنیا میں بلند کر دیتی ہے لیکن آخریت میں پست کرتی ہے اور لوگوں کے اندر عزت میں اضافہ کرتی ۔ مگر اللہ کے نزدیک ذلیل کرتی ہے جو شخص بھی مال کو بغیر استحقاق کے یا نا اہل افراد کو دے گا اور ان کی دوستی و محبت بھی دوسروں ہی کے حصہ میں جائے گا اور اگر کسی دن اس کے پیر پھسل جائیں (ینعی فقرو تنگدستی اسے گھیر لے ) اور ان کی امداد کا محتاج ہو جائے تو وہ اس کے لیے بہت ہی بُرے ساتھی اور کمینے دوست ثابت ہوں گے۔

خطبہ 124: جب بیت المال میں برابر کی تقسیم جاری کرنے پر کچھ لوگ نے اعتراض کیا تو فرمایا